National

 کنڑ حامی تنظیموں کی کال کے بعد کرناٹک آج بند، بس اسٹینڈ پر خاموشی، اسکولوں میں چھٹی

133views

نئی دہلی: کاویری آبی تنازعہ پر کنڑ حامی تنظیموں نے جمعہ کو کرناٹک بند کی کال دی ہے۔ اس دوران بی ایم ٹی سی اور کے ایس آر ٹی سی بس ٹرمینلز پر خاموشی چھائی رہی۔ اس معاملے میں ٹریفک کنٹرولر چندر شیکھر نے کہا کہ بسوں کے شیڈول اور روٹس میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی ہے، پھر بھی لوگ نہیں آ رہے ہیں۔ بسیں چل رہی ہیں لیکن لوگ نظر نہیں آ رہے۔
دراصل، کنڑ حامی اور کسان تنظیموں نے کاویری ندی کا پانی تمل ناڈو کو منتقل کرنے کے خلاف جمعہ کو ‘کرناٹک بند’ کا اعلان کیا ہے۔ کنڑ تنظیموں بشمول کرناٹک رکشا ویدیکے، کنڑ چلوالی (وتال پکشا) اور مختلف کسانوں کی تنظیموں کی اعلیٰ ترین تنظیم ‘کنڑ اوکوٹا’ نے ریاست بھر میں صبح سے شام بند کی کال دی ہے۔

اپوزیشن جماعتوں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) اور جنتا دل (سیکولر) نے بھی بند کی حمایت کی ہے۔ اس کے علاوہ ہوٹلوں، آٹورکشا اور کار ڈرائیوروں کی انجمنوں نے بھی بند کی حمایت کی ہے۔ دریں اثنا، ریاستی محکمہ ٹرانسپورٹ نے سرکاری ٹرانسپورٹ کارپوریشنوں کو اپنی خدمات جاری رکھنے کی ہدایت کی ہے۔دریں اثنا، بنگلور میں انتظامیہ نے شہر کے تمام تعلیمی اداروں میں تعطیل کا اعلان کیا ہے۔ ضلع کے ڈپٹی کمشنر کے اے دیانند نے کہا کہ چونکہ مختلف تنظیموں کی طرف سے کرناٹک بند کا اعلان کیا گیا ہے، طلباء کے مفاد میں بنگلورو شہر کے تمام اسکولوں اور کالجوں میں تعطیل کا اعلان کیا گیا ہے۔ بنگلورو پولیس نے کاویری پانی کے مسئلہ پر احتجاج کرنے والی کنڑ حامی تنظیموں کے ارکان کو حراست میں لے لیا۔ تمل ناڈو اور کرناٹک کے درمیان کاویری آبی تنازعہ کافی عرصے سے چل رہا ہے۔ 1892 اور 1924 میں مدراس پریذیڈنسی اور کنگڈم آف میسور کے درمیان دستخط کیے گئے دو معاہدوں کے تحت، دریائے کاویری کے پانی کو دونوں ریاستوں کے درمیان بانٹنے پر اتفاق کیا گیا۔ پانی کی تقسیم پر اختلافات کو دور کرنے کے لیے حکومت ہند نے 2 جون 1990 کو کاویری واٹر ڈسپیوٹ ٹریبونل (CWDT) قائم کیا۔

Follow us on Google News
Jadeed Bharat
www.jadeedbharat.com – The site publishes reliable news from around the world to the public, the website presents timely news on politics, views, commentary, campus, business, sports, entertainment, technology and world news.