JharkhandRanchi

رانچی ماسٹر پلان 2037 کی مخالفت پھر تیز، 154 گاؤں کے لوگ متحرک ہو رہے ہیں

71views

رانچی: دارالحکومت کو منظم کرنے کے لیے حکومت نے رانچی ماسٹر پلان 2037 بنایا ہے۔ پچھلے 7 سالوں سے اس کی مسلسل مخالفت ہو رہی ہے۔ ایک بار پھر، 154 گاؤں کے لوگ اور مختلف قبائلی تنظیمیں ماسٹر پلان میں اس کی شمولیت کے خلاف احتجاج کے راستے پر ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ رانچی ماسٹر پلان کے تحت 154 گاؤں میں 2.28 لاکھ ایکڑ زمین کے استعمال کو تبدیل کرنے کی سازش رچی جا رہی ہے، جب کہ یہ تمام گاؤں پانچویں شیڈول، پی ای ایس اے ایکٹ اور سی این ٹی ایکٹ کے دائرے میں آتے ہیں۔ ان گاؤں میں، حصول اراضی سے متعلق کوئی منصوبہ گرام سبھا اور قبائلی مشاورتی کمیٹی (TAC) کی رضامندی کے بغیر پاس نہیں کیا جا سکتا۔ ایسے میں ان دیہاتوں میں زرعی زمین کی نوعیت کو تبدیل کرنا غیر قانونی ہے۔ 154 دیہات کے لوگوں نے خبردار کیا ہے کہ اگر ماسٹر پلان کو منسوخ نہیں کیا گیا تو دسمبر کے مہینے میں لاکھوں قبائلی متحرک ہوں گے اور زبردست احتجاج کریں گے۔ آدیواسی ادھیکار منچ کے صدر پرفل لنڈا کا کہنا ہے کہ پورا رانچی پانچویں شیڈول میں آتا ہے۔ اس کے باوجود نام نہاد ترقی کے نام پر یہ ماسٹر پلان باہر کے لوگوں کو بسانے اور قبائلیوں کو ان کی زمین سے بے گھر کرنے کے لیے بنایا گیا ہے۔ 2015 میں ماسٹر پلان کے لیے 336 گاؤں کی نشاندہی کی گئی۔ اس کے بعد 226 گاؤں کی نشاندہی کی گئی۔ ان گاؤں کے لوگوں کی طرف سے مسلسل احتجاج کیا جا رہا تھا۔ دریں اثنا، 2022 میں ماسٹر پلان میں شامل کرنے کے لیے 154 گاؤں کی نشاندہی کی گئی۔ ان دیہات کی 2 لاکھ 28 ہزار زرعی اراضی کی نوعیت بدلنے کا منصوبہ ہے۔ پارلیمنٹ، صدر اور ٹی اے سی کی اجازت کے بغیر ماسٹر پلان کو براہ راست نافذ کرنا غلط ہے۔ حکومت بھی اس سازش کا حصہ بنی ہوئی ہے۔ جہاں 154 گاؤں کے لوگ ماسٹر پلان کی مخالفت کر رہے ہیں۔ اس کے ساتھ ہی ماسٹر پلان میں بے ضابطگیوں کی وجہ سے رانچی کے 5000 سے زیادہ ریوٹس کے زمینی نقشے پاس نہیں ہو رہے ہیں۔ رانچی میونسپل کارپوریشن 2020 سے گاؤں والوں سے ماسٹر پلان پر اعتراضات مانگ رہی ہے۔ ان اعتراضات پر بھی 15 ستمبر سے 10 اکتوبر تک سماعت ہوئی۔ حیران کن بات یہ ہے کہ ماسٹر پلان سے متاثر ہونے والے ہزاروں لوگوں میں سے رانچی میونسپل کارپوریشن کمیٹی کو صرف 524 ریوٹس سے اعتراضات موصول ہوئے۔ ان میں سے 127 رانچی میونسپل کارپوریشن علاقے سے اور 397 RRDA علاقے سے تھے۔ ہزاروں لوگ اس سے متعلق معلومات حاصل نہیں کر سکے اور جن لوگوں نے معلومات حاصل کیں وہ بھی اسے ٹھیک سے نہیں سمجھ سکے۔ اس وجہ سے اپنا اعتراض درج نہ کر سکے۔

Follow us on Google News
Jadeed Bharat
www.jadeedbharat.com – The site publishes reliable news from around the world to the public, the website presents timely news on politics, views, commentary, campus, business, sports, entertainment, technology and world news.