جديد بهارت

Jadeed Bharat

No. 1 Urdu Daily Newspaper of Jharkhand

E Paper

ePaper

جنوبی ایشیا


مودی کا مل کر کام کرنے اور امن کے فروغ کا پیغام، عمران خان نے بھارتی ہم منصب کا بیان ٹوئیٹ کیا

Sat, 23 Mar 2019

مودی کا مل کر کام کرنے اور امن کے فروغ کا پیغام، عمران خان نے بھارتی ہم منصب کا بیان ٹوئیٹ کیا

ادھر پاکستانی وزیر اعظم عمران خان نے اپنے ہینڈل پر مودی کا پیغام ’ٹوئیٹ‘ کرتے ہوئے کہا ہے کہ وزیر اعظم مودی نے اپنے پیغام میں یوم پاکستان کے موقعے پر پاکستانی عوام کو مبارکباد پیش کی ہے اور نیک تمناؤں کا اظہار کیا ہے


بھارتی حکومت نے قوم پرست جموں کشمیر لبریشن فرنٹ پر پابندی لگا دی

Fri, 22 Mar 2019

بھارتی حکومت نے قوم پرست جموں کشمیر لبریشن فرنٹ پر پابندی لگا دی

بھارتی حکومت نے قوم پرست جموں و کشمیر لبریشن فرنٹ (جے کے ایل ایف) کو ’’غیر قانونی تنظیم‘‘ قرار دے کر اس پر پابندی عائد کر دی ہے۔


’پاکستان پر حملہ کرنا غلطی تھی’

Fri, 22 Mar 2019

’پاکستان پر حملہ کرنا غلطی تھی’

بھارتی کانگریس کے ایک اہم رہنما نے خبر رساں ایجنسی اے این آئی کو ایک طویل انٹرویو میں کہا ہے کہ اگر فضائیہ نے بالاکوٹ میں تین سو لوگوں کو ہلاک کیا ہے تو میرا سوال یہ ہے کہ کیا آپ مزید حقائق پیش کر سکتے ہیں اور اس دعوے کو ثابت کر سکتے ہیں۔


سرینگر: جھڑپیں، ایک کمسن شہری اور چھہ عسکریت پسند ہلاک

Fri, 22 Mar 2019

سرینگر: جھڑپیں، ایک کمسن شہری اور چھہ عسکریت پسند ہلاک

مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ سیکورٹی اہل کاروں اور عسکریت پسندوں کے درمیان رات بھر جھڑپیں ہوتی رہیں اور جمعے کو علی الصباح  سیکورٹی فورسز نے اس گھر کو بارودی مواد سے اڑا دیا جس میں عسسکریت پسند محصور تھے۔ بعد میں مکان کے ملبے سے دو مشتبہ عسکریت پسندوں اور ایک بارہ سالہ لڑکے کی نعش ملی۔


افغانستان میں دو امریکی فوجی اہلکار ہلاک

Fri, 22 Mar 2019

افغانستان میں دو امریکی فوجی اہلکار ہلاک

فوجی اہلکاروں کی ہلاکت کی تصدیق افغانستان کے لیے نیٹو کے 'ریزولوٹ سپورٹ مشن' نے ایک بیان میں کی ہے۔ اس مشن کی قیادت امریکہ کے پاس ہے۔


ادھم پور میں تین سیکورٹی اہل کار اپنے ہی ساتھی کی فائرنگ سے ہلاک

Thu, 21 Mar 2019

ادھم پور میں تین سیکورٹی اہل کار اپنے ہی ساتھی کی فائرنگ سے ہلاک

ماہرین کا کہنا ہے کہ ایسے واقعات کا پس منظر عموماً نفسیاتی دباؤ ہوتا ہے۔ جب کہ بھارتی عہدیداروں کا اصرار ہے اہل کاروں میں ذہنی تناؤ کو کمی لانے اور انہیں تفریحی مواقوں کی فراہمی کے لئے حالیہ برسوں میں کئی اقدامات کیے گئے ہیں۔


کابل میں نوروز کی تقریبات میں دھماکے، چھ ہلاک

Thu, 21 Mar 2019

کابل میں نوروز کی تقریبات میں دھماکے، چھ ہلاک

حکام کے مطابق دھماکے کابل کے شیعہ اکثریتی مغربی علاقے میں واقع کرتہ سخی نامی درگاہ کے نزدیک ہوئے۔


