BiharNational

بہاراسمبلی میں ذات پر مبنی مردم شماری کی رپورٹ پیش

89views

34 فیصد آبادی غریبی ریکھا سے نیچے۔بھومیہار۔ یادو اپنے اپنے زمرے میں سب سے غریب – ریاست میں صرف سات فیصد لوگ گریجویٹ

پٹنہ،07 نومبر:۔ بہار قانون ساز اسمبلی کے سرمائی اجلاس کے دوسرے دن منگل کے روز ذات پر مبنی مردم شماری کی اقتصادی رپورٹ اسمبلی کی میز پر پیش کی گئی۔ اس رپورٹ کے مطابق ریاست کی تقریباً ایک تہائی ابادی غریب ہے۔ بہار کے 34.13 فیصد خاندانوں کی ماہانہ ا?مدنی صرف چھ ہزار روپے ہے۔ حکومت نے انہیں غربت کے زمرے میں ڈال دیا ہے۔ بھومیہار اور یادو وہ ذاتیں ہیں جو اپنے اپنے زمروں میں سب سے غریب ہیں۔ عام زمرے میں بھومیہار برادری کے تقریباً 27 فیصد خاندان غریب ہیں۔ برہمنوں میں 25.3 فیصد خاندان غریب ہیں جبکہ راجپوت میں 24.89 فیصد خاندان غریب ہیں۔ کائستھ میں 13.83 فیصد غریب خاندان ہیں۔ عام زمرہ میں، مسلم زمرہ سے، شیخ میں 25.84 فیصد غریب خاندان ہیں، جبکہ پٹھان (خان) میں 22.20 فیصد غریب خاندان ہیں اور سید میں 17.61 فیصد غریب خاندان ہیں۔ رپورٹ میں مجموعی طور پر عام زمرے میں 25.9 فیصد خاندان غریب ہیں۔ پسماندہ طبقے کے معاشی طور پر غریب خاندانوں میں یادو ذات کے لوگ سب سے زیادہ غریب ہیں۔ یادو میں 35.87 فیصد خاندان غریب ہیں۔ اس زمرے میں 34.32 فیصد کشواہا خاندان غریب ہیں۔ کرمی میں 29.90 فیصد خاندان غریب ہیں جبکہ بنیا میں 24.62 فیصد خاندان غریب ہیں۔ پسماندہ طبقات میں سورجا پوری مسلمانوں کے 29.33 فیصد خاندان غریب ہیں جبکہ سنار کے 26.58 فیصد خاندان غریب ہیں۔ بہار میں ا?بادی کی تعلیمی صورتحال پر رپورٹ کے مطابق بہار کی 22.67 فیصد ا?بادی نے پہلی سے پانچویں تک تعلیم حاصل کی ہے۔ کلاس 6 سے 8 تک تعلیم 14.33 فیصد ا?بادی کے پاس ہے۔ 14.71 فیصد ا?بادی نویں سے دسویں جماعت تک تعلیم حاصل کرنے کے قابل ہے۔ 9.19 فیصد ا?بادی گیارہویں سے بارہویں جماعت تک تعلیم حاصل کرنے کے قابل ہے۔ صرف سات فیصد لوگوں نے گریجویٹ تعلیم حاصل کی ہے۔ سمجھا جاتا ہے کہ یہ رپورٹ سماج کے ساتھ سیاسی مساوات کو بھی متاثر کرے گی۔ پسماندہ اور انتہائی پسماندہ لوگوں کے لیے ان کی تعداد کے مطابق ریزرویشن کا دائرہ بڑھانے کا مطالبہ پہلے سے ہی کیا جا رہا ہے۔ جنرل کیٹیگری میں 10 سے 20 ہزار ماہانہ ا?مدنی والے افراد کی آبادی کا 19 فیصد ہے۔ 20 سے 50 ہزار ماہانہ آمدنی آبادی کا 16 فیصد ہے۔ 9 فیصد ایسے ہیں جن کی ماہانہ آمدنی 50 ہزار روپے سے زیادہ ہے۔ جن کی ماہانہ ا?مدنی 6000 روپے ہے وہ 25 فیصد ہیں۔
جنرل کیٹیگری میں 6 لاکھ 41 ہزار 281 افراد کے لیے نوکریاں ہیں جو کل کا 3.19 فیصد ہے۔ سرکاری ملازمتوں میں بھومیہار ذات کا حصہ 01 لاکھ 87 ہزار 256 ہے جو کہ 4.99 فیصد ہے۔ سرکاری ملازمتوں میں برہمن ذات کا حصہ 01 لاکھ 72 ہزار 259 ہے جو کہ 3.60 فیصد ہے۔ سرکاری ملازمتوں میں راجپوت ذات کا حصہ 01 لاکھ 71 ہزار 933 ہے جو کہ 3.81 فیصد ہے۔ سرکاری ملازمتوں میں کائستھ ذات کا حصہ 52 ہزار 490 ہے جو کہ 6.68 فیصد ہے۔ مسلم ا?بادی میں سرکاری ملازمتوں میں شیخ ذات کا حصہ 39 ہزار 595 ہے جو کہ 79 فیصد ہے۔ سرکاری ملازمتوں میں پٹھان ذات کا حصہ 10 ہزار 517 ہے جو کہ 1.07 فیصد ہے ، سرکاری ملازمتوں میں سید ذات کا حصہ 7 ہزار 231 ہے جو کہ 2.42 فیصد ہے۔
پسماندہ طبقے میں تیلی: 53 ہزار 56، 1.44 فیصد
ملاح: 14 ہزار 100، 0.41 فیصد
کانو: 34 ہزار 404، 1.19 فیصد
دھنوک: 33 ہزار 337، 1.19 فیصد
نونیا: 14 ہزار 226، 0.57 فیصد
چندرونشی: 31 ہزار 200، 1.45 فیصد
حجام: 28 ہزار 756، 1.38 فیصد
بڑھئی: 20 ہزار 279، 1.07 فیصد
حلوائی: 9 ہزار 574، 1.20 فیصد

Follow us on Google News
Jadeed Bharat
www.jadeedbharat.com – The site publishes reliable news from around the world to the public, the website presents timely news on politics, views, commentary, campus, business, sports, entertainment, technology and world news.