جديد بهارت

Jadeed Bharat

No. 1 Urdu Daily Newspaper of Jharkhand

E Paper

ePaper

راج بھون، رانچی میں ہولی ملن تقریب کا انعقاد گورنر محترمہ نے تمام ریاست واسیوں کو ہولی کی مبارکباد پیش کی

19 Mar 2019

جدید بھارت نیوز سروس

رانچی، 19؍مارچ: ریاست کی گورنر محترمہ دروپدی مرمو کی باوقار موجودگی میں آج راج بھون کے برسا منڈپ میں رانچی ویمن کالج، رانچی یونیورسٹی اور ونوبا بھاوے یونیورسٹی کے تعاون سے ہولی ملن تقریب نیز ثقافتی پروگرام کا انعقاد کیا گیا۔ مذکورہ موقع پر جھارکھنڈ انسانی حقوق کمیشن کے چیئرمین ایس کے ست پتھی، گورنر کے پرنسپل سکریٹری ستیندر سنگھ، رانچی، ونوبا بھاوے، سدھو کانہو مرمو اور ڈاکٹر شياماپرساد مکھرجی یونیورسٹی کے وائس چانسلر اور رانچی یونیورسٹی کی پرو وائس چانسلر اور رانچی ویمن کالج کی پرنسپل ڈاکٹر منجو سنہا سمیت کئی دانشور اور طالبات موجود تھیں۔ پروگرام کے آغاز میں رانچی ویمن کالج کی طالبات کے ذریعہ اپنی پیشکش سے پلوامہ حملہ کے شہیدوں کو خراج عقیدت پیش کیا گیا۔ اس کے علاوہ موسیقی ڈپارٹمنٹ کی طالبات کے ذریعہ ہولی پر نغمات پیش کی گئیں۔ کالج کی طالبات کے ذریعہ منی پوری رقص بھی پیش کیا گیا۔ اس موقع رقص تھیٹر کا خوبصورت اسٹیج شو کیا گیا۔انشومن آدتیہ داس نے اپنی پیشکش سے سب کو گرودہ بنالیا۔ اس کے علاوہ ونوبا بھاوے یونیورسٹی کی طالبات کے ذریعہ ہولی پر ڈانس اور موسیقی پیش کی گئی۔ آخر میں رانچی ویمن کالج کی طالبات نے روایتی ہولی رقص پیش کیا۔ گورنر محترمہ نے تمام شرکاء کی پیشکش کی تعریف کرتے ہوئے تمام ریاست واسیوں کو ہولی کی مبارکباد دی۔ انہوں نے کہا کہ ہولی باہمی محبت اور بھائی چارہ اور ہم آہنگی کو مزید مضبوط بنانے کا پیغام دیتی ہے۔ انہوں نے اس موقع پر سب کو اچھے عبیر و گلال کا ہی استعمال کرنے کا مشورہ دیا۔ کیمیائی رنگوں سے پرہیز کرنے کی بات کہی۔

 


سیاسی پارٹی بوتھ لیول ایجنٹ تعینات کریں ایل کھیانگتے نے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ شمالی جنوبی چھوٹاناگپور کمشنری کے الیکشن افسروں کو ہدایات دیں

19 Mar 2019

جدید بھارت نیوز سروس

رانچی، 19 ؍مارچ: ریاست کے چیف الیکشن افسر ایل کھیانگتے نے کہا ہے کہ الیکشن کمیشن آف انڈیا کے ذریعہ دیئے گئے احکامات کے تحت تمام سیاسی جماعتوں کے ذریعہ بوتھ لیول ایجنٹ تعینات کیا جانا چاہئے۔مسٹر کھيانگتے آج ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے شمالی اور جنوبی چھوٹاناگپور کمشنری کے تحت آنے والے اضلاع کے ضلع الیکشن افسروں کے ساتھ الیکشن کی تیاریوں کا جائزہ لے رہے تھے۔ انہوں نے ضلع الیکشن افسر وں کو ہدایت دی کہ وہ اپنے اپنے اضلاع میں سیاسی جماعتوں کے ساتھ ہونے والی میٹنگ میں بوتھ لیول ایجنٹ بحال کرنے پر چرچا کریں۔ چیف الیکشن افسر نے تمام ڈسٹرکٹ الیکشن افسروں کو کہا کہ وہ 20 مارچ تک ای آر او نیٹ پر مختلف قسم کے فارم کی پراسیسنگ جلد یقینی بنائیں۔ انہوں نے ضلع الیکشن افسروں کو سویپ، انتخابی ضابطہ اخلاق، شکایات کا حل، الیکشن دستور العمل اور قانونی نظام سے متعلق رپورٹ روزانہ وقت پر بھیجنے اور ڈیش بورڈ پر اپڈیٹ کرنے کا حکم دیا۔ مسٹر کھيانگتے نے تمام ڈسٹرکٹ الیکشن افسروں سے پیڈ نیوز پر نظر رکھنے کا حکم دیا۔اس موقع پرایڈیشنل چیف الیکشن افسر ونے کمار چوبے اور منیش رنجن بھی موجود تھے۔

بی ایل او سطح پر زیر التوا معاملوں کو جلد از جلد حل کریں: مسٹر کھيانگتے نے تمام ڈسٹرکٹ الیکشن افسروں سے کہا کہ 20 مارچ تک ای آر او نیٹ پر مختلف قسم کے فارم کی پراسیسنگ جلد از جلد یقینی بنائیں۔ اس کے بعد صرف فارم -6 کے تحت ووٹر لسٹ میں نئے نام درج کرنے کی کارروائی کی جائے گی۔ ایپک کارڈ سے متعلق زیر التوا معاملات پر جلد از جلد عملدرآمد کیلئے بوتھ لیول افسران کے ساتھ میٹنگ اور تربیت کے ذریعے ان کو بااختیار بنانے  کی ہدایت ضلع الیکشن افسروں کو دی گئی۔ مسٹر کھيانگتے نے ضلع الیکشن افسروں کو سویپ، انتخابی ضابطہ اخلاق، شکایت کا حل، انتخابی قانونی نظام سے متعلق رپورٹ روزانہ وقت مقررہ پر بھیجنے اور ڈیش بورڈ پر اپ ڈیٹ کرنے کی ہدایت دی۔

ضروری سہولیات اور ڈھانچوں کی جانکاری لی : مسٹر کھيانگتے نے تمام ڈسٹرکٹ الیکشن افسروں سے پیڈ نیوز پر نظر رکھنے کے لئے ضروری تیاری اور سہولیات کو لے کر کی گئی تیاریوں کی جانکاری لی۔ ضلع الیکشن افسروں نے چیف الیکشن افسر کو جانکاری دی کہ اس کے لئے کافی تعداد میں اہلکار رکھے گئے ہیں۔ ہندی، انگریزی اور دیگر زبانوں میں شائع ہونے والے اخبار کی نگرانی کی جا رہی ہے اور اس میں شائع انتخابات سے متعلق خبروں کے جائزے کے ساتھ ریکارڈ بھی رکھا جا رہا ہے۔ ساتھ ہی الیکٹرانک چینلز میں نشر ہونے والے خبروں پر نظر رکھنے کے لئے کافی تعداد میں ٹیلی ویژن سیٹ لگائے گئے ہیں اور نشر ہونے والی خبروں کی نگرانی کی جا رہی ہے۔ مسٹر کھيانگتے نے ضلع الیکشن افسروں سے الیکشن کو لے کر بنائے گئے کنٹرول روم کے بارے میں بھی جانکاری لی۔ انہوں نے ضلع الیکشن افسروں سے کہا کہ وہ کنٹرول روم میں لاگ بک ان کا وقتاً فوقتاً معائنہ کریں۔ مسٹر ایل کھيانگتے نے ضلع الیکشن افسروں سے کہا کہ میڈیا کی تصدیق اور منظوری دینے والی کمیٹی اپنی رپورٹ ہر ہفتے سنیچر کے ایک بجے تک بھیجیں۔

ضلع الیکشن اخراجات کمیٹی تشکیل: کھيانگتے نے کہا کہ امیدواروں کے ذریعہ انتخابی مہم پر کئے جانے والے اخراجات سے متعلق رپورٹ اخراجات سپروائزر کو دیئے جانے والے کٹ میں دینا ہے۔ اس کی تیاری پہلے ہی کر لیں، تاکہ انہیں وقت پر فراہم کی جا سکے۔ انہوں نے ضلع الیکشن افسروں سے ضلع الیکشن اخراجات کمیٹی تشکیل دینے کا بھی حکم دیا۔

انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی سے متعلق معاملات پر طے وقت میں کارروائی ہو: کھيانگتے نے انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی سے متعلق معاملات پر اصول کے مطابق کارروائی کو یقینی بنانے کی ہدایت دی۔ انہوں نے اس بارے میں ویڈیو سرولانس ٹیم کو تربیت کر قابل بنانے پر زور دیا۔ ویڈیو سرولانس ٹیم کو ریکارڈنگ کے تحت واقعہ کا نام اور پتہ، تاریخ، مقام اور پروگرام کو منعقد کرنے والی سیاسی جماعت اور امیدوار کا نام بھی واضح ہو۔ ویڈیوگرافی اس طرح کی جانی چاہیے کہ متعلقہ پروگرام پر ہونے والے اخراجات کی تعین کی جا سکے۔ اس پروگرام کے لئے استعمال کئے جانے والی گاڑیوں، ان کے رجسٹریشن نمبر، پنڈال، کرسی، ٹیبل، لاؤڈ اسپیکر، ہورڈنگس، پوسٹر وغیرہ کی واضح ویڈیوگرافی کی جانی چاہئے۔ انہوں نے اسٹیٹک سرولانس ٹیم کی تشکیل کو لے کر بھی ضلع الیکشن افسروں کو ہدایت دی۔ اس ٹیم میں مجسٹریٹ، پولیس فورس اور ویڈیوگرافر شامل کئے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ اسٹیٹک سرولانس ٹیم میں مرکزی آرمڈ پولیس فورس کے اہلکار کو بھی ضرورت کے تحت رکھا جائے۔

پولنگ مراکز پر سہولیات کی جانکاری لی : ونے کمار چوبے، ایڈیشنل چیف الیکشن افسر نے ماڈل پولنگ اسٹیشن، خواتین پولنگ اسٹیشن، اسسٹنٹ پولنگ اسٹیشن اور بوتھ لیول مینجمنٹ کو لے کر کی جانے والی تیاریوں کی جانکاری ڈسٹرکٹ الیکشن افسروں سے لی۔ ضلع الیکشن افسروں نے بتایا کہ اس سمت میں ساری تیاریاں مکمل کر لی گئی ہیں۔ مسٹر چوبے نے معذور ووٹروں کے لئے پولنگ اسٹیشن پر فراہم جانے والی سہولیات کے بارے میں بھی ضلع الیکشن افسروں کو ضروری ہدایات دی۔

غیر ضمانتی وارنٹ کے زیر التوا معاملوں کو جلد از جلد تصفیہ کریں: مسٹر چوبے نے ضلع الیکشن افسروں سے کہا کہ الیکشن کیلئے منصفانہ، بے خوف اور صاف ماحول پیدا کرنے کے لئے غیر ضمانتی وارنٹ کے زیر التوا معاملوں کو جلد حل کریں اور مجرمانہ رجحان کے لوگوں پر سی آر پی سی کی دفعہ 107 کے تحت کارروائی کویقینی بنائیں۔ اس سے متعلق رپورٹ روزانہ چیف الیکشن افسر کے دفتر پر بھیجیں۔

سویدھا ایپ میں ملی درخواستوں پر اجازت: مسٹر چوبے نے کہا کہ کسی پارلیمانی حلقہ کے کچھ حصہ دیگر ضلع میں واقع ہو تو اس صورت میں سی وجل پر آنے والی شکایات اور سویدھا ایپ کے ذریعے مانگی جانے والی اجازت کے سلسلے میں متعلقہ ڈپٹی الیکشن افسر حل کیلئے قابل اتھارٹی ہوں گے۔

کال آپریٹر کو بنائیں مضبوط: منیش رنجن، ایڈیشنل چیف الیکشن افسر نے بتایا کہ ووٹر ہیلپ لائن نمبر 1950 پر آنے والے کالز کی تعداد میں کافی اضافہ ہوا ہے۔ اس ہیلپ لائن نمبر پر پوچھے جانے والے سوالات کا درست جواب دینے کیلئے کال آپریٹروں کو زیادہ بااختیار بنانے کے لئے تربیت دینے اور اپنی سطح سے اس کامعائنہ کرنے کی ہدایت ضلع الیکشن افسروں کو دی گئی۔ مسٹر رنجن نے بتایا کہ ایک ہفتے کے اندر تمام ووٹر ہیلپ کال سینٹروں پر آئی  وی  آر ایس قائم کر دیا جائے گا۔ اس کال ویٹنگ سہولت، کال کی لاگ بک وغیرہ ممکن ہو پائے گی۔

رپورٹ کو لے کر ایک افسر کو ذمہ داری دیں : مسٹر رنجن نے ضلع الیکشن افسروں کو الیکشن کمیشن کی طرف سے جاری ہدایات پر وقت پر تعمیل یقینی بنانے کو کہا۔ انہوں نے مشورہ دیا کہ ڈیش بورڈ پر چیف الیکشن افسر کو بھیجے جانے والی رپورٹ کو لے کر ایک افسر کو نمایاں ذمہ داری دی جا سکتی ہے تاکہ وہ مختلف سیلوں سے رپورٹ حاصل کر وقت پر الیکشن کمیشن اور چیف الیکشن افسرکو دستیاب کرائے۔

(فوٹو) 

 


جھارکھنڈ کے امیدواروں کا نام دہلی میں طے ہوگا وزیر اعلی رگھورداس بات چیت کے لئے دہلی گئے

