National

ای ڈی حراست میں رہتے ہوئے کیجریوال کوئی بھی سرکاری حکم نہ کریں جاری، ہائی کورٹ میں عرضی داخل

39views

دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال ای ڈی کی حراست میں ہیں اور وہیں سے وہ حکومت چلا رہے ہیں۔ کچھ ہدایات انھوں نے حراست میں رہتے ہوئے جاری کی ہیں جس پر سوال کھڑے ہونے لگے ہیں۔ اس درمیان دہلی ہائی کورٹ میں ایک مفاد عامہ عرضی داخل کی گئی ہے جس میں کیجریوال کو ای ڈی کی حراست میں رہنے کے دوران کوئی بھی حکم جاری کرنے سے روکنے کی گزارش کی گئی ہے۔ ساتھ ہی مفاد عامہ عرضی میں ٹائپسٹ، کمپیوٹر، پرنٹر جیسی تمام چیزیں انھیں دستیاب نہ کرانے کی بھی گزارش کی گئی ہے۔

عرضی دہندہ نے عدالت سے اپیل کی ہے کہ ای ڈی کو شکایت درج کرنے، جانچ کرنے اور اروند کیجریوال پر مقدمہ چلانے کی ہدایت دی جائے کہ پولیس حراست میں ان کے ذریعہ جاری کردہ حکم دہلی کی وزیر آتشی کے پاس کس طرح پہنچے۔ عرضی دہندہ سرجیت سنگھ یادو نے ایڈووکیٹ ششی رنجن کمار سنگھ اور مہیش کمار کے ذریعہ یہ مطالبہ دہلی ہائی کورٹ کے سامنے رکھا ہے۔ عرضی میں کہا گیا ہے کہ اروند کیجریوال حراست میں ہدایات اور احکام جاری کرتے وقت ہندوستانی آئین کے تیسرے شیڈول کے تحت انھیں دی گئی رازداری کے حلف کی خلاف ورزی کر رہے ہیں۔

واضح رہے کہ اسی عرضی دہندہ نے حال ہی میں دہلی ہائی کورٹ میں ایک مفاد عامہ عرضی داخل کی تھی جس میں دہلی کے وزیر اعلیٰ کیجریوال کو دہلی حکومت کے وزیر اعلیٰ عہدہ سے ہٹانے کی گزارش کی گئی ہے۔ عرضی میں کہا گیا ہے کہ کیجریوال کی گرفتاری کے بعد دہلی حکومت کی وزیر آتشی نے 21 مارچ 2024 کو کئی چینلز کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا تھا کہ کیجریوال اپنے عہدہ سے استعفیٰ نہیں دیں گے اور ضرورت پڑنے پر انتخاب لڑیں گے۔ عرضی میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ کیجریوال کے وزیر اعلیٰ بنے رہنے سے قانونی عمل میں رخنہ پیدا ہوگا جس سے ریاست میں آئینی نظام ٹوٹ سکتا ہے۔

Follow us on Google News
Jadeed Bharat
www.jadeedbharat.com – The site publishes reliable news from around the world to the public, the website presents timely news on politics, views, commentary, campus, business, sports, entertainment, technology and world news.