سمجھوتہ ایکسپریس حملے کے تمام ملزمان بری، پاکستان کا احتجاج

Wed, 20 Mar 2019

سمجھوتہ ایکسپریس حملے کے تمام ملزمان بری، پاکستان کا احتجاج

نئی دہلی سے اٹاری تک چلنے والی سمجھوتہ ایکسپریس میں 18 فروری 2007 کو ہریانہ میں پانی پت کے نزدیک بم دھماکہ ہوا تھا، جس میں 68 افراد ہلاک ہوئے تھے۔ مرنے والوں میں اکثریت پاکستانی شہریوں کی تھی۔


بھارت: شتروگن سنہا کا بی جے پی سے الگ ہونے کا عندیہ

Wed, 20 Mar 2019

بھارت: شتروگن سنہا کا بی جے پی سے الگ ہونے کا عندیہ

شتروگن سنہا گزشتہ دو برس سے اپنی جماعت بی جے پی اور وزیر اعظم نریندر مودی کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے رہے ہیں اور کھلے عام لوک سبھا میں حزب اختلاف کا ساتھ دیتے آئے ہیں


افغانستان: صدارتی انتخابات ایک بار پھر ملتوی

Wed, 20 Mar 2019

افغانستان: صدارتی انتخابات ایک بار پھر ملتوی

افغانستان کے الیکشن کمشن کا کہنا ہے کہ التوا سے ووٹنگ کے مرحلے سے متعلق اصلاحات کی تکمیل میں مدد ملے گی۔


پاکستان بھارت باہمی اختلافات بات چیت سے حل کریں: چین

Wed, 20 Mar 2019

پاکستان بھارت باہمی اختلافات بات چیت سے حل کریں: چین

چین کے وزیرِ خارجہ وانگ ژی نے یہ بات بیجنگ میں چین پاکستان اسٹریٹجک ڈائیلاگ کے بعد اپنے پاکستانی ہم منصب شاہ محمود قریشی کے ہمراہ منگل کو ایک نیوز کانفرنس کے دوران کہی۔