19 Mar 2019

جدید بھارت نیوز سروس

رانچی، 19 ؍مارچ: وزیر اعلی رگھوور داس منگل کو سروس طیارے سے نئی دہلی کے لئے روانہ ہوئے۔ رگھوور داس نئی دہلی میں پارٹی کے اعلی رہنماؤں کے ساتھ امیدواروں کے انتخاب کے مسئلے پر بات چیت کریں گے۔ وزیر اعلی رگھوور داس، ریاستی لوک سبھا انچارج منگل پانڈے اور تنظیمی جنرل سکریٹری کی جانب سے صوبائی انتخاب کمیٹی کی میٹنگ کے بعد امیدواروں کی فہرست مرکزی قیادت کو پہلے ہی سونپی جا چکی ہے۔ لیکن کچھ سیٹوں پر مشاورت کے لئے وزیر اعلی کو دہلی بلایا گیا ہے اور وزیر اعلی سے بات چیت کے بعد ہی مرکزی قیادت کی جانب سے امیدواروں کے نام کا باقاعدہ اعلان کئے جانے کا امکان ہے۔حالانکہ ابھی بھی امیدواروں کے نام کے اعلان میں کچھ وقت لگنے کا امکان ہے اور ایسا امکان ہے کہ جھارکھنڈ کے لئے پارٹی امیدواروں کے ناموں کا اعلان ہولی کے تہوار کے بعد ہی ہو سکے گا۔ بی جے پی نے ریاست کی 14 لوک سبھا سیٹوں میں سے 13 سیٹ پر اپنی قسمت آزمانے کا فیصلہ کیا ہے اور ان نشستوں کے لئے پارٹی کے پاس امیدواروں کی طویل فہرست ہے۔ سال 2014 میں بی جے پی نے 14 سیٹوں میں سے 12 سیٹوں پر کامیابی حاصل کی تھی، لیکن ان میں سے ایک نشست بی جے پی نے اپنے اتحادی آجسو کے لئے چھوڑ دی ہے۔ بتایا گیا ہے کہ ہر ایک سیٹ پر 3 سے 5 امیدواروں کی دعویداری نے رانچی سے لے کر دہلی تک کے بیٹھے لیڈروں کو سوچنے پر مجبور کر دیا ہے۔ اس بار ٹکٹ تقسیم میں سماجی، سیاسی اور ذاتی مساوات کے تال میل بیٹھانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ بی جے پی انتخابی میدان میں ہر ذات اور طبقے کو اتارنے میں لگی ہے، تاکہ بی جے پی سب کا ساتھ سب کا وکاس کے نعرے کو زمین پر اتار سکے۔ سیاسی گلیاروں میں سیٹنگ ممبران پارلیمنٹ کے ٹکٹ کٹنے اور نہیں کٹنے کے درمیان بھی سماجی توازن بنانے پر خاصا خیال رکھا جا رہا ہے۔

 


رانچی پولس نے 15گھنٹے میں پانچ زانیوں کو دھردبوچا

19 Mar 2019

جدید بھارت نیوز سروس

رانچی، 19 ؍مارچ: ریاست کی راجدھانی رانچی میں سوموار کی دیر رات ایک طالبہ کی اجتماعی آبروریزی کرنے کا معاملہ سامنے آنے کے بعد پولیس نے رات بھر چھاپے ماری کر پانچ نوجوانوں کو حراست میں لے لیا ہے اور ان سے پوچھ گچھ کی جا رہی ہے۔ وہیں بے ہوش متاثرہ کے پوری طرح سے ہوش میں آنے کا انتظار کیا گیا، تاکہ ملزمان کے بارے میں صحیح جانکاری مل سکے۔ واقعہ کے سلسلے میں ملی اطلاع کے مطابق رانچی کے لالپور تھانہ علاقہ کے ورددھمان کمپاؤنڈ کے ایک فلیٹ میں سوموار کی دیر رات کو طالبہ کو نشہ آور اشیاء کھلا کر اس کے دوست نے ہی آبروریزی کی اور اس کے دوست کے ساتھ آئے دیگر لڑکوں نے بھی اجتماعی آبروریزی کی۔ بعد میں متاثرہ کو نشے کی حالت میں سڑک پر لا کر چھوڑ دیا گیا۔ بتایا گیا ہے کہ طالبہ اور اس کے چھ دوست کل شام گھومنے نکلے تھے۔ اسی دوران طالبہ کے ایک دوست نے اس کو کولڈڈرنک پینے کے لئے دیا۔کولڈ ڈرنک پلا کر نوجوان نے اپنے دوستوں کے ساتھ اجتماعی آبروریزی کی۔لالپور تھانہ علاقہ میں پولیس کی گشت ٹیم نے فوری طور پر بے ہوش پڑی طالبہ کو اسپتال میں داخل کرایا۔ بتایا گیا ہے کہ طالبہ اتنے نشے میں تھی کہ وہ کچھ بھی بتا نہیں پا رہی تھی۔ آناً فاناً میں اس کو لالپور پولیس ٹیم نے مقامی نجی ہسپتال میں داخل کروایا اور بے ہوش حالت میں ہی طالبہ کی جانب سے ملی کچھ جانکاری کی بنیاد پر پولیس نے چھاپہ ماری شروع کی۔ پولیس نے فوری طور پر ان ملزمان کو حراست میں لے لیا، جن جن ملزمان کے نام متاثرہ نے بتائے تھے۔ بتایا گیا ہے کہ پانچ نوجوانوں کو پولیس نے حراست میں لے لیا ہے اور ان سے پوچھ گچھ کی جا رہی ہے۔ پولیس ایک اور ملزم کی تلاش میں بھی مصروف ہے۔ وہیں اسپتال میں داخل متاثرہ نے وہاں پہنچے اپنے والد کو پورے واقعہ کی جانکاری دی۔ اس نے والد کو بتایا کہ اس کے دوستوں نے اس کے ساتھ غلط کیا۔ فی الحال سبھی ملزمان سے پولس پوچھ گچھ کر رہی ہے۔

 


دم دکھاؤ، چلو ووٹنگ کریں، چلو ملک بدلیں

19 Mar 2019

جدید بھارت نیوز سروس

دمکا، 19 ؍مارچ: ’دکھاؤ دمکا، چلو ووٹنگ کریں، چلو دیش بدلیں مہم‘ کے تحت لوگوں کو ووٹ ڈالنے کے لئے بیدار کیا جا رہا ہے۔ سویپ پروگرام کے تحت ضلع کے مختلف بلاکوں میں ووٹر بیداری پروگرام چلایا جا رہا ہے۔ اسی سلسلے میں سویپ پروگرام کے تحت ضلع انتظامیہ کے ذریعہ ووٹرس آف دی ڈے منتخب کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ سویپ سیل کے ذریعہ ووٹرس آف دی ڈے کیلئے 8987828779 نمبر جاری کیا گیا ہے۔ اس نمبر پر کوئی بھی ووٹر اپنی سیفلی اور پورا پتہ بھیج سکتا ہے۔ ساتھ ہی مذکورہ ووٹر کو’ حق رائے دیہی جمہوریت کا حق‘ موضوع پر زیادہ سے زیادہ 100 الفاظ میں اپنا پیغام بھیجنا ہوگا۔ موصول پیغام اور تصویر کو سویپ سیل روزانہ شائع ہونے والے اپنے کتابچہ میں شامل کرے گا اور سویپ سیل کے واٹس ایپ، فیس بک، یوٹیوب، ٹیوئٹر وغیرہ پر اپلوڈ کیا جائے گا۔

 


نجی فائنانس کمپنی کے ملازم سے دو لاکھ سے زیادہ کی لوٹ

19 Mar 2019

جدید بھارت نیوز سروس

دیوگھر، 19 ؍مارچ: دیوگھر کے جسيڈیہہ تھانہ علاقہ کے شنکاری گاؤں میںسوموار کی دیر شام نقاب پوش جرائم پیشہ لوگوں نے ایک نجی فائنانس بینک ملازم سے دو لاکھ روپے سے زیادہ کی رقم سمیت موٹر سائیکل اور موبائل لوٹ لیا۔ اس دوران جرائم پیشہ لوگوں نے ملازم کے ساتھ مارپیٹ بھی کی۔ ہمارے نامہ نگار نے ذرائع کے حوالے سے بتایا کہ واقعہ کو انجام دینے میں سات جرائم پیشہ افراد شامل تھے۔ واقعہ کی اطلاع پا کر پولیس معاملے کی چھان بین جٹ گئی ہے۔

 


ہولی کو لے کر ریاست بھر میں جوش، سیکورٹی کے پختہ انتظامات

19 Mar 2019

جدید بھارت نیوز سروس

رانچی، 19 ؍مارچ: رنگوں کا تہوار ہولی کو لے کر ریاست بھر کے لوگوں میں خاصا جوش و خروش دیکھا جا رہا ہے۔ جگہ جگہ پر ہولی ملن تقریب کا اہتمام کی تیاری چل رہی ہے۔ اس دوران ہولی کو لے کر رانچی ضلع انتظامیہ کے ذریعہ سیکورٹی کے پختہ انتظامات کئے گئے ہیں۔ بڑی تعداد میں آر اے ایف کے جوانوں کو قانونی نظم و نسق برقرار رکھنے کے لئے تعینات کیا گیا ہے۔ مختلف حساس علاقوں میں مجسٹریٹوں کی قیادت میںپولس فورسز کی تعیناتی کی گئی ہے۔ اس دوران نشہ کی حالت میں گاڑی چلانے والوں پر بھی کڑی نگرانی کی جائے گی۔ادھر، رام گڑھ ضلع میں خوشگوار ماحول میں ہولی کا تہوار منانے کے لئے انتظامیہ کے ذریعہ امن بحالی کے لئے فلیگ مارچ نکالا گیا۔ اس موقع پر سب ڈویژنل پولس افسر پرکاش چندر مہتو نے کہا کہ پتراتو سب ڈویژن علاقے کے بھرکنڈا، بھدانی نگر، بڑکاکانا سمیت کئی علاقوں میں انتظامیہ کے ذریعہ لاء اینڈ آرڈر کے بندوبست کے لئے چوکسی برتی جا رہی ہے۔ ہولی تہوار کے پیش نظر پنڈراجورا تھانہ احاطے میںچاس سب ڈویژن پولیس افسر بہنامن ٹڈی کی صدارت میں امن کمیٹی کی میٹنگ منعقد کی گئی۔ انہوں نے کہا ہے کہ تہوار کے دوران تھانہ علاقہ کے کسی گاؤں میں کوئی شرارتی عنصر رکاوٹ پیدا کرنے کی کوشش کرے گا تو اس کے خلاف سخت قانونی کارروائی کی جائے گی۔ اس کیلئے انہوں نے سماج کے تمام دانشوروں اور دیگر لوگوں سے اس کی اطلاع فوری طور پر نزدیکی تھانے میں دینے کی اپیل ہے۔ ادھر، پلاموںمیں بھی ہولی کو لے کر سیکورٹی کے پختہ انتظامات کئے گئے ہیں۔ہولی دہن کا پروگرام 20 مارچ کو رات میں ہوگا۔ ہولی کے تہوار میں لاء اینڈ آرڈر کو برقرار رکھنے کو لے کر ضلع انتظامیہ کی طرف سے خاصی تیاری کی گئی ہے۔ ضلع مجسٹریٹ نیز ڈپٹی کمشنر ڈاکٹر شانتن کمار اگریہر کی ہدایت کی روشنی میں مشترکہ حکم جاری کرتے ہوئے قانونی نظام کو برقرار رکھنے کی ہدایت دی گئی ہے۔ ہولی کو لے کر تشدد کے واقعات سے انتظامیہ کی ٹیم پوری مستعدی سے نمٹے گی۔ فرقہ وارانہ ماحول کے نقطہ نظر سے حساس مقامات اور ہولی کے موقع پر کشیدگی کے امکان والے علاقوں کو ضلع انتظامیہ کی ٹیم نے نشاندہی کر ویسے مقامات پر پولیس فورسز کی تعیناتی کر دی گئی ہے۔ دیوگھر میں بھی ہولی کے تہوار کو دیکھتے ہوئے میونسپل اور قانونی بندوبست کرلیا گیا ہے۔ اس کے لئے میونسپل کارپوریشن کی جانب سے صفائی پر خصوصی توجہ دی گئی ہے۔ ساتھ ہی پانی کی کمی کو دیکھتے ہوئے میونسپل کی جانب سے انتظامات پر زور دیا گیا ہے کہ وہ ہولی کھیلے، لیکن ہربل رنگوں کے ساتھ، پانی کا غلط استعمال نہیں کریں۔ سٹی منیجر پرکاش مشرا نے بتایا کہ علاقے میں کم بارش ہونے کی وجہ سے ابھی سے پانی کی دقت شروع ہو گئی ہے۔حالانکہ میونسپل کی جانب سے کوشش کی جا رہی ہے کہ شہرواسیوں کو کافی مقدار میں پانی فراہم کرایا جائے۔ باوجود ہولی کے تہوار کو دیکھتے ہوئے شہرواسیوں پر زور دیا گیا ہے کہ ہولی میں پانی کا زیادہ استعمال ہوتا ہے۔ اس کے لئے کم پانی خرچ کریں اور فضول میں پانی نہ بہائیں۔ ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ صحت و صفائی کے ساتھ ساتھ تمام وارڈ کے سپروائزر کو ہدایت دی گئی ہے کہ کہی بھی گندگی نہیں رہنا چاہئے، تاکہ ہولی میں گندگیوں سے لوگوں کو پریشانیوں کا سامنا نہ کرنا پڑے ۔


تمام اسمبلی حلقوں کے لئے اسسٹنٹ الیکشن افسر کی تعیناتی

18 Mar 2019

جدید بھارت نیوز سروس

رانچی، 18 ؍مارچ: لوک سبھا انتخابات 2019 کے تحت رانچی لوک سبھا سیٹ پر صاف، منصفانہ اور آزادانہ طریقے سے انتخابات ختم کرانے کے لئے اسسٹنٹ الیکشن افسران کی تعیناتی کی گئی ہے۔ مختلف اسمبلی حلقوں میں تعینات افسران میں ايچاگڑھ اسمبلی کے اسسٹنٹ الیکشن افسر چانڈل کے سب ڈویژنل افسر بی کے مشرا، سلی کے لئے ایڈیشنل کلکٹر رانچی ستیندر کمار، کھجری کے لئے ایڈیشنل کلکٹر نکسل راجیش بروار، رانچی اسمبلی حلقہ کے لئے صدر سب ڈویژنل افسر گریما سنگھ ، ہٹیا کے لئے ایڈیشنل کلکٹر لاء اینڈ آرڈر اکھلیش کمار سنہا اور کانکے اسمبلی سیٹ کے لئے ایڈیشنل کلکٹر منوج کمار رنجن کو الیکشن افسر بنایا گیا ہے۔ وہیں کھونٹی پارلیمانی حلقہ میں پڑنے والے تماڑ اسمبلی حلقہ کے لئے بنڈو کی سب ڈویژنل افسر سروج ترکی اور لوہردگا پارلیمانی حلقہ کے مانڈر اسمبلی سیٹ کے لئے مینا کواسسٹنٹ الیکشن افسر بنایا گیا ہے۔


جھارکھنڈ کی ترقی میں چین نے تعاون دینے کی خواہش ظاہر کی

18 Mar 2019

جدید بھارت نیوز سروس

رانچی، 18؍مارچ: چیف سکریٹری سدھیر ترپاٹھی سے ان کے دفتر میں ملاقات کر چینی وفد نے جھارکھنڈ کی ترقی میں تعاون اور شراکت دینے کی خواہش ظاہر کی ہے۔ کولکتہ میں پیپلز ریپبلک آف چین کے کانسلیٹ جنرل جہالیو کی قیادت میں چینی وفد نے کہا کہ بھارت کے نارتھ ایسٹ کی ریاستوں اور چین کے جنوبی ویسٹ کے صوبوں میں باہمی تعاون کے علاقے کی نشان دیہی کر ترقی دی جا سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ جھارکھنڈ کے معدنی املاک اور ٹاٹا جیسی کمپنیوں کے ساتھ چین کی ہیوی انجینئرنگ اور توانائی کے شعبے میں تال میل کر آگے بڑھنے کی کافی گنجائش ہے۔ اسی کے ساتھ کانسلیٹ جنرل جہالیو نے چیف سکریٹری کے ذریعے وزیر اعلی رگھوور داس اور جھارکھنڈ کی گورنر دروپدی مرمو کو جون میں چین آنے کی دعوت دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعلی پہلے بھی چین کے دورے پر جا چکے ہیں، لیکن اس بار کا دورہ باہمی تعاون سے کاروبار بڑھانے پر توجہ مرکوز کی جائے گی۔ 

