جديد بهارت

Jadeed Bharat

No. 1 Urdu Daily Newspaper of Jharkhand

E Paper


دنیا


بھنگ کے نشے سے ہلاکت کا خطرہ تین گنا زیادہ

Wed, 16 Aug 2017

بھنگ کے نشے سے ہلاکت کا خطرہ تین گنا زیادہ

سائنس دانوں نے بھنگ کے انسانی صحت پر اثرات پر تحقیق کے سلسلے میں لگ بھگ 1200 افراد کا مطالعه کیا جن کا تعلق امریکہ اور کئی دوسرے ملکوں سے تھا۔


یمن: ہیضے کی وبا 2000 زندگیاں نگل چکی ہے

Tue, 15 Aug 2017

یمن: ہیضے کی وبا 2000 زندگیاں نگل چکی ہے

صحت کے عالمی ادارے کا کہنا ہے کہ یمن میں  چار ماہ قبل شروع ہونےو الی ہیضے کی وباسے اب تک پانچ لاکھ افراد متاثر ہو چکے ہیں جبکہ  1975 افراد اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹے ہیں ادارے کا کہنا ہے کہ یمن میں  ہر روز  پانی کے باعث پیدا ہونے والی بیماریوں کے پانچ ہزار کیسز دیکھنے میں آ رہے ہیں ۔ جو اسہال اور پانی کی کمی کا باعث بن رہے ہیں ۔   دو سال سے جاری جنگ زدہ  ملک میں صحت کا نظام تباہ ہو کر رہ گیا ۔ ’’ ہیضے کی یہ وبا  کچھ علاقوں میں نسبتا کم ہو گئی ہے لیکن وہ علاقے جہاں ابھی اس وبا ء کا آغاز ہو اہے وہاں یہ تیزی سے پھیل رہی ہے  اور لوگوں کی بڑی تعداد  ا س سے متاثر ہو رہی ہے ۔‘‘ جو کہ اعداد و شمار کے مطابق 503484 ہو چکی ہے۔ انسانی فضلے سے آلودہ پانی پینے یا خواراک کھانے سے پھلینے والی اس بیماری کا اگر بر وقت علاج نہ کروایا جائے تو یہ چند گھنٹوں میں جان لے سکتی ہے۔  ترقی یافتہ ممالک میں سینی ٹیشن سسٹم کو بہتر بنا کر اس بیماری سے چھٹکارا حاصل کیا جا چکاہے۔ سعودیہ کی  سربراہی میں اتحادی فوج اور ایران کے حمایت یافتہ حوثی باغیوں کے درمیان جاری خانہ جنگی سے  یمن کی معیشت تباہ ہو گئی ہے ، جس نے ہیضے اور قحط جیسی آفات سے نمٹنا نا ممکن بنا دیا ہے۔  ڈبلیو ایچ او  کا کہنا ہے کہ لاکھوں یمنی شہریوں کو صاف پانی کی ترسیل اور کئی علاقوں میں  فضلے کی صفائی  رکی ہوئی ہے۔  جبکہ اہم ادوایات بھی میسر نہیں ۔ اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ ڈبلیو ایچ او  اوراس کے پارٹنرز ہیضے کے علاج کے لئے کلینک کھولنے ، علاج گاہوں کی بحالی اور میڈیکل  ترسیلات   فراہم کرنے کے لئے دن رات کام کر رہا ہے۔ علاج گاہ تک پہنچنے والے ننانوے فیصد افراد کے بچنے کی امید ہوتی ہے لیکن بچے اور بوڑھوں کو زیادہ خطرہ لاحق ہیں ڈبلیو ایچ او کی ترجمان کا کہنا ہے کہ  یہ کوششیں موثر ثابت ہو رہی ہیں ۔ گزشتہ چار ہفتوں کے دوران ، ہیضے سے شدید متاثر ہونے والے علاقوں میں  متاثرین کی تعداد میں کمی واقع ہوئی ہے۔


