جديد بهارت

Jadeed Bharat

No. 1 Urdu Daily Newspaper of Jharkhand

E Paper

ePaper

ٹیم انڈیاکی واپسی کاخواب چکنا چور ناتھن لیون کا قہر:دوسرے ٹیسٹ میں بھی ہندستانی شیر189رن پر ڈھیر

04 Mar 2017


بنگلور، 04 مارچ دنیا کی نمبر ایک ٹیم ہندستان پنے کے بعد بنگلور میں بھی گھٹنے ٹیک بیٹھی اور آسٹریلیا کے آف اسپنر ناتھن لیون نے اپنی بہترین بولنگ کرتے ہوئے 50 رنز پر آٹھ وکٹ لے کر ہندستان کو دوسرے ٹیسٹ کے پہلے دن ہفتہ کو 189 رنز پر ڈھیر کر دیا۔آسٹریلیا نے اس کے جواب میں دن کا کھیل ختم ہونے تک 16 اوور میں بغیر کوئی وکٹ کھوئے 40 رن بنا لئے ہیں۔لیون نے ہندستانی زمین پر کسی غیر ملکی بولر اور بنگلور میں کسی بولر کی بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کر ڈالا۔اوپنر لوکیش راہل نے یک طرفہ جدوجہد کرتے ہوئے 205 گیندوں میں نو چوکوں کی مدد سے 90 رنز کی اننگز کھیلی۔لیکن دوسرے بلے بازوں نے پنے کی طرح بنگلور میں بھی مایوس کیا اور لیون کے سامنے خود سپردگی کر بیٹھے۔ہندوستان نے لنچ تک دو وکٹ اور چائے کے وقفہ تک پانچ وکٹ گنوائے تھے۔لیکن چائے کے وقفہ کے بعد ہندوستان کے باقی پانچ وکٹ محض 21 رنز کا اضافہ کر کے گر گئے۔آسٹریلیا نے اس کے جواب میں دن کا کھیل ختم ہونے تک 16 اوور میں بغیر کوئی وکٹ کھوئے 40 رن بنا لئے ہیں۔آسٹریلیا اب ہندستان کے اسکور سے 149 رنز پیچھے ہے ۔ڈیوڈ وارنر ایک جیون دان کا فائدہ اٹھا کر 23 رن اور میٹ رینش 15 رنز بنا کر کریز پر ہیں ۔وارنر کو اجنکیا رہانے نے گلی میں فاسٹ بولر ایشانت شرما کی گیند پر جیون دان کیا ۔ اس وقت وارنر کا اسکور نو رن اور آسٹریلیا کا اسکور 19 رنز تھا۔لیون نے جو دبدبہ بنایا ویسا کارنامہ پہلے دن ہندستانی بولر نہیں  دکھاسکے۔لیون نے 22.2 اوور کی خطرناک گیند بازی میں 50 رن پر آٹھ وکٹ لے کر ہندوستانی کھلاڑیوں کو گھٹنے ٹیکنے کیلئے مجبور کر دیا۔ تیز گیند باز مشیل اسٹارک نے 39 رن پر ایک وکٹ اور گزشتہ میچ میں کل 12 وکٹ لینے والے لیفٹ آرم اسپنر اسٹیو او كيفے نے 40 رن پر ایک وکٹ لیا۔ لیون کی  اس سے پہلے ایک اننگز میں بہترین کارکردگی ہندوستان  کے خلاف ہی 94 رن پر سات وکٹ تھی ۔ یہ کارنامہ انہوں نے مارچ 2013 میں دہلی کے فیروز شاہ کوٹلہ میدان میں انجام دیا تھا۔ابھینو مکند صفر، چتیشور پجارا 17، کپتان وراٹ کوہلی 12، اجنکیا رہانے 17، نائر 26، روی چندرن اشون سات، وکٹ کیپر ردھمان ساہا ایک اور رویندر جڈیجہ تین رن  بنا کر پویلین لوٹ گئے۔پنے کے بعد ہندوستانی بلے بازوں نے پھر سے یہاں مایوس کیا۔ہندوستانی ٹیم پنے میں دونوں اننگز میں 105 اور 107 رن پرآوٹ ہو گئی تھی۔ تب  ہندوستان کیلئے وہ خراب وقت اور آسٹریلیا کے لئے اچھا ٹاس جیتنا بتایا گیا تھا لیکن یہاں  ہندوستانی کپتان وراٹ نے ٹاس جیتا لیکن کہانی وہی کی وہی رہی۔دوسرے ٹیسٹ سے قبل وراٹ نے کہا تھا کہ ٹیم اس مرتبہ پونے کی غلطیوں کو نہیں دوہرائے گی لیکن  ہندوستانی کھلاڑیوں نے او کیفے  کے سامنے تو نہیں لیون کے سامنے ضرور وہی غلطیاں دہرا ئیں۔ ہندوستانی  اننگز میں دوسرے وکٹ کے لئے 61 رن اور پانچویں وکٹ کے لیے 38 رن کی شراکت ہوئی۔ اس کے بعد تو ہندوستانی  بلے بازوں کے وکٹ گرنے کا سلسلہ جاری رہا ۔