National

راجیہ سبھا: 56 میں سے 41 سیٹوں پر امیدواروں کا بلا مقابلہ انتخاب، اب 15 پر ہوگا مقابلہ

60views

لوک سبھا انتخابات سے پہلے ہو رہے راجیہ سبھا انتخابات آج کل موضوعِ بحث بنے ہوئے ہیں۔ 56 سیٹوں کے لیے 27 فروری کو ووٹنگ ہوگی لیکن پرچہ نامزدگی واپس لینے کی آخری تاریخ گزرنے کے ساتھ ہی 41 سیٹوں پر تصویر واضح ہو گئی ہے۔ الگ الگ ریاستوں کی 41 سیٹوں کے لیے 41 امیدوار ہی میدان میں تھے جس کی وجہ سے ان تمام کو بلا مقابلہ منتخب قرار دے دیا گیا ہے۔ اب راجیہ سبھا کی 15 سیٹوں کے لیے 27 فروری کو ووٹنگ ہوگی۔ منگل (20 فروری) کو ہوئے بلا مقابلہ منتخب ہونے والے 41 امیدواروں میں کانگریس کی سابق صدر سونیا گاندھی، بی جے پی کے سربراہ جے پی نڈا، اشوک چوہان اور مرکزی وزیر اشونی ویشنو شامل ہیں۔

مہاراشٹر: بلڈھانہ میں مذہبی تقریب کے دوران ’پرساد‘ کھا کر بیمار پڑے 200 افراد، ڈاکٹروں کی ٹیم گاؤں روانہ

واضح رہے کہ حکمران پارٹی بی جے پی اب تک راجیہ سبھا میں سب سے زیادہ 20 سیٹیں حاصل کر چکی ہے۔ اس کے بعد کانگریس (6)، ترنمول کانگریس (4)، وائی ایس آر کانگریس (3)، آر جے ڈی (2)، بی جے ڈی (2) اور این سی پی، شیوسینا، بی آر ایس اور جے ڈی (یو) کو ایک ایک سیٹیں ملی ہیں۔ چونکہ ان 41 نشستوں پر کوئی اور امیدوار میدان میں نہیں تھا، اس لیے متعلقہ ریٹرننگ افسران نے کاغذات نامزدگی واپس لینے کی آخری تاریخ پرہی انہیں فاتح قرار دیدیا۔ جی پی نڈا کے علاوہ جسونت سنگھ پرمار، مینک نائک اور ہیروں کے تاجر گووند بھائی ڈھولکیا کو گجرات سے فاتح قرار دیا گیا ہے، راجستھان سے سونیا گاندھی کے علاوہ بی جے پی کے چننی لال گراسیا اور مدن راٹھور بلا مقابلہ منتخب ہوئے ہیں۔ جبکہ مہاراشٹر کے تمام 6 امیدوار بی جے پی کے اشوک چوہان، میدھا کلکرنی اور اجیت گوپچھڑے، شیوسینا کے ملند دیورا، پرفل پٹیل (این سی پی) اور چندرکانت ہنڈورے (کانگریس) بلا مقابلہ منتخب ہوئے۔

دبئی کی جیل میں 18 سال گزارنے کے بعد وطن واپس لوٹے 4 مزدور

بہار میں جے ڈی یو کے سنجے کمار جھا، بی جے پی کے دھرم شیلا گپتا اور بھیم سنگھ، آر جے ڈی کے منوج کمار جھا اور سنجے یادو اور کانگریس کے اکھلیش پرساد سنگھ کامیاب ہوئے ہیں۔ مغربی بنگال سے ٹی ایم سی کی سشمیتا دیو، ساگاریکا گھوش، ممتا ٹھاکر، بی جے پی کے محمد ندیم الحق اور سمیک بھٹاچاریہ کو فاتح قرار دیا گیا۔ مرکزی وزیر مروگن، والمیکی دھام آشرم کے سربراہ امیش ناتھ مہاراج، کسان مورچہ کے قومی نائب صدر بنشی لال گرجر اور مدھیہ پردیش بی جے پی خواتین ونگ کی صدر مایا نارولیا نے مدھیہ پردیش میں بی جے پی کے لیے چار سیٹیں حاصل کیں، جب کہ کانگریس کے اشوک سنگھ بھی بلا مقابلہ جیت گئے۔

’گگن یان مشن‘ کے لیے پوری طرح تیار ہے ’سی ای 20 کرایوجینک انجن‘، سیفٹی سرٹیفکیٹ ہوا حاصل

اوڈیشہ سے مرکزی وزیر اشونی ویشنو (بی جے پی) اور بی جے ڈی کے دیباشیش سمانترے اور سبھاشیش کھنٹیا نے جیت حاصل کی ہے۔ وائی ​​ایس آر کانگریس کے امیدوار جی بابو راؤ، وائی وی سبا ریڈی اور ایم رگھوناتھ ریڈی نے آندھرا پردیش کی تینوں سیٹوں پر کامیابی حاصل کی، جب کہ پڑوسی ریاست تلنگانہ میں حکمراں کانگریس کو دو سیٹیں – رینوکا چودھری اور انیل کمار یادو – اور بی آر ایس کو ایک سیٹ ملی ہے۔ اتراکھنڈ میں بی جے پی کے امیدوار (مہیندر بھٹ)، سبھاش برالا (ہریانہ)، دیویندر پرتاپ سنگھ (چھتیس گڑھ) بلا مقابلہ منتخب ہوئے ہیں۔

ملکارجن کھڑگے و راہل گاندھی کا مشہور قانون دان فالی ایس نریمن کے انتقال پر اظہار تعزیت

56 میں سے 41 نشستوں پر امیدوار بلا مقابلہ منتخب ہونے کے بعد اب باقی 15 نشستوں پر مقابلہ ہوگا۔ ان 15 سیٹوں پر 27 فروری کو انتخابات ہونے ہیں اور ان پر سخت مقابلہ ہوگا۔ جن 15 سیٹوں پر انتخابات ہونے ہیں ان میں کرناٹک اور ہماچل پردیش کے ساتھ اتر پردیش شامل ہیں۔ اس کی وجہ سے راجیہ سبھا کی انتخابی جنگ دلچسپ ہو گئی ہے۔

Follow us on Google News