Jharkhand

لاؤڈ اسپیکر بجا کر ہنگامہ کرنے والوں کے خلاف جھارکھنڈ ہائی کورٹ نے سخت حکم دیا

73views

رانچی۔ جھارکھنڈ ہائی کورٹ کے چیف جسٹس سنجے کمار مشرا اور جسٹس آنند سین کی ڈویژن بنچ نے حکومت کو آواز کی آلودگی کو روکنے کے لیے سخت کارروائی کرنے کی ہدایت دی ہے۔ عدالت نے رات 10 بجے سے صبح 6 بجے تک موسیقی کے آلات اور لاؤڈ سپیکر کے استعمال پر مکمل پابندی عائد کر دی ہے۔ ہائی کورٹ نے اپنے حکم میں کہا ہے کہ تہوار کے دوران شور کی آلودگی کنٹرول قوانین کے تحت رات 10 بجے سے 12 بجے تک نرمی دی جا سکتی ہے۔ رات 12 بجے کے بعد اس کے استعمال پر پابندی ہوگی۔ عدالت نے ہسپتالوں اور نرسنگ ہومز کے 100 میٹر کے دائرے کو سائلنٹ زون قرار دینے کی بھی ہدایت کی ہے۔ عدالت نے کہا ہے کہ عوامی مقامات پر بجانے والے لاؤڈ سپیکر کی آواز 10 ڈیسیبل سے زیادہ نہیں ہونی چاہیے۔ نجی جگہوں کے لیے یہ حد صرف پانچ ڈیسیبل رہے گی۔ عدالت نے ریاست کے تمام ڈپٹی کمشنروں کو ہدایت کی ہے کہ وہ اس سلسلے میں ہدایات جاری کریں اور متعلقہ افسران کے موبائل نمبر بھی دیں جن پر متاثرین شکایت کر سکتے ہیں۔ عدالت نے پی سی آر وین کے موبائل نمبر بھی جاری کرنے کی ہدایت کی ہے تاکہ لوگ صوتی آلودگی کے خلاف شکایت کر سکیں۔ صوتی آلودگی کی شکایت کے بعد عدالت نے متعلقہ حکام سے مناسب اقدامات کرنے کو کہا ہے۔ اس کے علاوہ ایمپلیفائرز، لاؤڈ اسپیکرز، پبلک ایڈریس سسٹم وغیرہ کو ضبط کرنے اور قواعد کے مطابق کارروائی کرنے کی ہدایات دی گئی ہیں۔ حکومت کو اس معاملے میں پیش رفت رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت دیتے ہوئے عدالت نے اگلی سماعت 5 دسمبر کو مقرر کی ہے۔ اس سلسلے میں ہائی کورٹ ازخود نوٹس لے رہی ہے اور ساتھ ہی جھارکھنڈ سول سوسائٹی کی عرضی پر بھی سماعت کر رہی ہے۔ درخواست گزاروں کی جانب سے کہا گیا ہے کہ حکومت کی جانب سے صوتی آلودگی پر قابو پانے کے لیے بنائے گئے قوانین پر عمل نہیں کیا جاتا۔ شکایت کے باوجود کوئی کارروائی نہیں کی جاتی۔ عدالت کو اس میں مداخلت کرنی چاہیے۔

Follow us on Google News
Jadeed Bharat
www.jadeedbharat.com – The site publishes reliable news from around the world to the public, the website presents timely news on politics, views, commentary, campus, business, sports, entertainment, technology and world news.