ہندوستان نے اپنے آخر چھ وکٹ 33 رن جوڑ کر گنوائے۔ پونے میں ہندوستان نے پہلی اننگز میں 11 رن کے وقفے میں اپنے سات وکٹ اور دوسری اننگز میں 30 رن کے وقفے میں اپنے آخری سات وکٹ گنوائے تھے۔ بنگلور میں بھی یہی صورتحال  رہی۔دوسرے ٹیسٹ سے قبل وراٹ نے کہا تھا کہ اس بار پنے کی غلطیوں کو نہیں دہرائیں گے۔ لیکن ہندستانی کھلاڑیوں نے او كيفے کے سامنے تو نہیں ليون کے سامنے ضرور وہ غلطیاں دہرا دیں۔ ہندستانی اننگز میں دوسرے وکٹ کے لئے 61 رن اور پانچویں وکٹ کے لیے 38 رنز کی شراکت ہوئی۔اس کے بعد تو ہندستانی بلے باز آیا رام گیا رام کی طرز پر پویلین لوٹتے رہے۔دوسرے ٹیسٹ میں زخمی سلامی بلے باز  مرلی وجے کی جگہ ابھینو  مکند کو اوپننگ میں لایا گیا لیکن  وہ کھاتہ کھولے بغیر تیز گیند باز مشیل اسٹارک کی گیند پر تیسرے اوور میں ایل بی ڈبلیو ہو گئے۔راہل اور پجارا نے دوسرے وکٹ کے لئے 61 رن کی ساجھےداری کی۔ جب ایسا لگ رہا تھا کہ یہ شراکت داری  ہندوستانی  اننگز کو مضبوط پوزیشن میں لے جائے گی تبھی لیون نے لنچ سے پہلے کے آخری اوور میں پجارا کو پیٹر ہینڈسکمب کے ہاتھوں کیچ کراکر ہندوستان کو زبردست جھٹکا دیا ۔ لنچ تک ہندوستان کا اسکور دو وکٹ پر 71 رن تھا۔لنچ کے بعد لیون نے وراٹ کو ایل بی ڈبلیو کرکے ہندوستان کو سب سے بڑا جھٹکا دیا۔ وراٹ 17 گیندوں میں دو چوکوں کی مدد سے 12 رنز بنا چکے تھے۔ لیون کی  آف بریک ٹھیک ا سٹمپ کے سامنے وراٹ کے پیڈ سے ٹکرائی جسے  امپائر نے  اپیل کرنے پرآوٹ قرار دیا۔وراٹ جانتے تھے کہ وہ آؤٹ ہو چکے ہیں اس کے باوجود انہوں نے ریویو لے کر ہندوستان کا ایک ریویو خراب کیا۔ بڑی اسکرین پر ری پلے دیکھتے ہی وراٹ بغیر امپائر کی تصدیق کیے پویلین واپس لوٹ گئے ۔ لیون نے اس طرح پانچویں بار پجارا اور وراٹ کو اپنا شکار بنایا۔راہل نے لنچ کے بعد اپنے 50 رن 105 گیندوں میں پورے کر لیے۔ انہوں نے رہانے کے ساتھ چوتھے وکٹ کے لئے 30 رن کی ساجھےداری کی۔ رہانے  ٹک کرکھیل رہے تھے لیکن جلد ہی انہوں نے بھی  اپنا وکٹ گنوا دیا۔ لیون کی آف بریک پر رہانے اتنا باہر نکل آئے کہ وکٹ کیپر میتھیو ویڈ نے لڑکھڑانے کے باوجود انہیں اسٹمپ کر دیا۔ لیون نے چوتھی مرتبہ رہانے کو آؤٹ کیا۔انگلینڈ کے خلاف پانچویں میچ میں ٹرپل سنچری بنانے والے کرو ن نائر کو دو ٹسٹ میچوں کے بعد جا کر اس میچ میں موقع ملا۔ انہیں آف اسپنر جینت یادو کی جگہ ٹیم میں شامل کیا  گیا۔ نائر نے 39 گیندوں میں تین چوکوں کی مدد سے  26 رن بنائے اور او کیفے  کی گیند پرا سٹمپ ہو گئے۔چائے کے وقفہ کے وقت ہندوستان کا اسکور پانچ وکٹ پر 168 رن تھا لیکن چائے کے وقفہ کے بعد لیون نے پانچ وکٹ حاصل کرکے ہندوستانی اننگز کو سمیٹنے میں زیادہ وقت نہیں لگایا ۔ لیون نے اشون، ساہا اور جڈیجہ کا شکار کیا۔ ہندوستان  کے آٹھ وکٹ 188 رن پر گر ے۔راہل اپنی سنچری سے 10 رن دور تھے اور اپنی سنچری مکمل کرنے کی کوشش میں وہ خراب شاٹ کھیل بیٹھے اور میٹ رینشا کے ہاتھوں کیچ آوٹ ہو گئے۔ راہل 90 رن پر آؤٹ ہونے کے بعد مایوسی کے ساتھ پویلین چل دیے۔ لیون نے اگلی گیند پر ایشانت شرما كو  آؤٹ کرکے ہندوستانی  اننگز 189 رن پر سمیٹ دی۔