National

سال بھرتک یکساں نوعیت کا کام کرنے والوں کو مستقل کیا جانا چاہیے: سپرریم کورٹ

87views

کانٹریکٹ یعنی کسی معاہدہ کے تحت کام کرنے والے ملازمین کو پرماننٹ (مستقل) کرنے سے متعلق سپریم کورٹ نے آج ایک اہم تبصرہ کیا ہے۔ عدالت عظمیٰ نے کہا ہے کہ سال بھر تک یکساں نوعیت کا کام کرنے والے ملازمین کو کانٹریکٹ لیبر (ریگولیشن اینڈ ایبولیشن) ایکٹ 1970 کے تحت پرماننٹ ملازمت کے فوائد سے محروم نہیں کیا جا سکتا۔

سپریم کورٹ نے اپنے فیصلے میں کہا ہے کہ اگر کوئی شخص برسوں سے کسی عہدے پر مستقل طور سے کام کر رہا ہے تو اسے کانٹریکٹ ملازم نہیں سمجھا جا سکتا اور اس کی ملازمت کو پرماننٹ کرنے سے انکار نہیں کیا جا سکتا۔ منگل (12 مارچ) کو جسٹس پی ایس نرسمہا اور جسٹس سندیپ مہتا کی بنچ نے کہا کہ مستقل یا سال بھر یکساں نوعیت کا کام ایک کانٹریکٹ ملازم نہیں کر سکتا اور اگر کوئی ایسا کرتا ہے تو اسے پرماننٹ کیا جانا چاہیے۔

سپریم کورٹ کا کہنا ہے کہ سال بھر یکساں نوعیت کے کام کرنے والے لوگوں کو پرماننٹ ملازمت کے فوائد سے محروم کرنے کی خاطر انہیں کنٹریکٹ لیبر (ریگولیشن اینڈ ایبولیشن) ایکٹ، 1970 کے تحت کانٹریکٹ لیبر نہیں سمجھا جا سکتا ہے۔ یہ معاملہ ’مہاندی کول فیلڈ‘ میں کام کرنے والے صفائی ملازمین سے متعلق ہے۔ ’لائیو لا‘ کی رپورٹ کے مطابق جسٹس نرسمہا نے اپنے حکم میں ہائی کورٹ اور انڈسٹریل ٹریبونل کے اس فیصلے کو برقرار رکھا ہے، جس میں ریلوے لائن کی صفائی کرنے والے مزدوروں کو کانٹریکٹ ورکرز سے ہٹا کر پرماننٹ ملازمین کا درجہ دیا گیا تھا اور تنخواہ کے فوائد بھی دیے گئے تھے۔ سپریم کورٹ نے اس حقیقت کو نوٹ کیا کہ ریلوے لائن کے کنارے صفائی کا کام نہ صرف معمول کا ہے بلکہ سال بھرکا اور مستقل نوعیت کا بھی ہے۔ عدالت نے کہا کہ ان وجوہات کی بنا پر کانٹریکٹ پر بحال کیے گئے ملازمین کو پرماننٹ یعنی مستقل کیا جانا چاہیے۔

دراصل مہاندی کول فیلڈز نے کانٹریکٹ پر کام کر رہے 32 میں سے 19 ملازمین کو پرماننٹ کر دیا تھا، جبکہ 13 کو کانٹریکٹ کے طور پر ہی رکھا تھا۔ حالانکہ تمام ملازمین کی ڈیوٹی یکساں اور ایک جیسی تھی۔ یونین نے اس کے خلاف مرکزی حکومت اور مہاندی کول فیلڈ کو ایک میمورنڈم پیش کیا، لیکن جب کوئی کارروائی نہیں ہوئی تو معاملہ انڈسٹریل ٹریبونل تک پہنچا، جہاں ٹریبونل نے تمام 13 کانٹریکٹ ورکرز کو ریگولر کرنے کا حکم دیا۔ بعد میں اسی فیصلے کو ہائی کورٹ نے بھی برقرار رکھا، جس کے خلاف مہاندی کول فیلڈز نے سپریم کورٹ سے رجوع کیا، لیکن اسے نہ صرف وہاں مایوسی ہوئی بلکہ عدالت نے ایک ایسا حکم دے دیا جو اب تمام کانٹریکٹ لیبرس پر ان ملازمت کی نوعیت کے حساب سے لاگو ہوگا۔

Follow us on Google News
Jadeed Bharat
www.jadeedbharat.com – The site publishes reliable news from around the world to the public, the website presents timely news on politics, views, commentary, campus, business, sports, entertainment, technology and world news.