 چین اور جھارکھنڈ کی حکومت تعاون کے علاقوں کو نشان زد کرنے کے لئے اپنا اپنا ہوم ورک کریں: چیف سکریٹری نے از آف ڈونگ بزنش میں جھارکھنڈ کی کامیابیوں کا ذکر کرتے ہوئے بتایا کہ ریفارم کی وجہ سے ریاست مسلسل دو سال سے اس معاملے میں پہلے نمبر پر ہے۔ انہوں نے ریاست کے معدنی املاک کوئلہ کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا کہ توانائی کا یہ ذریعہ روایتی ہے اور اس کی بھی ایک حد ہے، اس لئے ہمیں دیگر علاقوں پر بھی توجہ مرکوز کرنی ضروری ہے۔ انہوں نے ریاست میں منعقد ہو چکے گلوبل اسکل سمٹ اور ایگریکلچر سمٹ کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا کہ زراعت کے میدان میں ہم باہمی تعاون کے لئے مشترکہ علاقے کو نشان دیہی کر سکتے ہیں۔ اتفاق رائے کے لئے  چین اور جھارکھنڈ حکومت تعاون کے علاقوں کو نشان یہی کرنے کے لئے اپنا اپنا ہوم ورک کریں اور ٹھوس نتیجے پر پہنچیں۔

ڈائیلاگ کا دائرہ چینی لوگوں اور جھارکھنڈی عوام تک بڑھانا چاہئے: چینی وفد نے ٹریڈ کے علاوہ ایک دوسرے سے لگاتار بات چیت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اس کا دائرہ چینی لوگوں اور جھارکھنڈی عوام تک بڑھانا چاہئے۔ اس کے لئے ایک دوسرے کے یہاں تعلیم، آرٹ اور دیگر علاقوں سے وابستہ لوگوں کو آنے جانے پر زور دیا گیا۔ چیف سکریٹری نے چینی وفد کی باتوں سے ریاستی حکومت کو آگاہ کرنے اور اس کے مطابق مطلع کرنے کی بات کہی۔ اس سے قبل چینی وفد نے رانچی کی خوبصورتی کا ذکر کیا اور جھارکھنڈ کے رویاتی استقبال کی تعریف بھی کی۔ چینی وفد نے چیف سکریٹری کو یادگاری نشان دے کر نوازا۔ چیف سکریٹری نے بھی انہیں جھارکھنڈ کرافٹ کی قبائلی روایات کو عکاسی کرتی ایک خوبصورت یادگار بطور اعزاز فراہم کیا۔ میٹنگ میں داخلہ، جیل اور ڈیزاسٹر مینجمنٹ کے پرنسپل سکریٹری ایس کے جی رہاٹے اور اعلی، تکنیکی تعلیم اور کوشل محکمہ کے سکریٹری راجیش کمار شرما بھی موجود تھے۔

 


20 مارچ کے بعد ووٹر لسٹ سے کسی ووٹر کا نام ہٹایا نہیں جائے گا: ایل کھیانگتے

18 Mar 2019

جدید بھارت نیوزسروس

رانچی، 18؍مارچ: ریاست کے چیف الیکشن افسر ایل کھيانگتے نے کہا ہے کہ 20 مارچ کے بعد ووٹر لسٹ سے کسی بھی ووٹر کا نام ڈیلیٹ نہیں کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ اب صرف نئے درخواست قبول کئے جائیں گے یا پھر جن ووٹروں کا ایڈریس تبدیل کر دیا ہے اسے قبول کیا جائے گا۔ مسٹر کھيانگتے نے آج رانچی میں ریڈیو اور دوردرشن کے ذریعہ منعقد لوک سبھا انتخابات 2019 بیداری ورکشاپ سے خطاب کر رہے تھے۔ کھيانگتے نے کہا کہ 25 جنوری 1950 میں الیکشن کمیشن آف انڈیا کی تشکیل دی گئی اور اس کے بعد سے اب تک دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت میں 17 لوک سبھا انتخابات کا کامیاب انعقاد کیا جا چکا ہے اور اس سے کمیشن کی ساکھ میں اضافہ ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کمیشن آزادانہ، منصفانہ اور بے خوف ماحول میں انتخابات ختم کرانے میں ہمیشہ سے مصروف عمل رہا ہے۔انہوں نے انتخابات میں میڈیا کے کردار کو اہم قرار دیتے ہوئے کہا کہ ریڈیو اور دوردرشن جیسے سرکاری میڈیا اداروں کا کردار مزید بڑھ جاتا ہے۔ مسٹر کھيانگتے نے کہا کہ انتخابات میں امیدواروں کے ذریعہ کئے جانے والے خرچ کی نگرانی کرنے کے لئے بھی کمیشن کی جانب سے نگرانی کی جاتی ہے اور اس کی نگرانی میں میڈیا بھی الیکشن کمیشن کا ایک اہم حصہ ہے۔انہوں نے ووٹر بیداری میں الیکٹرانک میڈیا کے کردار کو اہم قرار دیتے ہوئے کہا کہ ووٹنگ کی شرح میں اضافہ کے لئے میڈیا کا کردار بہت اہم ہوتا ہے۔ چیف الیکشن افسر نے کہا کہ انتخابات کے دوران بی ایل او کے کردار کے ساتھ ہی بی ایل اے( بوتھ لیول ایجنٹ) کی ذمہ داری بھی کافی اہم ہوتی ہے ۔لیکن اب تک کسی بھی سیاسی پارٹی نے اس معاملے میں دلچسپی نہیں دکھائی۔ اس موقع پر ایڈیشنل چیف الیکشن افسر منیش رنجن نے کہا کہ پیڈ نیوز پر میڈیا کو خاص احتیاط برتنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر یہ ثابت ہو جاتا ہے کہ اخبارات یا الیکٹرانکس چینلز میں پیڈ نیوز کی اشاعت یا کاسٹنگ ہوئی ہے تو عوامی نمائندگی قانون 1951 کے تحت 2 سال قید تک کی سزا ہو سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کسی بھی اشتہار کی نشریات کے 3 دن پہلے اسٹیٹ لیول کمیٹی کے ذریعہ اشتہار کاسرٹیفیکیشن کرانا ضروری ہے۔انہوں نے کہا کہ پوسٹر یا پمفلٹ کی اشاعت میں بھی پبلیشر کا نام اور دو گواہ کا دستخط ضروری ہے ورنہ ایسا نہیں ہونے پر 6 ماہ کی قید اور ₹ 2000 جرمانہ کی سزا ہو سکتی ہے۔ اسے قبل علاقائی خبریں اکائی ریڈیو رانچی کے سربراہ راجیش سنہا نے کہا کہ خبروں کے انتخاب میں احتیاط برتنے کی ضرورت ہوتی ہے۔انہوں نے کہا کہ انتخابات کے دوران اور بھی متنبہ رہنے کی ضرورت ہے۔ اس موقع پر ضلعی خبریں 18 دوردرشن کے ایڈیٹر دیواکر کمار نے شکریہ تمام لوگوں کا شکریہ ادا کیا، جبکہ پروگرام کی نظامت ریڈیو نیوز کی پونم کرکیٹا نے کی۔ 

 


عالم و فاضل کے امتحانات یونیورسٹی سے کرائے جانے کا فیصلہ تاریخی طلباء میں خوشی کی لہر، کئی تنظیموں نے فیصلے کا خیر مقدم کیا

25 Nov 2017

آل جھارکھنڈ مدرسہ ٹیچرس ایسو سی ایشن نے فیصلے کا خیر مقدم کیا 

آل جھارکھنڈ مدرسہ ٹیچرس ایسوسی ایشن کے سکریٹری نشرواشاعت محمد حماد قاسمی کی اطلاع کی مطابق آل جھارکھنڈ مدرسہ ٹیچرس ایسوسی ایشن کے صدر سید فضل الہدیٰ، جنرل سکریٹری حامد غازی، سکریٹری نشرواشاعت مولانا حماد قاسمی اور سرپرست شرف الدین رشیدی، مدرسہ اسلامیہ رانچی کے پرنسپل مولانا محمد رضوان قاسمی نے آئندہ سیشن سے عالم وفاضل درجات کے امتحانات رانچی یونیورسٹی سے کرائے جانے کے سرکار کے فیصلے پر خوشی کا اظہار کیا ہے۔ مذکورہ ذمہ داران تنظیم نے ریاستی حکومت کے اس فیصلے کو تاریخی فیصلہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ مدارس کے طلباء کی عالمیت و فضیلت کی اسناد کی افادیت کے پیش نظر ہم شروع سے ہی عالم و فاضل درجات کے امتحانات کسی یونیورسٹی کے ذریعہ منعقد کرائے جانے کا مطالبہ کرتے رہے ہیں۔ بالآخر ہمارا یہ دیرانہ مطالبہ رگھوور حکومت کے عہد میں پورا ہوا۔ اس مطالبہ کو تکمیل کے مرحلے تک پہونچانے میں وزیر تعلیم ڈاکٹر نیر یادو،ہائر ایجوکیشن ڈائریکٹر (آئی اے ایس) ابو عمران اور ریاستی اقلیتی کمیشن کے چیئرمین محمد کمال خان کا بہت اہم اور سرگرم رول رہا ۔ بلکہ اگریہ کہا جائے کہ مذکورہ تینوں آخرالذکر اشخاص اس معاملے میں دلچسپی نہ لیتے تو شاید یہ مسئلہ تکمیل کے مرحلے کو نہیں پہونچتا۔ ہم عالم اور فاضل درجات کے امتحانات آئندہ سیشن سے رانچی یونیورسٹی سے کرائے جانے کے تاریخی فیصلے پر وزیر اعلیٰ رگھوورداس، وزیر تعلیم ڈاکٹر نیرا یادو،ہائر ایجوکیشن ڈائریکٹر ابو عمران اور اقلیتی کمیشن کے چیئرمین محمد کمال خان کا تہہ دل سے شکریہ ادا کرتے ہیں اور انہیں مبارکباد دیتے ہیں۔  

 فیصلہ تاریخی :مولانارضوان قاسمی

مدرسہ اسلامیہ کے پرنسپل محمد رضوان قاسمی نے عالم اور فاضل کے امتحان یونیورسٹی سے منعقد کرائے جانے فیصلے کو تاریخی قرار دیتے ہوئے کہا کہ عالم اور فاضل کے اسناد یونیورسٹی سطح سے طالب علموں کو ملنے سے ان اسناد کی اہمیت مزید اضافہ ہو جائےگا۔ انہوں نے کہا کہ عالم اور فاضل کے امتحان جیک سے منعقد ہونے کے سبب دیگر ریاستوں میں ان اسناد کو تسلیم نہیں کیا جاتا تھا۔ انہوں نے ریاستی حکومت کا شکریہ ادا کرتے ہوئے اس فیصلے کیلئے وزیر تعلیم ڈاکٹر نیرا یادو، ہائر ایجوکیشن کے ڈائریکٹر ابو عمران اور دیگر متعلقہ افسران کو مبارکباد دی ہے۔ مبارکباد دینے والوں میں مدرسہ اساتذہ میں ماسٹر محمد ارشاد، مولانا شجاع الحق، مولانا حبیب اللہ ندوی سمیت دیگر شامل ہیں۔ 

جھارکھنڈ چھاتر سنگھ نے فیصلےکو سراہا

 اعلی تعلیم ڈائریکٹوریٹ  کے ذریعہ موجودہ تعلیمی سیشن میں عالم وفاضل کا امتحان جیک کو منعقد کرنے کی حکم دیتے ہوئے، اعلی تعلیم ڈائریکٹر نے  آئندہ تعلیمی سیشن سے عالم فاضل کے امتحان رانچی یونیورسٹی کو منعقد کرنے کیلئے اتھارائزڈ کرتے ہوئے ملک کے ممتاز یونیورسٹیوں کے نصاب کو ذہن میں رکھتے ہوئے کورس تیار کرنے، یو جی سی گائڈلائن کی روشنی میں امتحان کا انعقاد، ریگولیشن کی تعمیر سے متعلق پہلوؤں پر ضروری کارروائی کرنے کا حکم دیئے جانے پر جھارکھنڈ چھاتر سنگھ اور آمیا کے صدر ایس علی نے وزیر تعلیم ڈاکٹر نیرا یادو، اعلی تعلیم سیکرٹری اجے کمار، اعلی تعلیم ڈائریکٹر ابو عمران کا شکریہ ادا کرتے ہوئے  کہا  کہ سال 2011 سے ہم لوگ عالم اور فاضل کے امتحان رانچی یونیورسٹی سے کروانے کو لے کر مظاہرہ کر رہے تھے، یہی نہیں جیک  کے ذریعہ اس سال امتحان لینے سے انکار کرنے پر مہم بھی چلائی گئی تھی

 


آئی آئی ٹی ایف میں جھارکھنڈ کے ٹرائبل آرٹ کی دھوم سنگاپور،برطانیہ، دبئی اور جرمنی میں جھارکھنڈ کی مصنوعات کا بڑابازار

25 Nov 2017

نئی دہلی ،25 نومبر :ٹرائبل آرٹ اور فیشن کا نام لیتے ہی آپکے دماغ میںکھادی کے کپڑوں پر جھولا نماڈیزائن کا خاکہ ابھرنے لگتا ہے۔لیکن اس خاکہ کو غلط ثابت کر رہاہے ہندستانی عالمی بیوپار میلہ 2017 میںلگایاگیا جھارکھنڈ ٹرائبل آرٹ وفیشن کا اسٹال ۔

 


رانچی میں بین الاقوامی سطح کا میوزیم بنےگا: چیف سکریٹری

27 Jul 2017

جدید بھارت نیو زسروسرانچی، 27 جولائی:ریاست کی چیف سکریٹری راج بالا ورما نے سیاحت ، فن و ثقافت کے کاموں کا جائزہ لیتے ہوئے کہا کہ آپ کسی منصوبہ کو پورا کرنے کی ذمہ داری نہیں ادا کر تے ہیں بلکہ منصوبوں کو ایک کریٹیو  کے طور فراہم کرتے ہیں. اس ویژن کے ساتھ کام کریں. چیف سکریٹری نے کہا کہ حکومت کی ترجیحات واضح ہیں اس پر کام ہونا چاہیے. رانچی میں بین الاقوامی سطح کو میوزیم کے لئے شیڈول کے مطابق کام کی منصوبہ بنا کام شروع کریں. دیوگھر کیو کامپلیکس میںکانوریوں کادباؤ کس طرح کم ہو اس پر بھی فوری اقدامات کریں. ف و ثقافت میں پروگرام کا انعقاد صرف مقصد نہیں ہو. جن کیلئے پروگرام کیا جا رہا ہے ان پر پڑنے والے اثرات کا مطالعہ کریں. پروگرام یوزر اینڈ کے مطابق اور ثقافتی جواز کو فروغ دینے والا ہونا چاہیے. ثقافتی پروگرام ثقافتی ورثے کو آگے بڑھا پانے کے قابل ہونے چاہیے.چیف سکریٹری نے کہا کہ کھیل اور کھلاڑیوں کی ترقی مکمل طور پر پروفیشنل ہو. نشست میں خاص طور پر سکریٹری سیاحت، فن و ثقافت، کھیل کود اور نوجوان  امور محکمہ راہل شرما سمیت کئی عہدیدار موجود تھے۔

