National

سی بی آئی نے طلب کیا تو میں گیا تھا، مگر ای ڈی پوچھ گچھ کے بہانے مجھے گرفتار کرنا چاہتی ہے! اروند کیجریوال

80views

نئی دہلی: دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے جمعرات کو ایک پریس کانفرنس کی۔ اس دوران انہوں نے ہر اس سوال کا جواب دیا جو ای ڈی کی طرف سے تین سمن جاری ہونے کے بعد مسلسل پوچھے جا رہے تھے۔ کیجریوال نے بتایا کہ 3 سمن جاری ہونے کے بعد بھی وہ ای ڈی کے سامنے کیوں پیش نہیں ہوئے۔ انہوں نے ای ڈی کے سمن کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے کہا کہ جانچ ایجنسی انہیں لوک سبھا انتخابات سے قبل گرفتار کرنا چاہتی ہے۔

پریس کانفرنس کے دوران کیجریوال نے کہا، ‘شراب گھوٹالہ، آپ نے یہ لفظ پچھلے دو سالوں میں کئی بار سنا ہوگا لیکن ان دو سالوں میں تحقیقات کے بعد بھی کہیں سے ایک پیسہ بھی نہیں ملا۔ اگر کوئی گھپلہ ہوا ہے تو پیسہ کہاں گیا؟ کیا پیسہ ہوا میں غائب ہو گیا؟ عآپ کے کئی لیڈروں کو جیل میں رکھا گیا ہے۔ اب بی جے پی جھوٹے الزامات لگا کر مجھے گرفتار کرنا چاہتی ہے۔ مجھے سمن بھیجے گئے۔ میرے وکلاء نے مجھے بتایا کہ یہ سمن غیر قانونی ہیں۔‘‘

وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے سوال اٹھایا کہ لوک سبھا انتخابات سے قبل انہیں سمن کیوں بھیجا گیا ہے۔ انہوں نے کہا، ’’اگر تحقیقات دو سال سے چل رہی ہے تو پھر لوک سبھا انتخابات سے پہلے ہی کیوں بلایا جا رہا ہے؟ سی بی آئی نے 8 مہینے پہلے بلایا تھا۔ میں جا کر جواب بھی دے چکا ہوں۔ اب جب کہ مجھے لوک سبھا انتخابات سے پہلے بلایا جا رہا ہے، ان کا مقصد مجھ سے پوچھ گچھ کرنا نہیں ہے۔ وہ لوگ مجھے بلا کر گرفتار کرنا چاہتے ہیں۔ تاکہ میں انتخاب مہم نہ چلا سکوں۔ آج بی جے پی لیڈروں کو اپنی پارٹی میں شامل کرنے کے لیے ای ڈی اور سی بی آئی کا استعمال کر رہی ہے۔‘‘

سی ایم کیجریوال نے مزید کہا کہ منیش سسودیا اور سنجے سنگھ جیل میں نہیں ہیں کیونکہ انہوں نے کوئی بدعنوانی کی ہے، بلکہ وہ جیل میں ہیں کیونکہ انہوں نے بی جے پی میں شامل ہونے سے انکار کر دیا تھا۔ کیجریوال نے مزید کہا کہ ملک اس طرح آگے نہیں بڑھ سکتا۔ جو کچھ ہو رہا ہے وہ جمہوریت کے لیے بہت خطرناک ہے۔

دراصل، ای ڈی نے دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال کو 3 سمن جاری کیے ہیں، جس میں انہیں پوچھ گچھ کے لیے ای ڈی کے دفتر بلایا گیا تھا۔ تاہم تینوں سمن ملنے کے بعد بھی کیجریوال ابھی تک ای ڈی کے سامنے پیش نہیں ہوئے ہیں۔ انہوں تین سمن کے بعد ای ڈی کو خط بھیج کر جواب دیا ہے۔

خیال رہے کہ بدھ سے ہی عام آدمی پارٹی کے لیڈروں نے کیجریوال کی گرفتاری کا خدشہ ظاہر کرنا شروع کر دیا تھا۔ عآپ لیڈروں نے دعویٰ کیا تھا کہ ای ڈی آج اروند کیجریوال کی رہائش گاہ پر چھاپہ مار سکتی ہے اور انہیں گرفتار بھی کر سکتی ہے۔ دہلی حکومت کے وزراء آتشی، سوربھ بھاردواج اور راجیہ سبھا کے رکن پارلیمنٹ سندیپ پاٹھک نے سوشل میڈیا پلیٹ فارم ایک پر دعویٰ کیا تھا کہ ای ڈی آج کیجریوال کے گھر پر چھاپہ مار سکتا ہے، جس کے بعد انہیں گرفتار کیا جا سکتا ہے۔

Follow us on Google News
Jadeed Bharat
www.jadeedbharat.com – The site publishes reliable news from around the world to the public, the website presents timely news on politics, views, commentary, campus, business, sports, entertainment, technology and world news.