گورکھ پور میں بچوں کی ہلاکتوں پر ریاستی حکومت سے جواب طلبی

Mon, 14 Aug 2017

گورکھ پور میں بچوں کی ہلاکتوں پر ریاستی حکومت سے جواب طلبی

سہیل انجم  قومی انسانی حقوق کمشن نے گورکھ پور کے سرکاری بی آر ڈی میڈیکل کالج اسپتال میں چند روز کے اندر 60 سے زائد بچوں کی اموات پر ریاستی حکومت کو نوٹس جاری کیا اور کہا کہ ایسا لگتا ہے کہ اس معاملے میں صحت انتظامیہ نے انتہائی سنگ دلی کا مظاہرہ کیا ہے۔ کمشن نے ریاست کے چیف سیکرٹری سے چار ہفتے کے اندر رپورٹ طلب کی اور متاثرہ خاندانوں کی راحت کاری اور قصورواروں کے خلاف کارروائی کی تفصیلات مانگیں۔ 7 اگست کے بعد سے اب تک وہاں 63 سے زیادہ بچوں کی ا موات چکی ہے۔ رپورٹوں کے مطابق اموات کی وجہ آکسیجن کی فراہمی میں رکاوٹ ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ آکسیجن فراہم کرنے والی کمپنی نے 65 لاکھ روپے کے بقایا کی ادائیگی کے لیے متعدد بار درخواست کی تھی۔ عدم ادائیگی کی وجہ سے اس نے آکسیجن کی فراہمی بند کر دی تھی۔ بی جے پی صدر أمت شاہ نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ بھارت جیسے بڑے ملک میں ماضی میں بھی ایسے واقعات پیش آئے ہیں۔ انہوں نے ریاستی وزیر اعلیٰ کا استعفیٰ طلب کرنے پر کانگریس کی مذمت کی۔ ایک ایسے وقت میں جب کہ پوری ریاست میں بچو ں کی اموات پر سوگ کا ماحول ہے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے انتظامیہ کو ہدایت دی ہے کہ وہ بڑے پیمانے پر دھوم دھام کے ساتھ پیر کے روز کرشن کا یوم پیدائش یعنی کرشن جنم اشٹمی کی تقریبات کا انعقاد کرے۔ ریاستی حکومت نے بی آر ڈی میڈیکل کالج کے پرنسپل کو معطل کرنے کے بعد انسے فلائیٹس مرض اور بچوں کے وارڈ کے سربراہ اور اسسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹر کفیل احمد کو ان کے عہدے سے ہٹا دیا۔ جب کہ گورکھ پور اور مضافات میں انہیں ایک ہیرو کی حیثیت سے دیکھا جا تا ہے۔ رپورٹوں کے مطابق انہوں نے10 اگست کی رات میں وہاں تعینات نیم مسلح دستے ایس ایس بی سے اس کی گاڑی مانگی اور متعدد جوانوں کو لے کر مختلف مقامات سے اپنی جیب سے آکسیجن کے سیلنڈر اکٹھے کیے اور کئی بچوں کی جان بچائی۔ بہت سے والدین اور ایس ایس بی کے عہدے داروں نے ان کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ وہ متاثرین کے ہیرو ہیں۔ دہلی میں آل انڈیا انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز یعنی ایمس کے ڈاکٹروں نے کفیل احمد کو ہٹائے جانے کی مذمت کی اور کہا کہ انہیں قرباني کا بکرا بنایا گیا ہے۔ ڈاکٹرو ں کی تنظیم کے صدر ڈاکٹر ہرجیت سنگھ بھٹی نے کہاکہ ڈاکٹرو ں کو مورد إلزام ٹہرا کر سیاست دان اپنی نااہلی چھپا رہے ہیں۔ ادھر ریاستی وزیر اعلیٰ نے اعلان کیا ہے کہ جو بھی بچوں کی اموات کے ذمے دار ہوں گے ان کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔


کینسر کی پاکستانی مریضہ کو بھارتی ویزہ جاری کرنے کا اعلان

Mon, 14 Aug 2017

کینسر کی پاکستانی مریضہ کو بھارتی ویزہ جاری کرنے کا اعلان

فائزہ تنویر منہ کے سرطان میں مبتلا ہیں اور رواں سال جولائی میں بھارت نے انھیں علاج کے لیے ویزہ دینے سے انکار کر دیا تھا۔


پنجاب کے تعلیمی اداروں میں مشروبات پر پابندی

Sun, 13 Aug 2017

پنجاب کے تعلیمی اداروں میں مشروبات پر پابندی

ڈی جی پنجاب فوڈ اتھارٹی نے وائس آف امریکہ سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ پابندی سائنٹیفک پینل کی سفارشات کی روشنی میں لگائی گئی ہے۔