رانچی، 27 جولائی:ریاست کی چیف سکریٹری راج بالا ورما نے سیاحت ، فن و ثقافت کے کاموں کا جائزہ لیتے ہوئے کہا کہ آپ کسی منصوبہ کو پورا کرنے کی ذمہ داری نہیں ادا کر تے ہیں بلکہ منصوبوں کو ایک کریٹیو  کے طور فراہم کرتے ہیں. اس ویژن کے ساتھ کام کریں. چیف سکریٹری نے کہا کہ حکومت کی ترجیحات واضح ہیں اس پر کام ہونا چاہیے. رانچی میں بین الاقوامی سطح کو میوزیم کے لئے شیڈول کے مطابق کام کی منصوبہ بنا کام شروع کریں. دیوگھر کیو کامپلیکس میںکانوریوں کادباؤ کس طرح کم ہو اس پر بھی فوری اقدامات کریں. ف و ثقافت میں پروگرام کا انعقاد صرف مقصد نہیں ہو. جن کیلئے پروگرام کیا جا رہا ہے ان پر پڑنے والے اثرات کا مطالعہ کریں. پروگرام یوزر اینڈ کے مطابق اور ثقافتی جواز کو فروغ دینے والا ہونا چاہیے. ثقافتی پروگرام ثقافتی ورثے کو آگے بڑھا پانے کے قابل ہونے چاہیے.چیف سکریٹری نے کہا کہ کھیل اور کھلاڑیوں کی ترقی مکمل طور پر پروفیشنل ہو. نشست میں خاص طور پر سکریٹری سیاحت، فن و ثقافت، کھیل کود اور نوجوان  امور محکمہ راہل شرما سمیت کئی عہدیدار موجود تھے۔


اسلام نگر میں جھونپڑی میں رہنے والے خاندان کو بسایا جائےگا پالی ٹیکنک کالج کو اعلیٰ تعلیم و ہنر کی ترقی کے مرکزی طور پر فروغ کریں:وزیر اعلیٰ کی ہدایت

27 Jul 2017

جدید بھارت نیو زسروسرانچی،27؍جولائی: پالی ٹیکنک کالج کو اعلی تعلیم اور  ہنر کی ترقی کا ایک انتہائی اہم مرکز کے طور پر ترقی کریں. اس کی شناخت قومی سطح پر قائم ہو. اس کے لئے اس کی تجدید کاری کی جائے اور پہلے مرحلے میں رانچی پالی ٹیکنک کالج کی چہار دیواری کی تعمیر بلا تاخیر شروع کریں۔ وزیر اعلی رگھوور داس نے یہ ہدایت آج جھارکھنڈ وزارت میں اپنے دفتر کے کمرے میں منعقد ایک اعلی سطحی نشست میں دی۔ وزیر اعلی نے کہا کہ پالی ٹیکنک کالج کے مشرق میں قبضہ کئے گئے زمین کے ایک حصے پر ہائی کورٹ کی ہدایت کے مطابق 444 خاندانوں کو جڈکو کے ذریعہ تیار ہونے والی عمارتوں میں  بسایا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کمپلیکس کے مشرق میں بھی رہ رہے 50-60 خاندانوں کی عارضی جھگی کو بھی کمپلیکس کے مغرب میں بسانےکے لئے  نشان زد زمین پر اگلے دو دنوں میں شفٹ کرتے ہوئے پورے احاطے کی مضبوط چہار دیواری بنانے کا کام شروع کریں. وزیر اعلی نے جائزہ لیتے ہوئے کہا کہ رانچی کے ڈپٹی کمشنر اس کام کو سرگرمی سے کریں اور عمارت کی تعمیر سکریٹری کا مسلسل نگرانی کریں. وزیر اعلی نے اعلی تعلیم اور ہنر کی ترقی  کے سکریٹری سے اسے ہنر کی ترقی کا ایک اہم مرکز کے طور پر تیار کرنے کی ہدایت دی۔نشست میں وزیر اعلی کے علاوہ چیف سیکرٹری راج بالا ورما، ایڈیشنل چیف سکریٹری  و ترقیات کمشنر امت کھرے، وزیر اعلی کے سیکرٹری سنیل کمار برنوال، اعلی تعلیم  محکمہ کے سکریٹری اجے کمار،محکمہ تعمیرا ت کے سکریٹری  کے کے سون، کمشنر جنوبی چھوٹانا گپور ڈی سی مشرا، ڈپٹی کمشنر منوج کمار، میونسپل کارپوریشن کے ایگزیکٹیو آفیسر اور دیگر افسران موجود تھے.


9؍اگست کو اسمبلی گھیراؤ کو لیکر کانگریس کی نشست

27 Jul 2017

جدید بھارت نیو ز سروسرانچی، 27 جولائی: آئندہ 09 اگست کو اگست یوم انقلاب اور عالمی یوم آدیواسی کے موقع پر اعلان اسمبلی گھیراؤ پروگرام کی کامیابی کے لئے جھارکھنڈ پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر سکھدیو بھگت نے آج پردیش کانگریس ہیڈکوارٹر رانچی میں ضلع صدور کے نشست کی۔پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر سکھدیو بھگت نے ضلع صدور کو خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ریاست کے کانگریس انچارج، سابق مرکزی وزیر آر پی این سنگھ کے تین روزہ جھارکھنڈ قیام کے دوران تمام تنظیموں سے غور- خوض کے بعد ریاست کے  عوامی مسائل،  سی این ٹی۔ ایس پی ٹی ایکٹ میں کسی بھی طرح  کی ترمیم قبول نہیں کرنے، اقتصادی تنگی کے سبب کسانوں  کی خود کشی اور مو ب لاؤنچنگ کے واقعہ کے خلاف اسمبلی گھیراؤ کا فیصلہ لیا گیا ہے۔مسٹر بھگت نے کہا کہ پروگرام کی کامیابی کے لئے ضلع کانگریس کمیٹی 31 جولائی تک اپنے اضلاع میں مجلس عاملہ کی میٹنگ کریں.

رانچی، 27 جولائی: آئندہ 09 اگست کو اگست یوم انقلاب اور عالمی یوم آدیواسی کے موقع پر اعلان اسمبلی گھیراؤ پروگرام کی کامیابی کے لئے جھارکھنڈ پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر سکھدیو بھگت نے آج پردیش کانگریس ہیڈکوارٹر رانچی میں ضلع صدور کے نشست کی۔پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر سکھدیو بھگت نے ضلع صدور کو خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ریاست کے کانگریس انچارج، سابق مرکزی وزیر آر پی این سنگھ کے تین روزہ جھارکھنڈ قیام کے دوران تمام تنظیموں سے غور- خوض کے بعد ریاست کے  عوامی مسائل،  سی این ٹی۔ ایس پی ٹی ایکٹ میں کسی بھی طرح  کی ترمیم قبول نہیں کرنے، اقتصادی تنگی کے سبب کسانوں  کی خود کشی اور مو ب لاؤنچنگ کے واقعہ کے خلاف اسمبلی گھیراؤ کا فیصلہ لیا گیا ہے۔مسٹر بھگت نے کہا کہ پروگرام کی کامیابی کے لئے ضلع کانگریس کمیٹی 31 جولائی تک اپنے اضلاع میں مجلس عاملہ کی میٹنگ کریں.


بی جے پی کارکنوں نے نتیش کی تاجپوشی پر رانچی میںجشن منایا

27 Jul 2017

جدید بھارت نیو زسروسرانچی، 27 جولائی: بہار میں بی جے پی اتحاد کی حکومت بننے پر جھارکھنڈ بی جے پی میں بھی خوشی کی لہر ہے۔بی جے پی کارکنوں نے آج رانچی واقع ریاستی دفتر کے سامنے جم کر آتش بازی کی اور مٹھائیاں بانٹ کر ایک دوسرے کو مبارک باد دی. اس موقع پرریاستی جنرل سکریٹری  دیپک پرکاش، میڈیا انچارج سنجے جیسوال سمیت کئی کارکن موجود تھے۔


شدید بارش کی وجہ سےبھیروی ڈیم میں کار گری ڈورنڈا کالج کے دو طالب علموں عامر حسین اور شوبھم مشراکی موت

27 Jul 2017

جدید بھارت نیوز سروسرانچی، گزشتہ دنوں شدید بارش کی وجہ سے بھیروی ڈیم میں ایک ہونڈا سیٹی کار تقریباًبیس فیٹ گہرے پانی میںگر کر ڈوب گئی۔ اس کار میں سوار دو لوگوں کی موت ہو گئی۔ بڑی مشقت کے بعد دونوں کی لاش باہر نکالی جا سکی۔ یہ دونوں رانچی سے کتھارا (بوکارو) جا رہے تھے۔ دونوں ڈورنڈا کالج کے ایم بی اے کے طالب علم تھے۔ واضح رہے کہ جب یہ حادثہ پیش آیا اس وقت سینگڑا پل پر لگ بھگ چار سے پانچ فیٹ اونچا  ڈیم کا پانی بہہ رہا تھا۔ رات ہونے کی وجہ سے ڈرائیور کواندازہ نہیں ہو سکا اور اس نے آگے چل رہی کار سے سائڈ لیتے ہوئے آگے بڑھانے کے لئے پل پر کار کو چڑھا دیا، اسی درمیان کار پل سے نیچے گر کر ڈیم کے گہرے پانی میں ڈوب گئی اور کار پر سوار دونوں نوجوان کی موت ہو گئی۔ بتایا جاتا ہے کہ کار میں سوار دونوں نوجوان آفس کالونی کتھارا (بوکارو)کے رہائشی عامر حسین (22) ولد حاجی زین العابدین اور شوبھم مشرا (24) ولد دودھناتھ مشرا دیر رات بوکارو جانے کے لئے کار سے روانہ ہوئے تھے۔ اس سانحہ کی جانکاری پیچھے سے آرہے کار میں سوار لوگوں نے واپس لوٹ کر مقامی گاوں کے علاوہ سکدیری تھانہ کو دی۔ سکدیری تھانہ نے اس کی اطلاع رجرپا اور گولا تھانے کو دی۔ رجرپا اور گولا تھانہ پولیس نے جائے حادثہ پر پہنچ کر حالات کا جائزہ لیا۔ کار ڈیم کے اندر گہرے میں ڈوب جانے کی وجہ سے کچھ پتہ نہیں چل رہا تھا۔ اس بیچ غوطاخوروں کی ایک ٹیم تلاش کے لئے راستے سے ہوکر جائے حادثہ تک وہاں پہنچی۔ رات میں مقامی لوگوں نے بھی اس سلسلے میں کافی کوششیں کیں، لیکن کوئی پتہ نہیں چلا۔ بودھ کی صبح تقریباً سات بجے سے ڈیم کے اندر جھاگر لے کر چھان بین شروع کی گئی۔ بڑی مشقت کے بعد کار کا نمبر پلیٹ ملا۔ غوطا خوروں اور مقامی لوگوں کی مدد سے کرین کے ذریعہ ڈوبی کار کو باہر نکالا گیا۔دونوں کی موت ہو چکی تھی۔ پولیس نے دونوں کی لاش کو اپنے قبضے میں لے کر پوسٹ مارٹم کے لئے بھیج دیا ۔ وہیں دوسری طرف بیٹے عامر حسین سے والد کی 8:30بجے موبائل پر بات چیت ہوئی تھی۔ اس نے بتایا تھا کہ وہ سکدیری گھاٹی اتر رہے ہیں۔ پھر اس کے بعد والد نے دوبارہ موبائل سے رابطہ قائم کرنے کی کوشش کی کہ وہ گھاٹی پار ہوا یا نہیں لیکن کوئی رابطہ قائم نہیں ہوسکا۔واضح رہے کہ حادثہ کے شکار متوفی عامر حسین کی مٹی اور نماز جنازہ جمعرات کو بعد نماز ظہر ان کے گاوں بیرمو میں ادا کی گئی۔   


برسا زرعی یونیورسٹی میں بحالی کیلئے ایک ہفتے میں اشتہار شائع کرائیں جائزہ نشست میں گورنر کی جے پی ایس سی کو ہدایت

27 Jul 2017

جدید بھارت نیو زسروسرانچی،27؍جولائی:ریاست کی گورنر و ریاست کے یونیورسٹیوں کی چانسلر محترمہ دروپدی مرمو نے جھارکھنڈ پبلک سروس کمیشن کو ہدایت دی کہ برسا زرعی یونیورسٹی کے ذریعہ تعلیمی عہدوں پر تقرری کیلئے پوسٹ کی گئی  نوٹیفکیشن پر جلد کارروائی کرتے ہوئے ایک ہفتے کے اندر اشتہار شائع کریں تاکہ طلبہ کے مفاد میں جلد تقرری ہو سکے. انہوں نے کہا کہ کسی بھی تعلیمی ادارے کی ترقی میں طالب علم، فیکلٹی اور بنیادی ڈھانچہ تین اہم طول و عرض ہیں. گورنر جمعرات کو  راج بھون میں برسا زرعی یونیورسٹی کے تعلیمی اور انتظامی ترقی کا جائزہ لے رہی تھیں. نشست میں گورنر نے ہدایت دی کہ برسا زرعی یونیورسٹی اپنی الحاق کالجوں کی تعمیر تیزی سے کرے. تعمیراتی کام کیلئے  رقم جلد ہی حکومت  کے ذریعہ فراہم کرائی جائےگی۔ انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی عمارت کے معیار کا ہر حال میں خیال رکھیں، تعمیراتی ذمہ داری انہیں کی ہے. اس کیلئے وہ مسلسل جانچ کریں. نشست میں زراعت سکریٹری نے آگاہ کرایا کہ ان کالجوں میں  عہدے  کی تشکیل کی سمت میں گریجویشن کمیٹی کے ذریعہ منظوری فراہم کر دی گئی ہے.نشست میں 773  مزدوروں کے بقایا  کی ادائیگی جلد کرنے کو کہا گیا. اس سمت انہیں 3.5 کروڑ روپے جلد ہی فراہم کر دیے جائیں گے. ساتھ ہی وائس چانسلر کو ہدایت دی گئی کہ کہاں اور کس کے مرکز میں کتنے مزدوروں کی ضرورت ہے، اس پر وہ ایک رپورٹ بلا تاخیر  پیش کریں تاکہ رقم کی ادائیگی میں کسی بھی قسم کا مسئلہ نہ ہو. موقع پر برسا زرعی یونیورسٹی کو یہ بھی ہدایت  دی گئی کہ وہ امدادی گرانٹ  فنڈ میں  کئے گئے تمام قسم کے اخراجات  کی  افادیت سرٹیفکیٹ  پیش کریں. نشست میں گورنر کے پرنسپل سکریٹری ایس کے ستپتھی، زراعت سکریٹری پوجا سنگھل، برسا زرعی یونیورسٹی کے وائس چانسلر پی کوشل، جھارکھنڈ پبلک سروس کمیشن کے سیکرٹری جگجیت سنگھ،  اسپیشل ورک وفسر (عدالتی) سمیت محکمہ زراعت اور برسا زرعی یونیورسٹی کے دیگر عہدیدار موجود تھے۔


