National

دبئی کی جیل میں 18 سال گزارنے کے بعد وطن واپس لوٹے 4 مزدور

96views

قتل کے معاملے میں دبئی میں 18 سال جیل میں گزارنے کے بعد تلنگانہ کے 4 مزدور اپنے گھر لوٹ آئے ہیں۔ راجنّا سِرسِلا ضلع کے رہنے والے یہ لوگ جیسے ہی راجیو گاندھی انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر اترے ان کے اہلِ خانہ نے ان کا نہایت جذباتی استقبال کیا۔

شیو راتری ملیش اور ان کے بھائی شیو راتری روی اپنے گھروالوں کو دیکھ کر جذباتی ہو گئے اور انہیں گلے لگا لیا۔ ڈنڈوگلا لکشمن دو مہینے پہلے واپس لوٹے تھے جبکہ شیوراتری ہنومنتھو دو دن پہلے واپس آئے۔ پانچویں شخص وینکٹیش کے اگلے ماہ جیل سے رہا ہونے کا امکان ہے۔

کسان تحریک: ہریانہ پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے آنسو گیس کے گولے داغے

واضح رہے کہ دبئی کی ایک عدالت نے نیپال کے رہنے والے چوکیدار بہادر سنگھ کو قتل کرنے کے جرم میں پانچ ملازمین کو 25 سال قید کی سزا سنائی تھی۔ متحدہ عرب امارات کی حکومت نے گزشتہ سال ستمبر میں دبئی کے دورے کے دوران اس وقت کے وزیر مملکت K.T. راما راؤ (کے ٹی آر) کی اپیل کے بعد ان کی رحم کی درخواست منظور کر لی تھی۔ ان مزدوروں کے اپنے وطن آنے کے ٹکٹ کا انتظام کے ٹی آر کے ذریعے ہی کیا گیا ہے۔

مراٹھا ریزرویشن ملنے پر بھی منوج جرانگے پاٹل ناراض، تحریک جاری رکھنے کا اعلان

یہ تمام افراد دبئی کی آویر جیل میں بند تھے۔ سِرسِلا کے ایم ایل اے کے ٹی آر نے 2011 میں ذاتی طور پر نیپال جا کر متوفی کے اہل خانہ سے ملاقات کی تھی اور شرعی قانون کے مطابق خون بہا کے طور پر 15 لاکھ روپے دیا تھا۔ ستمبر 2023 میں دبئی کے اپنے آخری دورے کے دوران انہوں نے متحدہ عرب امارات کی حکومت سے رحم کی درخواست منظور کرنے کی اپیل کی تھی۔ جسے وہاں کی حکومت نے منظور کر لیا تھا۔ ان مزدوروں کی قبل از وقت رہائی دراصل کے ٹی آر کی کوششوں کی ہی وجہ سے ممکن ہوسکی ہے۔

Follow us on Google News