National

کیجریوال کی گرفتاری کو عمر عبداللہ نے ’جمہوریت پر داغ‘ قرار دیا

79views

جموں و کشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ اور نیشنل کانفرنس کے نائب صدر عمر عبداللہ نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال کی گرفتاری ’جمہوریت پر داغ‘ ہے۔ انھوں نے سوشل میڈیا پلیٹ فارم ’ایکس‘ پر اس تعلق سے ایک پوسٹ کیا ہے جس میں لکھا ہے ’’ایسی تیسی ڈیموکریسی۔ 400 سے زیادہ سیٹوں کے سبھی مباحث کے باوجود برسراقتدار حکومت قابل ذکر سطح کی گھبراہٹ ظاہر کر رہی ہے۔ عام انتخاب کے اعلان کے کچھ ہی دنوں کے اندر ایک موجودہ اپوزیشن وزیر اعلیٰ کو ایک لچیلی سنٹرل ایجنسی کے ذریعہ گرفتار کیا جانا جمہوریت پر ایک داغ ہے۔‘‘

عمر عبداللہ نے اروند کیجریوال کی گرفتاری کو واضح طور پر انتخاب سے جڑا ہوا معاملہ بتایا ہے۔ انھوں نے اس سلسلے میں نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ’’الیکشن کمیشن کے ذریعہ لوک سبھا انتخاب کی تاریخوں کے اعلان کے کچھ ہی دنوں کے اندر موجودہ وزیر اعلیٰ اور اپوزیشن اتحاد کے ایک اہم حصے کو ای ڈی نے منمانے طریقے سے گرفتار کر لیا ہے۔‘‘ انھوں نے مزید کہا کہ ’’کچھ ہفتے قبل جھارکھنڈ کے موجودہ وزیر اعلیٰ بھی اسی حالت میں تھے۔ گزشتہ سال دہلی کے نائب وزیر اعلیٰ کو بھی گرفتار کیا گیا تھا۔ یہ افسوسناک طریقے سے اس عمل کا ایک حصہ ہے جس کے تحت اس ملک میں جمہوری ادارے دھیرے دھیرے اس حد تک تباہ ہو گئے ہیں کہ اب ان کا وجود تقریباً ختم ہو گیا ہے۔‘‘ عمر عبداللہ نے کہا کہ ملک کو ہماری جمہوریت کے سامنے موجود خطرے کا احساس ہے یا نہیں، یہ تو وقت ہی بتائے گا، لیکن یہ حکومت جو وراثت چھوڑے گی وہ ملک کے لیے بے حد افسوسناک ہے۔

میڈیا میں آ رہی ایسی خبروں پر کہ سابق کانگریس لیڈر غلام نبی آزاد، سجاد غنی لون اور سید الطاف بخاری لوک سبھا انتخاب میں نیشنل کانفرنس کو متحد اپوزیشن دینے کے لیے ہاتھ ملا سکتے ہیں، عمر عبداللہ نے تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ’’ہم نے پہلے بھی اسی طرح کی حالت دیکھی ہے۔ یہی حالت نیشنل کانفرنس کو کمزور کرنے کے لیے بنائی جا رہی ہے، لیکن ہم اس سے لڑیں گے۔‘‘

Follow us on Google News
Jadeed Bharat
www.jadeedbharat.com – The site publishes reliable news from around the world to the public, the website presents timely news on politics, views, commentary, campus, business, sports, entertainment, technology and world news.