لالو پرساد کے گواہ کورٹ نہیں پہنچے دو دنوں کیلئے اصالتاً پیشی سے ملی چھوٹ، پٹنہ لوٹے

27 Jul 2017

جدید بھارت نیو زسروسرانچی، 27 جولائی: اربوں روپے کے سرخیوں میں چھائے چارہ گھوٹالہ معاملے میں لالو پرساد آج رانچی واقع سی بی آئی کی خصوصی عدالت میں حاضر ہوئے، لیکن ان کے دو گواہ عدالت میں غیر موجود رہے۔چارا گھوٹالہ معاملے کے مختلف مقدمات میں لالو پرساد کی 28 اور 29 جولائی کو بھی پیشی ہونی تھی ، لیکن عدالت کی جانب سے انہیں ان دو تاریخوں میں ذاتی  پیشی سے چھوٹ مل گئی اور وہ واپس پٹنہ لوٹ گئے۔سی بی آئی کی خصوصی عدالت میں آج لالو پرساد کی جانب سے دو گواہ سدانند سنگھ اور راجندر خاں کی گواہی ہونی تھی، پر دونوں کورٹ نہیں پہنچے۔ لالو پرساد کے خلاف چارہ گھوٹالے سے منسلک آرسی 64 اے / 96، آرسی 68 اے / 96، آرسی 38 اے / 96 اور آرسی 47 اے / 96 کیس میں سی بی آئی کی خصوصی عدالت میں سماعت چل رہی ہے. یہ معاملے بالترتیب دیوگھر، چائباسہ، دمکا اور ڈورنڈا ٹریزری سے غیر قانونی طور پر نکاسی سے منسلک ہے۔رانچی گیسٹ ہاؤس میں لالو پرساد نے آر جے ڈی کارکنوں سے ملاقات کی اور میڈیا سے بھی بات کی۔

رانچی، 27 جولائی: اربوں روپے کے سرخیوں میں چھائے چارہ گھوٹالہ معاملے میں لالو پرساد آج رانچی واقع سی بی آئی کی خصوصی عدالت میں حاضر ہوئے، لیکن ان کے دو گواہ عدالت میں غیر موجود رہے۔چارا گھوٹالہ معاملے کے مختلف مقدمات میں لالو پرساد کی 28 اور 29 جولائی کو بھی پیشی ہونی تھی ، لیکن عدالت کی جانب سے انہیں ان دو تاریخوں میں ذاتی  پیشی سے چھوٹ مل گئی اور وہ واپس پٹنہ لوٹ گئے۔سی بی آئی کی خصوصی عدالت میں آج لالو پرساد کی جانب سے دو گواہ سدانند سنگھ اور راجندر خاں کی گواہی ہونی تھی، پر دونوں کورٹ نہیں پہنچے۔ لالو پرساد کے خلاف چارہ گھوٹالے سے منسلک آرسی 64 اے / 96، آرسی 68 اے / 96، آرسی 38 اے / 96 اور آرسی 47 اے / 96 کیس میں سی بی آئی کی خصوصی عدالت میں سماعت چل رہی ہے. یہ معاملے بالترتیب دیوگھر، چائباسہ، دمکا اور ڈورنڈا ٹریزری سے غیر قانونی طور پر نکاسی سے منسلک ہے۔رانچی گیسٹ ہاؤس میں لالو پرساد نے آر جے ڈی کارکنوں سے ملاقات کی اور میڈیا سے بھی بات کی۔


نتیش نے میرے ساتھ چال کھیلا، بہار کے عوام کو مایوس کیا ہماری بنیاد بہت مضبوط ہے، اسے کوئی نہیں ہلا سکتا:لالو پرساد

27 Jul 2017

جدید بھارت نیو زسروسرانچی،27؍جولائی: بہار میں این ڈی اے وزیر اعلی کے طور پر نتیش کمار کے حلف لینے کے کچھ دیر بعد آر جے ڈی چیف لالو یادو بی جے پی پر جم کر برسے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی اور نتیش نے مل کر ان کے خلاف سازش رچی اور انہیں جھوٹے کیس میں پھنسایا۔ لالو نے یہاں تک کہا کہ مودی اور امت شاہ کے رشتہ داروں نے مہاتما گاندھی کا قتل کیا تھا۔ رانچی میں سی بی آئی کورٹ میں پیشی کے لیے آئے لالو یادو نے پریس کانفرنس میں نتیش کمار پر موقع پرست ہونے کا الزام لگایا۔ انہوں نے کہا بہار کے عوام نے ہم دونوں کو عوامی حمایت دی تھی،لیکن نتیش نے اس کو رسوا کیا۔ انہوں نے کہا کہ نتیش کے اس قدم سے گاؤں کے لوگ ناراض ہیں۔نتیش کمار پر لگے قتل کے الزام کا ذکر کرتے ہوئے لالو پرساد یادو نے کہا کہ نتیش نے گولی ماری اس کے ثبوت ہیں۔ بدعنوانی سے بڑا ظلم ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نتیش کمار نے خود اپنے حلف نامہ میں ذکر کیا تھا کہ وہ 302 سمیت کئی دیگر دفعات میں ملزم ہیں۔انہوں نے نتیش کمار کو موقع پرست اور ڈھونگی بتاتے ہوئے کہا کہ وہ کہتے تھے کہ مٹی میں مل جاؤں گا لیکن بی جے پی سے ہاتھ نہیں ملاوں گا۔ لالو نے کہا کہ انہوں نے نتیش کمار کو وزیر اعلی بنایا تھا۔ انہوں نے کہا، "میں نے ان کے ماتھے پر ٹیکہ لگایا اور کہا جاؤ شنکر بھگوان کی طرح راج کرو۔ لیکن یہ تو بھسماسر نکلا۔ میرے دل میں کوئی لالچ نہیں تھی، نہیں تو میں کیوں انہیں وزیر اعلی کے طور پر نامزد کرتا۔" اب بی جے پی کے ساتھ مل کر انہوں نے مجھے پھنسایا ہے۔لالو نے کہا کہ کئی مواقع پر نتیش مودی سے ملے، ان کے ساتھ بھوج کیا۔ دونوں کے درمیان جو کچھ بھی ہوا وہ پہلے سے سیٹ تھا۔مودی اور امت شاہ کے خاندان نے گاندھی کا قتل کیالالو نے مہاتما گاندھی کو یاد کرتے ہوئے کہا کہ یہ افسوسناک ہے کہ آج وہ ملک کو جوڑنے کے لئے موجود نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ امت شاہ اور مودی کے خاندان کے گوڈسے نے ان کا قتل کر دیا اور نتیش کمار نے انہی لوگوں سے ہاتھ ملا لیا۔ انہوں نے کہا، "نریندر مودی نے اچھے دن اور کام کا جھانسہ دیا۔آر جے ڈی کے سربراہ نے کہا کہ بہار میں بی جے پی کے خلاف انہیں ووٹ ملا تھا، بہار کے عوام نے نریندر مودی اور امت شاہ کو خالی ہاتھ لوٹانے کا کام کیا، تب نتیش کمار نے کہا کہ وہ مٹی میں مل جائیں گے، لیکن بی جے پی کے ساتھ نہیں جائیں گے ، نتیش تشہیر کرواتے تھے کہ وہ وزیر اعظم کے عہدے کے امیدوار ہیں، ان کی تصویر اچھی ہے، جب  تشہیر فیل ہوا، انہوں نے نتیش کمار کو ٹیکہ لگا کر کہا، جاؤ راج کرو۔ 80  اراکین اسمبلی نے تیجسوی کو نائب وزیر اعلی کے لئے منتخب کیا اور انہوں نے پہلے ہی کہہ دیا تھا کہ وزیر اعلی نتیش کمار ہی ہوں گے۔آر جے ڈی کے سربراہ نے کہا کہ نتیش کمار جب مہاگٹھ بندھن کی بات کرنے آئے تھے، تب ان سے بات کرنے کی خواہش نہیں تھی، وہ نتیش کمار کی کئی ذاتی باتیں بھی جانتے ہیں، لیکن اسے یہاں کہنا اچھا نہیں ہوگا۔ نتیش کمار نے کہا تھا کہ اب نوجوان اقتدار سنبھالیں گے، وہ شنکر بابا کی طرح رہے اور نتیش کمار بھسماسر نکلے.تیجسوی نے کوئی گھپلا نہیں کیا انہوں نے یہ بھی دعوی کیا کہ تیجسوی نے کوئی گھپلا نہیں کیا، ان کے خلاف کوئی ثبوت نہیں ہے، اگر مخالفین کے پاس سے کوئی ثبوت ہے، تو اسے پیش کریں. لالو پرساد نے کہا کہ ان کا بنیاد کافی مضبوط ہے، اسے ہلایا-ڈلايا نہیں جا سکتا، زیادہ سیٹیں آنے پر بھی انہوں نے قربانی دی، لیکن نتیش کمار نے چال کھیلا۔انہوں نے یہ بھی الزام لگایا کہ نتیش کمار نے بی جے پی سے مل کر سی بی آئی اور ای ڈی کا کیس کروایا، اس کے لئے نتیش نے سشیل مودی کو فکس کیا تھا، ان پر لگائے گئے 30 ہزار کروڑ کی پراپرٹی حاصل کرنے کا الزام مکمل طور پر بے بنیاد ہے.سشیل مودی کو میرے خلاف بولنے کیلئے فکس کیا گیا تھالالو پرساد نے کہا کہ سشیل مودی کو فکس کیا گیا. روز روز میرے خلاف بولتے رہو. ان لوگوں کا کام کیس کرنے کا کیا. جعلی-جعلی کام کیا۔انہوں نے کہا کہ کوئی حقیقی تعلق کا ہوتا تو مصیبت میں پوچھتا ہے، لیکن نتیش نے کبھی کچھ پوچھا ہی نہیں۔نتیش کمار کو ہم نے کہا تھا، تین دن کے لئے رانچی جا رہے ہیں. ممبران اسمبلی کی میٹنگ بلا لیں اور غور کرلیں۔انہوں نے کہا کہ میچ فکس تھا بھاجپا آر ایس ایس کا. پارلیمنٹ بورڈ کی میٹنگ. نتیش گورنر کو اچانک بلایا گیا. استعفی اور پھر حکومت تشکیل.سشيل مودی اسٹیپنی تھے نتیش کمار کی. اب پھر اسٹیپنی بن گئے۔ انہوں نے بتایا کہ نتیش کمار اکثر نریندر مودی کے ساتھ  بھوج کرتے تھے، امت شاہ سے فارم ہاؤس میں ملاقات کی، ایک اخبار نے چھاپہ تو نتیش کمار اس سے ناراض ہو گئے. انہوں نے الزام لگایا کہ آج میڈیا کو کارپوریٹ گھرانے چلا رہے  ہیں۔امت شاہ میڈیا کے سپر ایڈیٹر لالو پرساد نے کہا کہ امت شاہ میڈیا کے سپر ایڈیٹر  ہیں، وہ جو چاہتے ہیں، وہی چھپتا ہے. اس میں رپورٹروں کو اس میں کوئی اعتراض نہیں ہے. ایڈیٹر بھی کچھ نہیں کر سکتے. تمام تاجر مالک ہیں۔ میڈیا جمہوریت کا کھمبا ہو اور ہم لوگ آپ کی آزادی کے لئے لڑتے ہیں. یوگی نے یوپی میں صحافیوں پر لاٹھی چلوائی. ان کا کھانا چھینا. لیکن کسی میڈیا نے کچھ نہیں دکھایا. لیکن لالو پرساد بس کسی کو کرسی سے اٹھا دیں، تو یہ الزام لگ جاتا ہے کہ لالو مار تا ہے۔انہوںنے کہا کہ عوام میں تصویر خراب کرنے کے لئے ان کے 22 ٹھکانوں پر چھاپاماري کی گئی، جبکہ وہ اس وقت رانچی میں تھے، چھاپے میں کچھ نہیں ملا، اسے کسی نے نہیں بتایا. میڈیا کے جن لوگوں کو وہ اچھا سمجھتے تھے، ان لوگوں نے ان کی سپاری لے رکھی ہے. آر جے ڈی کے سربراہ نے کہا کہ دنیا میں امریکہ سب سے بڑا جمہوری ملک ہے، وہاں میڈیا صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے خلاف ہے، اس سے لڑ رہا ہے اور اپنے ملک میں میڈیا اپوزیشن سے لڑ رہا ہے۔لالو پرساد نے بتایا کہ وہ آخری بار رانچی سی بی آئی کورٹ میں پیشی کے لیے آئے تھے، کورٹ میں بینچ پر بیٹھے تھے، اسی وقت نتیش کا فون آیا اور پوچھا تھا کہ  تیجسوی کے معاملے میں کیا بات ہے. تب انہوں نے نتیش کمار کو بتا دیا تھا کہ  تیجسوی نابالغ  تھا، اس پر جعلی کیس ہوا ہے. اس کے بعد تیجسوی کو بھی نتیش کے پاس بات چیت کے لئے بھیجا، لیکن اس وقت نتیش کمار نے ان سے کہا تھا کہ انہوں نے استعفی نہیں مانگا ہے، پریس والے اس خبر کو چلا رہے  ہیں، چلانے دیجیے۔انہوں نے بتایا کہ جب بہار میں گورنر کو بلایا گیا، تو ان کے کان کھڑے ہوگئے. انہوں نے بتایا کہ سپریم کورٹ میں جانے کی تیاری کر رہے ہیں، ملک کے مشہور وکیل رام جیٹھ ملانی سے بات چیت کر رہے ہیں.نتیش پر قتل کا معاملہ درج ہےآر جے ڈی سپریمو نے یہ بھی کہا کہ نتیش پر بھی 302 کا مقدمہ درج ہے، ان پر نوٹس لیا جا چکا ہے، ایسے میں وہ بے داغ کس طرح ہوئے. پورے معاملے کی  جانکاری اور کاغذات ان کے پاس ہے. انہوں نے یہ بھی کہا کہ اتر پردیش کے وزیر اعلی یوگی اور مرکزی وزیر اوما بھارتی پر سمیت کئی لیڈروں پر ایف آئی آر درج ہے، ان سے کیوں نہیں استعفی مانگے جا رہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ وہ اتر پردیش کے وزیر اعلی اکھلیش یادو اور مایاوتی کو ایک منچ پر لائیں گے، ساتھ ہی مغربی بنگال کی وزیر اعلی ممتا بنرجی کو بھی بہار میں راشٹریہ جنتا دل کی جانب سے منعقد ہونے والی ریلی میں مدعو کیا جائے گا۔


