National

دہلی میں درختوں کی کٹائی معاملہ پر سپریم کورٹ نے اختیار کیا سخت رخ، افسران کو جاری کیا نوٹس

60views

دہلی فاریسٹ رِج میں درختوں کی بڑے پیمانے پر کٹائی سے متعلق معاملہ پر سماعت کرتے ہوئے سپریم کورٹ نے تشویش کا اظہار کیا ہے۔ اس معاملے میں حکم عدولی عرضی پر سپریم کورٹ نے ڈی ڈی اے ڈپٹی ڈائریکٹر سمیت دیگر محکموں کے افسران کو نوٹس بھی جاری کر دیا ہے۔ عدالت نے انھیں آئندہ سماعت میں پیش ہونے کا حکم دیا ہے اور معاملے کی اگلی سماعت کے لیے 14 مئی کی تاریخ مقرر کر دی ہے۔ علاوہ ازیں عدالت نے موجودہ حالت کو قائم رکھنے کا حکم بھی دیا ہے، یعنی مدعا علیہ اتھارٹی فی الحال کسی بھی درخت کی کٹائی میں شامل نہیں ہو سکتے۔

موصولہ اطلاع کے مطابق جسٹس بی آر گوئی اور جسٹس سندیپ مہتا کی بنچ نے سماعت کے دوران کہا کہ اگر ہم مطمئن ہوئے تو دوبارہ درخت لگانے کے لیے کہیں گے۔ عرضی دہندہ کی طرف سے پیش سینئر وکیل مکل روہتگی نے کہا کہ رِج مینجمنٹ بورڈ کے آئینی جواز کی جانچ کرنے کا وقت آ گیا ہے۔ وہ درختوں کو کاٹنے کی اجازت دے رہی ہے، اسے رِج ڈسٹرکشن بورڈ کہا جا رہا ہے۔

قابل ذکر ہے کہ معاملہ میدان گڑھی کے پاس چھترپور روڈ اور سارک یونیورسٹی کے درمیان سڑک کی تعمیر کے لیے 1000 سے زیادہ درختوں کی کٹائی سے جڑا ہوا ہے۔ عدالت نے گزشتہ سماعت میں کہا تھا کہ عدالت کے منع کرنے کے باوجود ڈی ڈی اے نے سڑک تعمیر کے لیے درختوں کی کٹائی جاری رکھی۔ یہ عدالت کے حکم کی خلاف ورزی ہے۔ اس معاملے پر عدالت نے کہا تھا کہ پہلی نظم میں سڑک تعمیر کے لیے درختوں کو کاٹنے کی ڈی ڈی اے کی کارروائی عدالتی حکم کی خلاف ورزی معلوم ہوتی ہے۔ عدالت نے 8 فروری اور 4 مارچ 2024 کو اس سے متعلق حکم جاری کیا تھا۔

Follow us on Google News
Jadeed Bharat
www.jadeedbharat.com – The site publishes reliable news from around the world to the public, the website presents timely news on politics, views, commentary, campus, business, sports, entertainment, technology and world news.