بھارت: امبانی نے چھوٹے بھائی کو جیل جانے سے بچا لیا

Tue, 19 Mar 2019

بھارت: امبانی نے چھوٹے بھائی کو جیل جانے سے بچا لیا

مکیش امبانی اور اُن کا خاندان ممبئی کے جنوبی علاقے میں تعمیر شدہ 27 منزلہ عمارت میں رہائش پزیر ہے۔ لگ بھگ ایک ارب ڈالر مالیت سے تعمیر ہونے والی یہ رہائش گاہ دنیا کی سب سے مہنگی رہائش گاہ تصور کی جاتی ہے۔ بھارت کے ارب پتی مکیش امبانی اور اُن کے چھوٹے بھائی انیل امبانی کے درمیان عرصہٴ دراز سے جاری خاندانی جھگڑے نے ایک نئی صورت اختیار کر لی ہے، جب بڑے بھائی نے چھوٹے بھائی کا قرضہ ادا کر کے انھیں جیل جانے سے بچا لیا۔ ان دونوں بھائیوں کے والد اور بھارت کی بڑی صنعتی ملکیت، ’ریلائنس انڈسٹریز‘ کے مالک، دھیروبھائی امبانی 2002ء میں بغیر کوئی وصیت لکھے انتقال کر گئے تھے، جس کے بعد ریلائنس انڈسٹریز کے کنٹرول کیلئے دونوں بھائیوں میں ٹھن گئی۔ اس موقع پر اُن کی والدہ کی کوششوں سے دونوں بھائی ریلائنس انڈسٹریز کے بٹوارے پر رضامند ہو گئے اور یہ طے ہوا کہ دونوں بھائی ایک دوسرے کے کاروبار میں مداخلت نہیں کریں گے۔ بٹوارے کے بعد بڑے بھائی 61 سالہ مکیش امبانی کا کاروبار چمک اُٹھا اور اُن کے اثاثے 54 ارب 30 کروڑ ڈالر تک پہنچ گئے۔ اور یوں، وہ ایشیا کے امیر ترین انسان بن گئے جبکہ چھوٹے بھائی 59 سالہ انیل امبانی کا کاروبار مسلسل گراوٹ کا شکار ہوتا گیا اور اُن کے اثاثوں کی مالیت کم ہوتے ہوئے 30 کروڑ ڈالر رہ گئی۔ مکیش امبانی اور اُن کا خاندان ممبئی کے جنوبی علاقے میں تعمیر شدہ 27 منزلہ عمارت میں رہائش پزیر ہے۔ لگ بھگ ایک ارب ڈالر مالیت سے تعمیر ہونے والی یہ رہائش گاہ دنیا کی سب سے مہنگی رہائش گاہ تصور کی جاتی ہے۔ دوسری جانب انیل امبانی کی کمپنی، ریلائنس کمیونی کیشنز چار ارب ڈالر کی مقروض ہو گئی اور اس کمپنی نے گزشتہ ماہ خود کو دیوالیہ قرار دینے کیلئے ضابطے کی کارروائی کا آغاز کر دیا۔ انیل امبانی سویڈن کی کمپنی ایریکسن کے بھی 7 کروڑ 70 لاکھ کے مقروض ہو گئے اور بھارتی سپریم کورٹ نے فیصلہ دیا کہ اگر وہ سویڈن کی کمپنی کو یہ رقم ادا نہیں کریں گے تو اُنہیں جیل بھیج دیا جائے گا۔ پیر کی شام انیل امبانی نے انکشاف کیا کہ اُن کے بڑے بھائی نے اُن کا یہ قرضہ ادا کر دیا ہے اور یوں وہ جیل جانے سے بچ گئے ہیں۔ انیل امبانی نے یہ انکشاف کرتے ہوئے ایک بیان میں کہا کہ وہ اپنے بڑے بھائی مکیش اور بھابھی نیتا کے تہہ دل سے مشکور ہیں جنہوں نے اس مشکل وقت میں اُن کا ساتھ دیا۔ دونوں بھائیوں نے اس سے قبل 2011 میں اپنے والد کیلئے ایک یادگار تعمیر کرائی تھی اور اُس موقع پر اُن کی والدہ نے اعلان کیا تھا کہ دونوں بھائیوں میں اختلاف ختم ہو گیا ہے۔ تاہم، اس کے پانچ برس بعد 2016 میں مکیش امبانی نے ریلائنس جیو موبائل نیٹ ورک لانچ کر دیا جس نے انیل امبانی کی کمپنی ریلاینس کمیونی کیشنز کا کاروبار شدید طور پر متاثر کیا اور وہ مالی بحران کا شکار ہو گئی۔ تاہم، بڑے بھائی نے ایک بار پھر چھوٹے بھائی کا قرضہ ادا کر کے انہیں بیل آؤٹ کر دیا ہے۔  


بنگلہ دیش: نامعلوم افراد کی فائرنگ سے 7 الیکشن اہل کار ہلاک

Tue, 19 Mar 2019

بنگلہ دیش:  نامعلوم افراد کی فائرنگ سے 7 الیکشن اہل کار ہلاک

میڈیا ذرائع کے مطابق یہ واقعہ بنگلہ دیش کے جنوب مشرقی علاقے چٹاگانگ میں اس وقت پیش آیا جب پیر کی شام پولنگ کا عملہ بیلٹ باکسز کے ساتھ واپس جا رہا تھا۔


'پلوامہ حملہ نہیں بھولے،' بھارت کا مزید کارروائی کا عندیہ

Tue, 19 Mar 2019

اجیت ڈوبھال نے کہا کہ بھارت نہ تو پلوامہ حملے کو بھولا ہے اور نہ ہی بھولے گا۔


پاک بھارت کشیدگی میں کمی کے لیے تعمیری کردار ادا کیا: چین

Tue, 19 Mar 2019

پاک بھارت کشیدگی میں کمی کے لیے تعمیری کردار ادا کیا: چین

نیوز بریفنگ کے دوران چینی وزارتِ خارجہ کے ترجمان نے مسعود اظہر کے معاملے پر بات کرتے ہوئے مزید کہا کہ "چین کا مؤقف اس بارے میں واضح ہے اور وہ اس کو دوبارہ نہیں دہرائیں گے۔"


طالبان نے درجنوں افغان فوجی اہلکار یرغمال بنالیے

Tue, 19 Mar 2019

طالبان نے درجنوں افغان فوجی اہلکار یرغمال بنالیے

حکام کے مطابق ان اہلکاروں کو ترکمانستان کی سرحد سے متصل افغان صوبے بادغیس میں طالبان اور سرکاری فوج کے درمیان حالیہ جھڑپوں کے دوران یرغمال بنایا گیا ہے۔