نتیش نے میرے ساتھ چال کھیلا، بہار کے عوام کو مایوس کیا ہماری بنیاد بہت مضبوط ہے، اسے کوئی نہیں ہلا سکتا:لالو پرساد

27 Jul 2017

جدید بھارت نیو زسروسرانچی،27؍جولائی: بہار میں این ڈی اے وزیر اعلی کے طور پر نتیش کمار کے حلف لینے کے کچھ دیر بعد آر جے ڈی چیف لالو یادو بی جے پی پر جم کر برسے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی اور نتیش نے مل کر ان کے خلاف سازش رچی اور انہیں جھوٹے کیس میں پھنسایا۔ لالو نے یہاں تک کہا کہ مودی اور امت شاہ کے رشتہ داروں نے مہاتما گاندھی کا قتل کیا تھا۔ رانچی میں سی بی آئی کورٹ میں پیشی کے لیے آئے لالو یادو نے پریس کانفرنس میں نتیش کمار پر موقع پرست ہونے کا الزام لگایا۔ انہوں نے کہا بہار کے عوام نے ہم دونوں کو عوامی حمایت دی تھی،لیکن نتیش نے اس کو رسوا کیا۔ انہوں نے کہا کہ نتیش کے اس قدم سے گاؤں کے لوگ ناراض ہیں۔نتیش کمار پر لگے قتل کے الزام کا ذکر کرتے ہوئے لالو پرساد یادو نے کہا کہ نتیش نے گولی ماری اس کے ثبوت ہیں۔ بدعنوانی سے بڑا ظلم ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نتیش کمار نے خود اپنے حلف نامہ میں ذکر کیا تھا کہ وہ 302 سمیت کئی دیگر دفعات میں ملزم ہیں۔انہوں نے نتیش کمار کو موقع پرست اور ڈھونگی بتاتے ہوئے کہا کہ وہ کہتے تھے کہ مٹی میں مل جاؤں گا لیکن بی جے پی سے ہاتھ نہیں ملاوں گا۔ لالو نے کہا کہ انہوں نے نتیش کمار کو وزیر اعلی بنایا تھا۔ انہوں نے کہا، "میں نے ان کے ماتھے پر ٹیکہ لگایا اور کہا جاؤ شنکر بھگوان کی طرح راج کرو۔ لیکن یہ تو بھسماسر نکلا۔ میرے دل میں کوئی لالچ نہیں تھی، نہیں تو میں کیوں انہیں وزیر اعلی کے طور پر نامزد کرتا۔" اب بی جے پی کے ساتھ مل کر انہوں نے مجھے پھنسایا ہے۔لالو نے کہا کہ کئی مواقع پر نتیش مودی سے ملے، ان کے ساتھ بھوج کیا۔ دونوں کے درمیان جو کچھ بھی ہوا وہ پہلے سے سیٹ تھا۔مودی اور امت شاہ کے خاندان نے گاندھی کا قتل کیالالو نے مہاتما گاندھی کو یاد کرتے ہوئے کہا کہ یہ افسوسناک ہے کہ آج وہ ملک کو جوڑنے کے لئے موجود نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ امت شاہ اور مودی کے خاندان کے گوڈسے نے ان کا قتل کر دیا اور نتیش کمار نے انہی لوگوں سے ہاتھ ملا لیا۔ انہوں نے کہا، "نریندر مودی نے اچھے دن اور کام کا جھانسہ دیا۔آر جے ڈی کے سربراہ نے کہا کہ بہار میں بی جے پی کے خلاف انہیں ووٹ ملا تھا، بہار کے عوام نے نریندر مودی اور امت شاہ کو خالی ہاتھ لوٹانے کا کام کیا، تب نتیش کمار نے کہا کہ وہ مٹی میں مل جائیں گے، لیکن بی جے پی کے ساتھ نہیں جائیں گے ، نتیش تشہیر کرواتے تھے کہ وہ وزیر اعظم کے عہدے کے امیدوار ہیں، ان کی تصویر اچھی ہے، جب  تشہیر فیل ہوا، انہوں نے نتیش کمار کو ٹیکہ لگا کر کہا، جاؤ راج کرو۔ 80  اراکین اسمبلی نے تیجسوی کو نائب وزیر اعلی کے لئے منتخب کیا اور انہوں نے پہلے ہی کہہ دیا تھا کہ وزیر اعلی نتیش کمار ہی ہوں گے۔آر جے ڈی کے سربراہ نے کہا کہ نتیش کمار جب مہاگٹھ بندھن کی بات کرنے آئے تھے، تب ان سے بات کرنے کی خواہش نہیں تھی، وہ نتیش کمار کی کئی ذاتی باتیں بھی جانتے ہیں، لیکن اسے یہاں کہنا اچھا نہیں ہوگا۔ نتیش کمار نے کہا تھا کہ اب نوجوان اقتدار سنبھالیں گے، وہ شنکر بابا کی طرح رہے اور نتیش کمار بھسماسر نکلے.تیجسوی نے کوئی گھپلا نہیں کیا انہوں نے یہ بھی دعوی کیا کہ تیجسوی نے کوئی گھپلا نہیں کیا، ان کے خلاف کوئی ثبوت نہیں ہے، اگر مخالفین کے پاس سے کوئی ثبوت ہے، تو اسے پیش کریں. لالو پرساد نے کہا کہ ان کا بنیاد کافی مضبوط ہے، اسے ہلایا-ڈلايا نہیں جا سکتا، زیادہ سیٹیں آنے پر بھی انہوں نے قربانی دی، لیکن نتیش کمار نے چال کھیلا۔انہوں نے یہ بھی الزام لگایا کہ نتیش کمار نے بی جے پی سے مل کر سی بی آئی اور ای ڈی کا کیس کروایا، اس کے لئے نتیش نے سشیل مودی کو فکس کیا تھا، ان پر لگائے گئے 30 ہزار کروڑ کی پراپرٹی حاصل کرنے کا الزام مکمل طور پر بے بنیاد ہے.سشیل مودی کو میرے خلاف بولنے کیلئے فکس کیا گیا تھالالو پرساد نے کہا کہ سشیل مودی کو فکس کیا گیا. روز روز میرے خلاف بولتے رہو. ان لوگوں کا کام کیس کرنے کا کیا. جعلی-جعلی کام کیا۔انہوں نے کہا کہ کوئی حقیقی تعلق کا ہوتا تو مصیبت میں پوچھتا ہے، لیکن نتیش نے کبھی کچھ پوچھا ہی نہیں۔نتیش کمار کو ہم نے کہا تھا، تین دن کے لئے رانچی جا رہے ہیں. ممبران اسمبلی کی میٹنگ بلا لیں اور غور کرلیں۔انہوں نے کہا کہ میچ فکس تھا بھاجپا آر ایس ایس کا. پارلیمنٹ بورڈ کی میٹنگ. نتیش گورنر کو اچانک بلایا گیا. استعفی اور پھر حکومت تشکیل.سشيل مودی اسٹیپنی تھے نتیش کمار کی. اب پھر اسٹیپنی بن گئے۔ انہوں نے بتایا کہ نتیش کمار اکثر نریندر مودی کے ساتھ  بھوج کرتے تھے، امت شاہ سے فارم ہاؤس میں ملاقات کی، ایک اخبار نے چھاپہ تو نتیش کمار اس سے ناراض ہو گئے. انہوں نے الزام لگایا کہ آج میڈیا کو کارپوریٹ گھرانے چلا رہے  ہیں۔امت شاہ میڈیا کے سپر ایڈیٹر لالو پرساد نے کہا کہ امت شاہ میڈیا کے سپر ایڈیٹر  ہیں، وہ جو چاہتے ہیں، وہی چھپتا ہے. اس میں رپورٹروں کو اس میں کوئی اعتراض نہیں ہے. ایڈیٹر بھی کچھ نہیں کر سکتے. تمام تاجر مالک ہیں۔ میڈیا جمہوریت کا کھمبا ہو اور ہم لوگ آپ کی آزادی کے لئے لڑتے ہیں. یوگی نے یوپی میں صحافیوں پر لاٹھی چلوائی. ان کا کھانا چھینا. لیکن کسی میڈیا نے کچھ نہیں دکھایا. لیکن لالو پرساد بس کسی کو کرسی سے اٹھا دیں، تو یہ الزام لگ جاتا ہے کہ لالو مار تا ہے۔انہوںنے کہا کہ عوام میں تصویر خراب کرنے کے لئے ان کے 22 ٹھکانوں پر چھاپاماري کی گئی، جبکہ وہ اس وقت رانچی میں تھے، چھاپے میں کچھ نہیں ملا، اسے کسی نے نہیں بتایا. میڈیا کے جن لوگوں کو وہ اچھا سمجھتے تھے، ان لوگوں نے ان کی سپاری لے رکھی ہے. آر جے ڈی کے سربراہ نے کہا کہ دنیا میں امریکہ سب سے بڑا جمہوری ملک ہے، وہاں میڈیا صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے خلاف ہے، اس سے لڑ رہا ہے اور اپنے ملک میں میڈیا اپوزیشن سے لڑ رہا ہے۔لالو پرساد نے بتایا کہ وہ آخری بار رانچی سی بی آئی کورٹ میں پیشی کے لیے آئے تھے، کورٹ میں بینچ پر بیٹھے تھے، اسی وقت نتیش کا فون آیا اور پوچھا تھا کہ  تیجسوی کے معاملے میں کیا بات ہے. تب انہوں نے نتیش کمار کو بتا دیا تھا کہ  تیجسوی نابالغ  تھا، اس پر جعلی کیس ہوا ہے. اس کے بعد تیجسوی کو بھی نتیش کے پاس بات چیت کے لئے بھیجا، لیکن اس وقت نتیش کمار نے ان سے کہا تھا کہ انہوں نے استعفی نہیں مانگا ہے، پریس والے اس خبر کو چلا رہے  ہیں، چلانے دیجیے۔انہوں نے بتایا کہ جب بہار میں گورنر کو بلایا گیا، تو ان کے کان کھڑے ہوگئے. انہوں نے بتایا کہ سپریم کورٹ میں جانے کی تیاری کر رہے ہیں، ملک کے مشہور وکیل رام جیٹھ ملانی سے بات چیت کر رہے ہیں.نتیش پر قتل کا معاملہ درج ہےآر جے ڈی سپریمو نے یہ بھی کہا کہ نتیش پر بھی 302 کا مقدمہ درج ہے، ان پر نوٹس لیا جا چکا ہے، ایسے میں وہ بے داغ کس طرح ہوئے. پورے معاملے کی  جانکاری اور کاغذات ان کے پاس ہے. انہوں نے یہ بھی کہا کہ اتر پردیش کے وزیر اعلی یوگی اور مرکزی وزیر اوما بھارتی پر سمیت کئی لیڈروں پر ایف آئی آر درج ہے، ان سے کیوں نہیں استعفی مانگے جا رہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ وہ اتر پردیش کے وزیر اعلی اکھلیش یادو اور مایاوتی کو ایک منچ پر لائیں گے، ساتھ ہی مغربی بنگال کی وزیر اعلی ممتا بنرجی کو بھی بہار میں راشٹریہ جنتا دل کی جانب سے منعقد ہونے والی ریلی میں مدعو کیا جائے گا۔


زندگی میں کامیابی برسوں کی سخت محنت سے حاصل ہوتی ہے کریم سٹی کالج جمشیدپور میں طلباء و طالبات سے سنجے کمار کا خطاب

23 Jul 2017

   جمشیدپور،22؍جولائی: وزیر اعلی و اطلاعات و رابطہ عامہ محکمہ جھارکھنڈ کے پرنسپل سکریٹری سنجے کمار نے کہا کہ ریاست اور قوم کی ترقی کے لئے ضروری ہنر ،جو ہمارے پاس موجود ہے. مشق، محنت اور نظم و ضبط کے میل سے ہم ترقی کے نئے ریکارڈ قائم کر سکتے ہیں. زندگی میں تعلیم کی بہت اہمیت ہے. انہوں نے کہا کہ اعلی تعلیم کی اہمیت کو بہت سخت مانتے ہوئے ہی وزیر اعلی نے اس کے لئے مختلف شعبہ کی تشکیل کی ہے. اعلی تعلیمی اداروں میں بہتر تعلیمی نظام کے ذریعہ ترقی کے راستے ہموار کئے جا سکتے ہیں. سنجے کمار آج جمشید پور کے کریم سٹی کالج کے طلباء و طالبات سے خطاب کر رہے تھے. سنجے کمار نے کہا کہ زندگی میں کامیابی کئی سالوں کے سخت کوشش اور شدید محنت سے حاصل ہوتی ہے. نظم و ضبط اور تعلیم کامیابی کے اہم ستون ہیں۔ محنت کرنے کی رجحان کے بغیر زندگی میں آگے بڑھنا مشکل ہے. زندگی کا آغاز کلاس روم سے ہی ہو جاتا ہے. یہیں سے محنت کرنے کے رجحان کی بنیاد پڑتی ہے. انہوں نے کہا کہ زندگی میں آگے بڑھنے کے لئے تعلیم کے علاوہ اور کوئی چارہ نہیں ہے۔ اس موقع پر موجود ڈپٹی کمشنر مسٹر امت کمار نے  کولہان علاقے میں مسلسل تعلیم کے میدان میں بڑے پیمانے پر کام کرنے کے لئے  کریمیہ ٹرسٹ کو مبارکباد دی۔ انہوں نے کہا زندگی میں ہدف کا تعین بہت ضروری ہے. محنت اور تندہی سے مقصد کو حاصل کیا جا سکتا ہے. مسٹر کمار نے کہا کہ کولہان علاقے کے سنہری مستقبل کی تشکیل کرنے کا جو خواب کریم سٹی کالج نے سجويا ہے اس  کے ثمر آور ہونے میں حکومت اور انتظامیہ شانہ بہ شانہ چلنے کو تیار ہے. ضلع میں بہتر انتظامیہ ہو اور حکومت کی مثبت تصویر بنے اس کے لئے ہم ہمیشہ کوشاں ہیں۔ اس موقع پر ضلع کے اعلی افسران اور کالج کے ہیڈ ماسٹر، ٹیچرس اور طلباء و طالبات موجود تھے۔کریم سٹی کالج مانگومیں لائبریری اور کمپیوٹر لیب کا افتتاحجدید بھارت نیوز سروسجمشید پور، 22جولائی: کریم سٹی کالج جمشیدپور میں لائبریری اور کمپیوٹر لیب کا آئی اے ایس سنجے کمار کے ہاتھوں افتتاح کیا گیا۔ افتتاح کے بعد ایک پروگرام کا کریم ٹرسٹ کے ٹرسٹی سید آفاق کریم کی صدارت میں انعقاد کیا گیا۔ اس پروگرام میں مہمان خصوصی کی حیثیت سے سنجے کمار، جمشیدپورکے ڈی سی امت کمار آئی اے ایس اور کریم سٹی کالج کے پرنسپل ڈاکٹر محمد زکریاشامل ہوئے۔ مہمانوں کا استقبال کالج کے طلباء نے گلدستہ پیش کر کے کیا اور کالج کی جانب سے اظہار تشکر کالج کے پرنسپل نے کیا۔ اس موقع پر آفاق کریم نے لائبریری اور کمپیوٹر لیب کی افادیت اور اہمیت پر لوگوں کے سامنے تفصیل سے روشنی ڈالی۔انہوں نے کہا کہ ہمارے شہر جمشید پور کے لئے یہ فخر کی بات ہے کہ یہاں کریم سٹی کالج میں لائبریری اور کمپیوٹر لیب کا افتتاح ہو رہا ہے۔ وہیں مہمان خصوصی کی حیثیت سے آئے سنجے کمار نے کہا کہ آج ہم نے اپنی زندگی کو مشکل بنا رکھا ہے جب کہ انسان کی زندگی بہت سادہ ہے۔ ہمیں چاہئے کہ پہلے اپنا مقصد طے کریں پھر اس ہدف کی حصولیابی کی کوشش کریں۔ پروگرام کی نظامت کے فرائض پروفیسریحیٰ ابراہیم نے انجام دیئے۔اس موقع پر کالج کے عہدیدران کے علاوہ کثیر تعداد میں طلباء موجود تھے۔