یورپ میں انڈوں کا سکینڈل

Fri, 11 Aug 2017

یورپ میں انڈوں کا سکینڈل

یورپ کے مختلف حصوں میں متاثرہ انڈوں کی موجودگی کے انكشاف کاسلسلہ جاری ہے اور تازہ ترین خبر یہ ہے کہ رومانیہ میں بھی انڈوں کی زردی میں فپرونائل اثرات پائے گئے ہیں۔


ڈاکٹر روتھ فاؤ کے جانے سے جذام کے مریض بے سہارا

Fri, 11 Aug 2017

ڈاکٹر روتھ فاؤ کے جانے سے جذام کے مریض بے سہارا

جب کسی انسان کی ہڈیوں سے گوشت علیحدہ ہوکر جھڑنے لگے، ہاتھ ، پیروں کی انگلیاں ’گھل گھل‘ کر ختم ہونے لگیں، جسم سے پیپ اورخون روکنے کے لئے پٹیاں لپیٹی جانے لگیں تو سمجھئے کوڑھ کا مرض ہوگیا ہے۔


سیب کھائیں، بیماریوں سے بچیں

Wed, 09 Aug 2017

سیب کھائیں، بیماریوں سے بچیں

سیب ایک ہی وقت، تحلیل ہونے والے اور حل نہ ہونے والے فائبر حاصل کرنے کا بہترین ذریعہ ہے۔ تحلیل ہونے والے فائبر خون میں کولیسٹرول کی مقدار کو روکنے میں مددگار ثابت ہوتے ہیں، جو دل کی بیماریوں کی روک تھام کا سبب بنتا ہے۔


"خدا کے واسطے لڑائی ختم کرو اور ہمارا علاج کرو"

Wed, 09 Aug 2017

"خدا کے واسطے لڑائی ختم کرو اور ہمارا علاج کرو"