مسعود اظہر سے متعلق بھارت کے تحفظات دور کئے جائیں گے، چینی سفیر

Mon, 18 Mar 2019

مسعود اظہر سے متعلق بھارت کے تحفظات دور کئے جائیں گے، چینی سفیر

بھارت میں تعینات چین کے سفیر نے اس توقع کا اظہار کیا ہے کہ بھارت کی طرف سے شدت پسند تنطیم جیش محمد کے سربراہ مسعود اظہر کا نام عالمی دہشت گردوں کی فہرست میں شامل کرنے کا معاملہ حل ہو جائے گا۔  چینی سفیر کا یہ بیان ایک ایسے وقت سامنے آیا ہے جب چین نے گزشتہ ہفتے  اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں مسعود اظہر کو عالمی دہشت گرد قرار دینے کی تجویز کو  ایک بار پھر بار تکنیکی بنیادوں پر التوا میں ڈال دیا۔ یا درہے کہ گزشتہ ماہ بھارت کے زیر انتطام کشمیر کے علاقے پلوامہ میں بھارتی سیکورٹی فورسز کے ایک قافلے پر ہونے والے حملے کی ذمہ داری جیش محمد کی طرف سے قبول کرنے کے دعویٰ کے بعد  فرانس، برطانیہ اور امریکہ نے مسعود اظہر کا نام سلامتی کونسل کی عالمی دہشت گردوں کی فہرست میں شامل کرنے کی تجویز دی تھی جسے چین نے تکنیکی بنیادوں پر التوا میں ڈال دیا ہے۔  بھارتی خبررساں ادارے ' اے این آئی 'کے مطابق چینی سفارت کار سے جب اتوار کو  نئی دہلی میں چین کے سفارت خانے میں منعقد ہونے والی ایک تقریب  کے موقع پر یہ پوچھا گیا کہ چین نے سلامتی کونسل میں مسعود اظہر کا نام عالمی دشت گردوں کی فہرست میں شامل کرنے کی تجویز کو تکنیکی بنیادوں پر التوا میں کیوں ڈال دیا ہے؟ اس پر چین کے سفیر  لو ژاؤ ہوئی نے کہا کہ بیجنگ اس معاملے پر نئی دہلی کے تحفظات سے آگاہ ہے اور ان کے بقول یہ ایک تکنیکی التوا ہے کیونکہ اس معاملے پر مشاورت کے لیے مزید وقت درکار ہے اور انہیں یقین ہے کہ معاملہ حل ہو جائے گا۔ چین کی طرف سے مسعود اظہر کو عالمی دہشت گرد قرار دینے کی تجویز چین کی طرف سے گزشتہ ہفتے  روک دینے پر بھارت نے افسوس کا ظہار کیا تھا۔ تاہم چینی وزارت خارجہ کے ترجمان نے وضاحت کی کہ بیجنگ اس معاملے کو مناسب طریقے سے حل کرنے کے لیے بھارت سمیت تمام متعلقہ فریقوں سے رابطہ تیز کر دے گا اور بعض تجزیہ کاروں نے  چینی  سفارت کار  کے بیان کو متوازن قرار دیتے ہوئے اسے بھارت کی ناراضگی کو دور کرنے کی کوشش قراردیا ہے۔ بین الاقوامی امورکے ماہر ظفر جسپال نے پیر کو وائس آف امریکہ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ" میرا خیال یہ ان کا متواز ن بیان ہے جو بظاہر بھارتی ناراضگی دور کرنےکی کوشش ہے۔ ساتھ ہی انہوں نے یہ تصدیق بھی کر دی ہے کہ پاکستان  کی حکومت کالعدم شدت پسندوں کے خلاف  کارروائی میں سنجیدہ  ہے اور اس حوالے سے نئی دہلی کے تحفظات کو دور کیا جائے گا۔"  ظفر جسپال نے مزید کہا کہ جنوبی ایشیا میں چین کے اسٹریٹجک اور تجارتی  مفادات کے پیش نظر چین بعض دیگر ملکوں کی طرح بھارت اور پاکستان پر اپنے دو طرفہ تعلقات بات چیت سے حل کرنے پر زور دیتا آ رہا ہے۔ " چین کے ساتھ پاکستان کے اسٹریٹجک مفادات ہیں اور بھارت ان کا ایک بڑا تجارتی شراکت دار ہے۔ اس لیے خطے میں امن ہو گا تو وہ چین کے مفاد میں ہو گا۔ اگر خطے میں کشیدگی  رہے گی تو اس کی وجہ سے چین کے مفاد متاثر ہو سکتے ہیں۔ " تجزیہ کار ظفر جسپال کے بقول اسی لیے چین کوشش کرے گا کہ خطے میں امن رہے اور بھارت اور پاکستان مذاکرات کے ذریعے اپنے معاملا ت حل کریں۔ دوسری طر ف پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے پیر کو چین کے  تین روزہ  دورے پر بیجنگ پہنچنے کے بعد ایک بیان میں کہا ہے کہ پاکستان بھارت کے  ساتھ اپنے تمام دیرینہ معاملات بات چیت سے حل کرنے کا خواہاں ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمد قریشی نے کہا ہے کہ پاکستان  خطے میں قیام امن اور اپنے تمام ہمسایہ ممالک بشمول بھارت  کے اچھے تعلقات  کا خواہاں ہے۔