گاندھی کے ملک میں گوڈسے کے نظریات پھیلائے جا رہے ہیں ان نظریات سے دیش کو نجات دلائیں گے: کانگریس لیڈر کا دعویٰ

23 Jul 2017

جدید بھارت نیو زسروسرانچی، 22 جولائی: کانگریس کے تنظیمی انتخابات کو پیش نظر آج رانچی ضلع (دیہی) کانگریس کی نشست کانگریس  بھون میں ضلع صدر رما  کھلکھو کی صدارت میں ہوئی۔نشست میں کل ہند کانگریس کمیٹی  کے ذریعہ رانچی ضلع (دیہی) کانگریس کمیٹی کے لیے مقرر ضلع الیکشن آفیسر انکت پریہار موجود تھے. مسٹر  پریہار نے میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ رانچی کے کل 18  بلاکوں میں آئندہ 30 اگست 2017 تک انتخابات کرا لئے جائیں گے۔ بلاک صدور کے  انتخاب کا عمل بلاک سطح پر 16 اگست 2017 سے شروع کر دی جائے گی. اکتوبر 2017 تک ضلع سطح کا  انتخاب کرا لیا جائے گا.انہوں نے کہا کہ تنظیم انتخابات کے بعد کانگریس تنظیم ایک نئی طاقت کے ساتھ ابھر کر سامنے آئے.انہوںنے کہا کہ آج ملک میں نظریاتی جنگ چل رہی ہے. دیش کی سوا سو کروڑ عوام اس سے کافی فکر مند ہیں کہ گاندھی کے ملک میں گوڈسے کے نظریات اور دہشت گردی پھیلائی جا رہی ہے۔ جس سے معاشرے کی طاقت منتشر ہو رہی ہے. کانگریس نے ان نظریات سے 2019 تک دیش کو آزاد کرانے کا فیصلہ کیا ہے. نشست کو خاص طور پر خطاب کرنے والوں میں رانچی ضلع دیہی کانگریس کمیٹی کے نائب صدر و ترجمان سید افسر شاہ، ناگیندرناتھ گوسوامی، چندردیو شکلا، لال مہیش ناتھ شاہدیو ، اشوک کمار گپتا، عین الحق انصاری، سریش ساؤ،  منتظر احمد رضا، اشوک مشرا، ڈاکٹر برسا اراؤں، راجیش کشیپ، کرن سانگا، کنچن کرکٹا، شمیم ​​اختر آزاد، راج کشور سنگھ منڈا،  جن منجے مہتو، ناگیشور مہتو، انل ویتھ، رمیش اوراؤں، تلسی کھروار، سنجر خان، ذاکر انصاری، پچو ترکی شامل ہیں.


جے ایم ایم کا کارکن کانفرنس کا آغاز آج سے

23 Jul 2017

جدید بھارت نیو زسروسرانچی،22؍ جولائی: ریاست کی اہم اپوزیشن پارٹی جھارکھنڈ مکتی مورچہ نے مشن -2019 کا آغاز کر دیا ہے. اس کے تحت پارٹی تقریباً ایک سال تک ریاست کے تمام لوک سبھا علاقوں میں پڑنے والے اسمبلی حلقوں میں کارکن کانفرنس کے آغاز اتوار سے کرنے جا رہی ہے. اس کی شروعات گریڈیہہ لوک سبھا کے ٹنڈی علاقے سے ہوگی۔پارٹی کے مرکزی جنرل سکریٹری ونود پانڈے نے  سنیچر کو بتایا کہ ریاست کے تمام 14 لوک سبھا علاقے میں یہ پروگرام شروع ہو جائے گا اور 23 جولائی سے شروع ہونے والے اس کارکن کانفرنس  و تربیتی کیمپ 10 مئی، 2018 تک چلے گا.انہوں نے کہا کہ ٹڈی کے بعد 18 اگست کو مشرقی سنگھ بھوم لوک سبھا علاقے میں دوسرا کانفرنس ہوگا. پہلے مرحلے میں ان دونوں علاقوں میں پڑنے والے سبھی اسمبلی حلقہ کو کور کئے جائیں گے.پارٹی کے مرکزی سیکرٹری جنرل نے بتایا کہ ہر کانفرنس میں پارٹی کے کارگزار صدر ہیمنت سورین پردیش کے تمام 81 اسمبلی حلقوں کا دورہ کریں گے. اس دوران وہ کچھ علاقوں میں نائیٹ ہالٹ بھی کریں گے۔ اتوار سے شروع ہونے والے کانفرنس میں پنچایت سطح سے، بوتھ سطح سے پارٹی کے کارکن اس میں شامل ہوں گے. ساتھ ہی ضلع لیول تک کے کارکنوں کو بھی بلایا گیا ہے. ان سے تنظیم کی مضبوطی،ممبرشپ اور آنے والے لوک سبھا الیکشن اور اسمبلی الیکشن میں پارٹی کی جیت بات کا یقین ہو، اس پر ان کا خیال لیا جائے گا.انہوں نے بتایا کہ اگلے سال دس مئی کو کانفرنس ختم ہونے کے بعد تمام لوک سبھا ایریا میں جلسہ عام کا انعقاد کیا جائےگا۔ ان جلسوں میں پارٹی سربراہ شیبو سورین خود موجود رہیں گے.


مشن 2019 کیلئے تیاری شروع کر دیں: آر پی این سنگھ کانگریس انچارج نے ریاستی عہدیداروں سے تنظیمی سرگرمیوں کی جانکاری لی

23 Jul 2017

جدید بھارت نیو زسروسرانچی، 22 جولائی: پردیش کانگریس کمیٹی کے انچارج آر پی این سنگھ، و انچارج امنگ سنگھار اور معین  الحق نے آج پردیش کانگریس ہیڈکوارٹر کانگریس بھون رانچی میں کانگریس کے لیڈر اور کارکنوں سے ملاقات کی. اس دوران پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر سکھدیو بھگت اور پارٹی لیجس لیچر  لیڈر عالمگیر عالم ،سینئر لیڈر فرقان انصاری موجود تھے۔ پردیش کانگریس کمیٹی کے جنرل سکریٹری لال کشور ناتھ شاہدیو نے بتایا کہ  گیارہ بجے سے دو بجے تک انچارج کانگریس سابق ممبر پارلیمنٹ، سابق ممبر اسمبلی، سینئرکانگریس لیڈر اور مختلف اضلاع سے آئے کارکنان سے ملاقات کر تنظیمی سرگرمیوں کی جانکاری لی اور تنظیم کی مضبوطی کے لئے ضروری ہدایت دی۔ لال کشور ناتھ شاہدیو نے بتایا کہ سہ پہر تین بجے سے یوتھ کانگریس،  این ایس یو آئی، خواتین کانگریس، سیوا دل، اقلیتی سیل سمیت دیگر محکموں کے عہدیداروں کے ساتھ ملاقات کر ضروری ہدایت دی۔ اس موقع پر انچارج آر پی این سنگھ نے مورچہ اور تنظیم کے عہدیداروں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آپ سب پردیش کانگریس کے پروگراموں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں. مسٹرسنگھ نے کہا کہ موجودہ ریاستی حکومت کے عوام مخالف پالیسیوں کی وجہ سے عوام میں کافی رنج وغصہ ہے. آنے والا وقت مشکلات سے بھرا ہوا ہے، ہمیں مشن 2019 پر کام کرتے ہوئے لوگوں کا اعتماد حاصل کرناہے. جدوجہد کے راستے  سےہی ہم تنظیم کو مضبوط کر سکتے ہیں اور آگے بڑھ سکتے ہیں. پردیش کانگریس کمیٹی کے جنرل سکریٹری آلوک کمار دوبے، راجیش ٹھاکر، سوریہ کانت شکلا،  لال کشور ناتھ شاہدیو،  جیوتی سنگھ متھارو، روندر سنگھ، سلطان احمد، سنیل سنگھ وغیرہ پروگرام کے دوران موجود رہے۔


جھارکھنڈ سائبر مجرموںکی زد میں،ٹھگی سے پریشان ہیں لوگ گینگ بنا کر مجرمانہ واردات انجام دے رہےہیں

23 Jul 2017

جدید بھارت نیوز سروسرانچی،22؍جولائی:ڈیجیٹل انقلاب نے جہاں انسانی زندگی کو تیز رفتار فراہم کی ہے، وہیں اس نے کرائم کے دنیا کو نیا ہتھیار پکڑا دیا  ہے۔ نوجوان طاقت اس کے غلط استعمال کی طرف تیزی سے بڑھ رہا ہے۔ملک میں ہر سال ہزاروں لوگ سائبر ٹھگی کا شکار ہوتے ہیں. کسی کے اے ٹی ایم کارڈ کی کلوننگ کر پیسے نکال لئے جاتے ہیں تو کسی اکاؤنٹس سے آن لائن پیسے نکال لئےجاتے ہیں. لیکن یہ جان کر حیرانی ہوگی کہ گزشتہ چند سالوں میں سائبر کرائم کے مقدمات میں کافی کا اضافہ ہوا ہے۔ جھارکھنڈ ،بہار کی طرح ہی کچھ ریاستیں ہیں، جہاں کچھ گاؤں قصبے تو قریب مکمل طور پر سائبر کرائم میں ملوث ہیں۔ ایسے ہی جھارکھنڈ کے گریڈیہ، دیوگھر اور جامتاڑا کے نام سامنے آئے ہیں۔ جو 'سائبر کرائم کے مرکز ' بن گئے ہیں. گریڈیہہ جس میں گاؤں تو ایسا ہیں جہاں 1000 گھر ہیں جبکہ وہاں 900 لوگ سائبر جرائم میں ملوث ہیں. گجرات پولیس کے حالیہ سرچ آپریشن میں یہ سنسنی خیز انکشاف ہوا ہے۔مجرم آن لائن فراڈ کر رکے بھولے ۔بھالے عوام کو ٹھگی کا شکار بنا رہے ہیں۔آئے دن ایسے واقعات سننے کو ملتے ہیں کہ کسی کے بینک اکاؤنٹ سے روپے نکال لیا گیا تو ، کسی کے اے ٹی ایم سے۔ گذشتہ دنوں ہی کرناٹک سے آئی پولیس نے رانچی پولیس کی مدد سے جوائنٹ آپریشن چلا کر جامتاڑا 21 سائبر مجرموں کو گرفتار کیا ہے۔ یہ مجرم لوگوں کو نوکری دلانے، لیپ ٹاپ دینے، اپنے آپ کو بینک ملازمین بتا کر اے ٹی ایم کا خفیہ پین نمبر معلوم کر سائبر کرائم کرتے تھے۔ ان لوگوں کا ملک بھر میں نیٹ ورک بنا ہوا ہے. یہ مجرم پیدائش اور موت سرٹیفکیٹ بنا کر بھی لوگوں سے پیسے ٹھگ چکے ہیں. ان لوگوں نے اب تک سو سے زائد لوگوں سے پیسے ٹھگی کرنے کی بات قبول ہے۔حالانکہ رانچی پولیس کا کہنا ہے کہ ہماری ٹیم سائبر کرائم کو روکنے کیلئے مؤثر قدم اٹھا رہی ہے ، لیکن ان سب کے باوجود لوگ سائبر مجرموں کو زد میں آ رہے ہیں۔  سائبر کرائم کیا ہے:سائبر جرائم میں اے ٹی ایم فراڈ، آن لائن فراڈ، لاٹری فراڈ، کمپیوٹر یا الیکٹرانک مشین سے ہیرا پھیری کر اطلاعات لینا یا کسی کی خفیہ یا ذاتی اطلاعات کو آن لائن لیک کرنا وغیرہ آتے ہیں. ایسے میں لوگوں کو سائبر جرائم کا شکار ہونے سے خود کو محفوظ ایک بڑا چیلنج بن گیا ہے.ایسے کرتے ہیں کارڈکلوننگ:۔سائبر سیکورٹی ایکسپرٹ کے مطابق سائبر ٹھگ اے ٹی ایم مشین میں ڈیٹا  اسکیننگ مشین لگا دیتے ہیں. جیسے ہی لوگ اے ٹی ایم مشین میں اپنا ڈیبٹ کارڈ ڈالتے ہیں، کارڈ نمبر اور دیگر اطلاعات اسکیننگ مشین میں آ جاتی ہے. وہیں ٹھگ اے ٹی ایم میں لگی بٹن کو فوکس کرتے ہوئے ایک کیمرے لگا دیتے ہیں. جب لوگ ڈیبٹ کارڈ پن نمبر ڈالتے ہیں تو کیمرے میں نمبر قید ہو جاتا ہے. بعد میں ٹھگ پلاسٹک کارڈ خرید کر ڈیٹا کو اس کارڈ میں ڈال کر دوسرا ڈیبٹ کارڈ بنا لیتے ہیں اور اکاؤنٹ سے پیسے نکال لیتے ہیں. جس اے ٹی ایم پر گارڈ نہیں ہوتے ہیں. وہاں ٹھگ آسانی سے مشین لگا دیتے ہیں. کئی بار سائبر ٹھگ تعینات گارڈ سے خود کو مینٹیننس کمپنی بتا کر مشین لگا دیتے ہیں. لیکن ان چیزوں کی جانکاری کے ساتھ صرف اس معاملے میں آپ کچھ احتیاطی تدابیر اپنائیں تو اے ٹی ایم میں ٹھگی کا شکار ہونے سے بچ سکتے ہیں۔احتیاط برتیں:۔اے ٹی ایم مشین میں پن نمبر ڈالتے وقت دوسرا ہاتھ اوپر سے لگا لیں۔جس اے ٹی ایم مشین پر سیکورٹی گارڈ نہ ہو ان سے پیسے نکالنے سے بچیں۔آن لائن شاپنگ کرتے وقت اے ٹی ایم کی ڈٹیل محفوظ نہ کریں۔اپنے اکاؤنٹ سے پیسے نکالنے کی حد کم رکھیں۔ایس ایم ایس الرٹ ضرور لگا کر رکھیں۔سوشل ویب سائٹ پر کسی سے ڈیبٹ کارڈ کی ڈیٹیلس اشتراک نہ کریں۔فون پر کسی اپنا اے ٹی ایم کا پین نمبر نہ دیں۔