پاکستان کے صوبہ پنجاب میں ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے نمائندوں نے صوبہ بھر کے اسپتالوں میں احتجاجاً کام بند رکھا ہے۔ جس کے باعث مریضوں کو علاج معالجے کے لیے دشواری کا سامنا ہے۔ اوکاڑہ کی پچپن سالہ سکینہ بی بی نے وائس آف امریکہ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اللہ جانے یہ کیسے ڈاکٹر ہیں جن کے سامنے مریض تڑپ رہے ہیں اور یہ علاج نہیں کر رہے۔ سکینہ بی بی اپنے پندرہ سالہ بیٹے کو علاج کے لیے گزشتہ ہفتے اوکاڑہ سے سروسز اسپتال لاہور لائی تھی لیکن ڈاکٹروں کی ہڑتال کے باعث اس کے بیٹے کو علاج کی سہولتیں نہ ملنے پر ہاتھ اٹھا کر کہہ رہی ہے کہ اس کے بیٹے کا علاج کرو وہ جگر کے عارضے میں مبتلا ہے۔ پنجاب کے بیشتر شہروں میں ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے نمائندے گزشتہ آٹھ روز سے ہڑتال پر ہیں۔ جس کا زیادہ اثر لاہور کے تمام سرکاری اسپتالوں پر ہے، جبکہ ملتان گوجرانوالہ، گجرات، فیصل آباد اور رحیم یار خان کے اسپتالوں میں بھی ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال سے مریض اور ان کے اہل خانہ مشکلات سے دوچار ہیں، مختلف شہروں اور دیہی علاقوں سے آنے والوں کو بھی پریشانی کا سامنا ہے۔ اسپتالوں میں ہڑتالی ینگ ڈاکٹرز ان ڈور اور آؤٹ ڈور ڈیوٹی انجام نہیں دے رہے جس کےباعث مریض دھکے کھانے پر مجبور ہیں۔ ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال کے باعث صوبہ بھر کے سرکاری اسپتالوں میں متعدد آپریشنز ملتوی کردیئے گئے ہیں۔ ڈاکٹروں کی نمائندہ تنظیم ینگ ڈاکٹر ایسوسی ایشن پنجاب کے صدر ڈاکٹر معروف وینس نے وائس آف امریکہ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے اپنے لیے نہیں بلکہ مریضوں کے حقوق کی خاطر ہڑتال کی ہے۔ ڈاکٹر معروف وینس کہتے ہیں پنجاب بھر کے سرکاری اسپتالوں میں مریضوں کے لیے بستر، ادویات اور جدید مشینری کی کمی کا سامنا ہے۔ جبکہ ان کے مطالبات میں سیکرٹری صحت کا تبادلہ، نیشنل انڈیکشن پالیسی کا خاتمہ، رسک الاؤنس، ہیلتھ انشورنس اور دوران ملازمت بہتر حفاظتی انتظامات بھی شامل ہیں۔ ڈاکٹر معروف کہتے ہیں وہ گزشتہ ہفتے پرامن احتجاج کر رہے تھے لیکن پنجاب حکومت نے ان پر طاقت کا استعمال کر کے انہیں اشتعال دلایا ہے۔ ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے صدر کے مطابق جب تک ان کے مطالبات مان نہیں لیے جاتے اور ان کے برطرف ساتھی ڈاکٹروں کو واپس نہیں بلایا جاتا وہ احتجاج ختم نہیں کرینگے۔ پنجاب میں وزارت صحت اور خصوصی تعلیم کا قلمدان رکھنے والے وزیر خواجہ سلمان رفیق نے ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کی ہڑتال کو ناجائز قراد دیا ہے۔ وائس آف امریکہ سے بات کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ اصل مسئلہ پوسٹ گریجوئیٹ ریزیڈینس کا وقت پورا ہونے کا ہے جس کے تحت تمام ڈاکٹر دیہی مراکز صحت میں کام کرنے کے پابند ہیں۔ خواجہ سلمان رفیق نے بتایا کہ ینگ ڈاکٹرز سینٹرل انڈکشن پالیسی کے اس لیے خلاف ہیں کیونکہ حکومت نے محکمہ صحت پنجاب کو پنجاب انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ سے جوڑ دیا ہے جس کے تحت ایک خود کار رجسٹریشن نظام کے ذریعے انہیں کچھ عرصہ بنیادی مراکز صحت میں کام کرنا پڑتا ہے جبکہ اس پالیسی سے پہلے ڈاکٹرز ملی بھگت سے اپنی مرضی سے قریب کے سٹیشن ڈھونڈ لیتے تھے۔ جس سے چھوٹے علاقوں کے شہریوں کو علاج کی سہولتیں نہیں ملتی تھی۔ خواجہ سلمان رفیق نے وائس آف امریکہ کو بتایا کہ حکومت ڈاکٹروں کا بہتر سروس سٹرکچر کا مطالبہ سنہ دو ہزار تیرہ میں ہی مان چکی ہے جس کے تحت زیر تربیت ڈاکٹر کی تنخواہ پچیس ہزار سے بڑھا کر ستر ہزار جبکہ میڈیکل آفیسر کی ماہانہ تنخواہ نوے ہزار کر دی گئ ہے۔ خواجہ سلمان رفیق نے بتایا کہ محکمہ صحت نے اب تک اکہتر غیر حاضر ڈاکٹروں کو برطرف کردیا ہے جبکہ بیالیس نئے میڈیکل آفیسرز اور  ایک سو سولہ انٹرنی بھرتی کیے گئے ہیں۔ وزیر صحت پنجاب کے مطابق صوبہ بھر کے سرکاری اسپتالوں میں سینئر ڈاکٹرز سے کام چلایا جا رہا ہے جبکہ مزید ڈاکٹروں کی بھرتی کے لیے انٹرویو لیے جائیں گے۔ ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے نمائندے اس سے قبل بھی کئی مرتبہ ہڑتال پر جا چکے ہیں جن میں سے سنہ دو ہزار تیرہ اور سنہ دو ہزار چودہ کی ہڑتالیں قابل ذکر ہیں۔ دو ہزار تیرہ کی وائے ڈی اے کی ہڑتال ایک ماہ سے زائد عرصہ تک جاری رہی جس میں پنجاب حکومت نے فوج کے ڈاکٹروں کو عارضی طور پر لے کر کام چلایا تھا جسے بعد میں لاہور ہائیکورٹ کے حکم پر ختم کیا گیا تھا۔ سنہ دو ہزار چودہ کی ڈاکٹروں کی ہڑتال کئی دن جاری رہی جس میں بالا آخر حکومت کو گھٹنے ٹیکنے پڑے تھے اور ڈاکٹروں کے مطالبات ماننا پڑے تھے۔


نائجیریا: ملیریا کے خلاف صحت کے عالمی ادارے کی مہم

Sat, 05 Aug 2017

نائجیریا: ملیریا کے خلاف صحت کے عالمی ادارے کی مہم

عالمی ادارہ صحت کا اندازہ ہے کہ شمال مشرقی نائیجیریا کی 73 لاکھ کی آبادی میں  ہر ہفتے سات اموات سمیت آٹھ ہزار لوگ ملیریا میں مبتلا ہوتے ہیں ۔ اس علاقے میں تین سے پانچ مال کی عمر کے لگ بھگ گیارہ لاکھ بچے موجود ہیں