حکومت کی بے پناہ کوشش سے ترقی میں رفتار آئی وزیر اعلیٰ کی محنت سے ترقی کی شرح میں جھارکھنڈ دوسرے نمبر پر:گلوا

18 Jul 2017

جدید بھارت نیو زسروسرانچی، 14 جولائی:بھاجپا  کےریاستی صدر  و ممبر پارلیمنٹ لکشمن گلوا نے کہا ہے کہ رگھوور داس کی قیادت میں صرف وعدے ہی نہیں کئے بلکہ اسے تیزی سے زمین پر اتارنے کا بھی کوشش کی ہے اور اسی کا نتیجہ ہے کہ ریاست نے ترقی کی شرح میں پورے ملک میں دوسرا مقام حاصل کیا.انہوں نے کہا کہ رگھوور حکومت ایک فیصلہ کن حکومت ہے ۔ جس نے عوامی مفادات والے فیصلوں کو شدت سے نافذ کرانے کا ایمانداری کے ساتھ کوشش کی ہے. آج اسی کا نتیجہ ہے کہ اس مالی سال میں اعلان 142 منصوبوں میں سے اب تک 114 مکمل کر لئے گئے ہیں۔ یہ ایک قابل ستائش کامیابی ہے. انہوں نے وزیر اعلیٰ کو ہمت اور جوش و خروش کے ساتھ گاؤں، غریب، کسان، استحصال، محروم کے لئے کام کرتے رہنےکی دعائیں دیں۔ ریاستی نائب صدر سمیر اوراؤں نے کہا کہ رگھوور حکومت خواتین بجٹ، ایس ٹی۔ ایس سی بجٹ الگ سے پیش کرنے کا فیصلہ لیکر کر استحصال، محروم سماج کی منصوبوں کو تیزی سے مکمل کرنے کا عزم کا اظہار کیا ہے اور اسی کا نتیجہ ہے کہ آج مالی سال مکمل  ہوتے۔ ہوتے 90-95 فیصد تک کی رقم خرچ ہو رہی ہے. یقینی طور پر ان کوششوں کا ہی نتیجہ ہے کہ جھارکھنڈ کی ترقی کی شرح میں اضافہ ہوا ہے اور ریاست دوسرے مقام پر پہنچ گیا ہے.ریاستی نائب صدر پروفیسر آدتیہ ساہو نے کہا کہ ریاستی حکومت نے  ہمہ جہت ترقی کا جو روڈ میپ تیار کیا ہے، تیزی سے قابل اطلاق ہو رہا ہے. وزیرعلیٰ دہائیوں سے زیر التوا کئی ضروری منصوبوں کو جلد مکمل کرنے کی کوشش کی ہے جس سے ترقی کی رفتار تیز ہوئی ہے.ریاستی نائب صدر پردیپ ورما نے کہا کہ وزیر اعلی رگھوور داس نے حکومت کی باگ ڈور سنبھالتے ہی اپنی پوری طاقت کو ریاست کے عوام کی خدمت میں لگا دیا ہے. وہ مسلسل انتھک محنت کرتے ہیں اور اسی کا نتیجہ ہے کہ آج ریاست کے تمام علاقوں میں ریکارڈ کامیابیاں حاصل ہو رہی ہے. از آف ڈوانگ بزنس میں اہم کامیابی حاصل کر ریاست نے لیبر اصلاحات میں تاریخی کامیابی حاصل کی. جنرل سکریٹری دیپک پرکاش نے کہا کہ وزیر اعلی نے بجٹ نظام، ٹیکس نظام سمیت منصوبوں کی تعمیر اور اس کے نفاذ کے عمل میں بنیادی اصلاح جاری کئے ہیں جس کا نتیجہ ہے کہ آج ترقی کی شرح میں جھارکھنڈ نے کئی ترقی یافتہ ریاستوں کو بھی پیچھے چھوڑ دیا ہے۔وزیر اعلی رگھوور داس کو ریاست کی ترقی کی شرح کی رفتار کو تیز کرنے کے لئے مبارکباد دینے والوں میں پارٹی کے ریاستی نائب صدر و سماجی بہبود بورڈ کے چیئرمین اوشا پانڈے، سکریٹری منیشور ساہو، سبودھ کمار سنگھ گڈو، ترجمان دین دیال برنوال، پرتل شاہدیو، پروین پربھاکر، میڈیا انچارج شوپوجن پاٹھک، معاون میڈیا انچارج سنجے جیسوال، مورچہ صدر سونا خان، آرتی سنگھ، امت کمار، جيوتریشور سنگھ، رام کمار پاہن، نیرج پاسوان، امرديپ یادو سمیت دیگر شامل ہیں.


ریاستی خواتین کمیشن کی ٹیم شائستہ کی سسرال پہنچی شائستہ کی خود کشی مشکوک، جانچ کرائی جائےگی:کلیانی شرن کا اعلان

18 Jul 2017

جدید بھارت نیو زسروسرانچی،14؍جولائی:ریاستی خواتین کمیشن کی چیئرپرسن کلیانی شرن اور رکن  رکمنی نے جمعہ کو شائستہ خود کشی کیس میں  گھر کا معائنہ کیا.متوفی شائستہ کے سسرال والوں سے بات کی۔خواتین کمیشن کی ٹیم مہلوکہ کے ڈورنڈا تھانہ علاقہ کے رحمت کالونی واقع گھر پہنچی. اس کے کمرے اور خاندان کے دوسرے ارکان کے کمروں کا معائنہ کیا. چیئرپرسن کلیانی شرن کی مانے تو معاملہ مشکوک ہے. شادی کے دو سال بعد بھی شائستہ کاشوہر کے پاس نہیں جانا سوالوں کے گھیرے میں ہے. وہیں خاندان کے دوسرے رکن جہاں نیچے کے کمرے میں رہتے ہیں، وہیں شوہر کے بغیر رہنے والی شائستہ کا  بیڈ روم اوپر کے تلے میں دیور کے بیڈ روم کے پاس میں ہونا بھی کئی سوال کھڑا کرتا ہے. اگرچہ ٹیم کے ارکان نے کہا کہ پورا معاملہ پوسٹ مارٹم رپورٹ کے بعد ہی واضح ہو پائے گا۔ٹیم نے کہا ہے کہ پوسٹ مارٹم رپورٹ آنے کے بعد سارے نکات پر جانچ کی جائےگی۔ غور طلب ہے کہ بدھ کی رات شائستہ کی لاش اس کے  بیڈ روم میں پھانسی سےلٹکتی ملی تھی. وہیں اطلاع کے بعد آئے شائستہ کے والد کی موت بھی لاش دیکھنے کے بعد ہارٹ اٹیک سے ہو گئی۔بیٹی کی موت کی خبر سن کر جمعرات کو مونگیر سے رانچی پہنچے شائستہ کے والد حشمت علی نے جیسے ہی بیٹی کی لاش دیکھی، ان کی بھی ہارٹ اٹیک سے موت ہو گئی۔2015 میں ہوئی تھی شادیمونگیر کی شائستہ کی شادی دسمبر 2015 میں ڈورنڈا کے آفتاب احمد سے ہوئی تھی. آفتاب دبئی میں مارکیٹنگ کاکام کرتا ہے. شائستہ رانچی میں دیور، ساس اور سسر کے ساتھ رہتی تھی. بتایا گیا ہے کہ بدھ کی شام میں ساس اور دیور درزی کے یہاں کپڑے سلنے کے لیے دینے گئے تھے، اسی وقت شائستہ نے پہلے سسر کو دودھ دیا. پھر اس کے موبائل پر کسی کا فون آیا اور وہ بات کرتے ہوئے فرسٹ فلور واقع اپنے بیڈ روم میں گئی. پھر واپس نہیں آئی. گھر کے لوگ لوٹے تو انہوں نے اس کے کمرے میں پھانسی سے لٹکتے دیکھا۔ 15 لاکھ روپے کیلئے قتل کا الزاماطلاع پر پہنچی پولیس نے رات میں ہی شائستہ کے میکے کو اس کی اطلاع دی. والد حشمت علی اپنے بیٹے اور داماد کے ساتھ جمعرات کی شام چار بجے رانچی پہنچے. ڈونرڈا تھانہ میں داماد آفتاب، سسر احمد حسین، ساس شاہینہ اور دیور  کے خلاف جہیز کیلئےبیٹی کا قتل کا کیس درج کرایا. الزام لگایا کہ شادی کے فوراً بعد سے بیٹی کو جہیز کے لئے تشدد کا نشانہ بنایا جا رہا تھا. شائستہ کے والد نے کہا کہ حال ہی میں بیٹی نے فون کیا تھا کہ سسرال والے 32 لاکھ روپے میں رانچی میں فلیٹ خریدنا چاہتے ہیں. اس کے لئے 15 لاکھ روپے کا مطالبہ کیا ہے. والد نے الزام لگایا کہ اسی 15 لاکھ روپے کے لئے ان کی بیٹی کا سسرال والوں نے قتل کیا ہے۔سسرال والوں سے ہوئی بک جھکڈورنڈا تھانہ میں کیس درج کرنے کے بعد والد حشمت علی بیٹی کی سسرال گئے جہاں سسرال والوں سے ان کا تنازعہ ہوا. پھر جیسے ہی بیٹی کی لاش دیکھا، انہیں ہارٹ اٹیک آ گیا. فوراًبیٹا، داماد انہیں لے کر راج ہاسپٹل گئے جہاں ڈاکٹروں نے انہیں مردہ قرار دے دیا۔


ہائی ٹیک ہوا ریمس ،جدید آلات سے لیس کئی سینٹروں کا افتتاح ریمس کئی معاملات میں نجی ہسپتالوں سے آگے:وزیر صحت

18 Jul 2017

جدید بھارت نیو زسروسرانچی،14؍جولائی:جھارکھنڈ کی لائف لائن کہا جانے والاریمس ہسپتال اب ہر معاملے میں ہائی ٹیک ہو گیا ہے. سیمپل جانچ سے لے کر آپریشن تھیٹر تک کو جرمن ٹیکنالوجی سے تیار کیا گیا ہے جس کا افتتاح جمعہ کو وزیر صحت نے کیا۔جھارکھنڈ کا سب سے بڑا سرکاری اسپتال ریمس کئی معاملات میں نجی ہسپتالوں سے آگے نکل چکا ہے. وزیر صحت رام چندر چدرونشی نے جمعہ کو ریمس کے کئی جدید سینٹروں کا افتتاح کیا. جس میں ریمس سیمپل کلیکشن سینٹر، نيوروسرجری کے دو ماڈولر اوٹی، ای این ٹی کے دوماڈولر اوٹی، ہیمو فیلیا ڈے کیئر سینٹر، مریضوں کے لواحقین کے لئے شیلٹر اور او پی ڈی کے لئے پیسج کا افتتاح کیا گیا۔ ریمس ہسپتال کی جدید کاری سے وزیر صحت رام چندر چدرونشی پر جوش نظر آ رہے ہیں. انہوں نے کہا کہ اس سے لوگوں کو سہولت ملے گی اور ان کے وقت کی بچت ہو گی. وہیں محکمہ کے پرنسپل سکریٹری سدھیر ترپاٹھی جدید آلات کے انتظامات کو لے کر بھی چوکنا نظر آئے.انہوں نے کہا کہ اس کا  مینٹننس ریمس کیلئے ایک چیلنج ہو گا۔مریضوں کو ریمس میں اب سیمپل جانچ کرنے کے لئے لوگوں کو لمبی قطار نہیں لگانی ہوگی نہ ہی مختلف تحقیقات کے لئے پریشان ہو نا پڑیگا۔ اے سی ہال میں ساری سروس ملنے سے مریض کافی خوش ہیں. مریضوں کے مطابق ریمس میں بدبو کی جگہ خوشبودار ماحول تو مل ہی رہی ہے، ساتھ ہی نجی پیتھالوجی کی طرح سہولیات بھی مل رہی  ہے، جس سے ان کا اعتماد  ریمس کے تئیںاور بھی مضبوط ہوا ہے.


مین روڈ میں جھڑپ کے بعد کشیدگی

11 Apr 2017

رانچی: مین روڈ پر واقع  اقرا مسجد کے پاس بجرنگ دل کے ایک جلوس میں شامل نوجوانوں کے ذریعہ اشتعال انگیز نعرہ لگا ئے جانےکے درمیان جھڑپ کی اطلاع ہے.  دو پہر تقر یبا ً ڈیڑھ بجے ہو ئی اس جھڑپ کے بعد مین روڈ میں بھاری پولس فورس کی تعیناتی کر دی گئی ہے. جھڑپ کی اطلاع کے بعد مین روڈ کی دکانیں بند ہو گئی ہیں. ڈیلی مارکیٹ اور روسپا ٹاور بھی بند ہو گیا ہے. پپولس فورس کے ذریعہ بھیڑ ہٹانے کی کو شش دوران لا ٹھی چا رج کئے جانے اور آنسو گیس کے گو لے دا غے جانے کی بھی خبر ہے۔ ڈی آئی جی پو لس نے بھیڑ سے بات کی اور امن برقرار رکھنے کی اپیل کی. مین روڈ کے اقرامسجد علاقے میں کشیدگی قا ئم ہے۔

. وہیں كڈرو علاقے میں بھی پولس کے استعمال کی خبر ہے. شہر کے بہت سے دوسرے علاقوں سے بھی دکانیں بند ہونے کی اطلاع ہے.ڈورنڈہ علا قے میں دوکانیں بند ہو گئی ہیں۔ وہیں یہ خبر بھی ملی ہے کہ سجاتا چوک سے مین روڈ کی جانب جانے والی سڑک کوآمد ورفت کے لئے کھول دیا گیا ہے، کچھ دیر پہلے انتظامیہ نے احتیاط برتتے ہوئے اس راستے کو بند کر دیا تھا. انتظامیہ مکمل طور پر الرٹ ہے. رانچی کے كیپٹول ہل ہوٹل کے قریب گاڑیوں میں توڑ پھوڑ کی گئی ہے. حالات کشیدہ، لیکن کنٹرول میں ہے. انتظامیہ نے افواہوں پر توجہ نہ دینے کی اپیل کی ہے. اگرچہ کشیدگی کی خبر پورے شہر میں پھیل چکی ہے، لیکن کہیں سے بھی کسی ناخوشگوار واقعہ کی خبر نہیں ہے. کلب روڈ کا علاقہ مکمل طور پرسکون ہے. کئی اسکولوں نے والدین کو میسج کر اپنے بچوں کو اسکول لے جانے کی اطلاع دی ہے.