نئی صدی جنوبی ایشیا کے لیے موت کا پروانہ

Fri, 04 Aug 2017

نئی صدی جنوبی ایشیا کے لیے موت کا پروانہ

جن علاقوں سے انسان نے جنوبی ایشیا میں آبادیوں اور تہذیب و تمدن کی شروعات کیں، اب وہی علاقے انسان کے اپنے اعمال کی وجہ سے تباہی اور ہلاکت کی جانب بڑھ رہے ہیں۔


سمندروں میں آکسیجن کی کمی سے ’ڈیڈ زون ‘ پیدا ہو رہے ہیں

Thu, 03 Aug 2017

سمندروں میں آکسیجن کی کمی سے ’ڈیڈ زون ‘ پیدا ہو رہے ہیں

سمندروں اور ماحولیات سے متعلق ادارے نے بدھ کے روز ایک رپورٹ جاری کی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ گذشتہ عشروں کے دوران دنیا بھر کے سمندروں میں ’ ڈیڈ زون ‘کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے اور اس وقت ان کی تعداد 500 ہے۔


چینی کا زیادہ استعمال دماغی صحت کے لیے نقصان دہ

Sat, 29 Jul 2017

چینی کا زیادہ استعمال دماغی صحت کے لیے نقصان دہ

ماہرین کی ٹیم کو پتا چلا کہ مردوں میں میٹھے کھانوں اور مشروبات کے استعمال میں اضافے کے پانچ سال بعد ان میں ڈیپریشن اور خوف واضطراب کا مرض پیدا ہوا۔


برطانوی عدالت نے بیمار بچے کو مرنے کا اجازت دے دی

Fri, 28 Jul 2017

برطانوی عدالت نے بیمار بچے کو مرنے کا اجازت دے دی

برطانوی قانون کے تحت بچے کے اپنے والدین سے ہٹ کر بھی حقوق ہیں، جس کا مطلب یہ ہے کہ علاج سے متعلق فیصلے میں والدین کو مکمل اختیارات حاصل نہیں ہیں۔


زمین کے درجہ حرارت پر کنٹرول کے نئے منصوبے

Thu, 27 Jul 2017

زمین کے درجہ حرارت پر کنٹرول کے نئے منصوبے

سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ اگرچہ یہ پراجیکٹ بہت مہنگا ہے لیکن آب و ہوا کی تبدیلی سے متعلق پیرس معاہدے کے اہداف پورے کرنے کے لیے ایسے غیر روایتی طریقے اختیار کرنے کی ضرورت ہے جو تیزی سے کرہ ارض کا درجہ حرارت کم کر سکیں۔


گھارو ۔ جھمپیر ونڈ کوریڈور: اُمید کی ایک کرن؟

Sat, 22 Jul 2017

گھارو ۔ جھمپیر ونڈ کوریڈور: اُمید کی ایک کرن؟

پاکستان کے محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ سندھ کی 180 میل لمبی ساحلی پٹی میں ہوائی چکیوں سے 11,000 میگاواٹ بجلی پیدا کرنے کی گنجائش موجود ہے۔


چاند کے بیگ کو خریدار کی تلاش

Wed, 19 Jul 2017

چاند کے بیگ کو خریدار کی تلاش

نیویارک کا عالمی نیلام گھر چاند کی تسخیر کی 48 ویں سالگرہ کے موقع پر وہ چھوٹا سا سفید بیگ نیلام کر رہا ہے چو چاند پر پہلے انسان کے ساتھ جانے والا پہلا بیگ تھا۔ لیکن چاند سے نیلامی تک کا یہ سفر بہت دلچسپ اور بہت پر اسرار اور جرم و سزا سے بھرپور ہے۔


2016 میں سوا کروڑ بچے حفاظتی ٹیکوں سے محروم رہے: رپورٹ

Tue, 18 Jul 2017

2016 میں سوا کروڑ بچے حفاظتی ٹیکوں سے محروم رہے: رپورٹ

بچوں کے حفاظتی ٹیکوں کو موجودہ شرح سے دنیا بھر میں ہر سال 20 سے 30 لاکھ تک ایسے بچوں کی جان بچائی جا رہی ہے جو خناق، تشنج، کالی کھانسی اور خسرے سے ہلاک ہو جاتے تھے۔