بھارتی ایٹمی آبدوز اور طیارہ بردار جہاز بحیرہ عرب میں تعینات

Mon, 18 Mar 2019

بھارتی ایٹمی آبدوز اور طیارہ بردار جہاز بحیرہ عرب میں تعینات

بھارت نے اپنی بحری جنگی مشقیں مختصر کرتے ہوئے ایک ایٹمی آبدوز اور طیارہ بردار جہاز کو بحیرہ عرب میں تعینات کر دیا ہے۔ دفاعی ماہرین کا کہنا ہے کہ بھارت اور پاکستان کے درمیان پلوانہ خود کش حملے کے بعد بڑھنے والی کشیدگی کے سلسلے میں بھارت کی طرف سے یہ ایک بڑا اقدام ہے۔ بھارتی بحریہ نے دعویٰ کیا ہے کہ اس اقدام کے نتیجے میں پاکستانی بحریہ مکران کے ساحل کے قریب محدود ہو گئی ہے اور اس کے جہازوں کا بحیرہ عرب میں  آزادانہ گشت متاثر ہوا ہے۔ بھارتی بحریہ نے اتوار کے روز ایک بیان میں کہا کہ بحیرہ عرب میں تعینات کئے جانے بحری اثاثوں میں جوہری ہتھیاروں اور بیلسٹک میزائلوں سے لیس حملہ آور ایٹمی آبدوز، ایک طیارہ بردار جہاز اور درجنوں جنگی بحری جہاز شامل ہیں۔ بھارتی بحریہ نے دعویٰ کیا ہے کہ اُس کے اس اقدام سے پاکستان کی بحری قوت بے اثر ہو گئی ہے۔ دفاعی ماہرین اور بھارتی بحریہ کے اہلکاروں کا کہنا ہے کہ بھارتی بحریہ کی یہ تعیناتی دسمبر 2001 میں بھارتی پارلیمان پر ہونے والے دہشت گرد حملے کے نتیجے میں شروع کئے گئے پاراکرم آپریشن کے بعد سے سب سے بڑی تعیناتی ہے۔ بھارت اور پاکستان اُس وقت بھی جنگ کے قریب پہنچ گئے تھے۔ اس تعیناتی سے قبل بھارتی بحریہ نے 7 جنوری سے اپنی تھیٹر انداز کی بحری مشقوں کا آغاز کیا تھا جس میں 72 جنگی جہازوں اور 60 طیاروں نے حصہ لیا تھا۔ ان جنگی مشقوں کو ٹروپیکس 19 کا نام دیا گیا تھا۔ پروگرام کے مطابق یہ جنگی مشقیں 10 مارچ تک جاری رہنی تھیں۔ تاہم بھارتی بحریہ کے ذرائع کے مطابق پلوانہ حملے کے بعد انہیں مختصر کر دیا گیا۔ لیکن یہ بھی کہا جا رہا ہے کہ آئی این ایس اری ہنت اور آئی این ایس چکرا کے بارے میں جو کہ وشاکھاپٹنم میں تعینات ہیں، بحریہ کی جانب سے تصدیق نہیں ہو سکی کہ وہ دونوں ملکوں کے درمیان کشیدگی کی انتہا پر بحیرہ عرب کی جانب چل پڑے تھے۔ پاکستان پر حملہ کرنے کے لیے آئی این ایس اری ہنت کو بحر عرب میں تعینات کرنا پڑے گا۔ لیکن ایسا اس وقت ممکن ہو سکے گا جب بحریہ میں طویل مسافت تک مار کرنے والا میزائل K-4 شامل کر لیا جائے، جو کہ ابھی تیاری کے مرحلے میں ہے۔ ابھی اری ہنت کے پاس میزائل k-15 ہے جس کی مار 750 کلومیٹر سے زیادہ نہیں ہے۔ ایک دفاعی تجزیہ کار اور فورس میگزین کے ایڈیٹر پروین ساہنی اس خبر کو غلط سمجھتے ہیں۔ انھوں نے وائس آف امریکہ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اری ہنت ابھی تک پورا آپریشنل ہوا نہیں ہے۔ یہ خبر مجھے بالکل غلط لگ رہی ہے۔ پروین ساہنی نے یہ بھی کہا کہ چونکہ ایسی خبریں تھیں کہ پاکستانی بحریہ ہاربر سے باہر آگئی ہے اس لیے ہم نے کہہ دیا کہ ہم بھی تیار تھے۔ ان کے مطابق بالاکوٹ کارروائی کی وجہ سے فضائیہ کی تعریف ہو گئی ہے۔ ادھر سے خبر آئی ہے کہ پاکستان کی بحریہ پوری تیار تھی اور وہ اپنے ہاربر سے باہر آگئی تھی۔ لیکن ہماری کیا تیاری تھی نہیں کہا جا سکتا کیونکہ مشق اور آپریشنل ہونے میں بہت فرق ہوتا ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ وہیں پر مشق بھی تھی اور وہیں آپریشنل بھی ہو گئے تو یہ کیسے ممکن ہے۔ پروین ساہنی کے خیال میں یہ صرف حاضری درج کرانے کی بات ہے۔ تینوں مسلح افواج یہ جتانے کی کوشش کر رہی ہیں کہ ہم بھی تیار تھے۔ حالانکہ ایسا نہیں ہے کہ یہاں کی بحریہ میں اہلیت نہیں ہے لیکن اس خبر کی صداقت سمجھ میں نہیں آرہی ہے۔ پاکستانی مسلح افواج کی جانب سے اس بارے میں فی الحال کوئی بیان سامنے نہیں آیا ہے۔ تاہم 4 مارچ کو پاکستانی بحریہ نے دعویٰ کیا تھا کہ اُس نے بھارت کی ایک آبدوز کی بحیرہ عرب میں پاکستانی پانیوں میں داخل ہونے کی کوشش کو ناکام بنا دیا تھا۔


کشمیر میں لائن آف کنٹرول پر جھڑپ، بھارتی فوجی ہلاک

Mon, 18 Mar 2019

کشمیر میں لائن آف کنٹرول پر جھڑپ، بھارتی فوجی ہلاک

ترجمان کے مطابق زخمی ہونے والے فوجیوں میں سے ایک رائفل مین کرم جیت سنگھ بعد میں زخموں کی تاب نہ لا کر چل بسا۔


پاکستانی فضائی حدود کی بندش، دو جہاز حادثے سے بال بال بچے

Sun, 17 Mar 2019

پاکستانی فضائی حدود کی بندش، دو جہاز حادثے سے بال بال بچے

بھارتی شہر ممبئی کی فضائی حدود میں دو بین الاقوامی جہاز جمعہ کے روز ایک دوسرے سے ٹکرانے سے بال بال بچ گئے۔ اس حادثے سے بچنے کیلئے ٹکراؤ سے بچنے کے نظام TCAS کو استعمال کرنا پڑا۔ بھارتی میڈیا کے مطابق ممبئی ایئر پورٹ اتھارٹی کے ایک اہلکار کا کہنا تھا کہ یہ واقعہ پاکستان کی طرف سے اپنی فضائی حدود کی ہر قسم کی پروازوں کیلئے بندش کے باعث پیش آیا۔ پاکستان نے بھارت کے زیر انتظام کشمیر کے شہر پلوانہ میں ہونے والے خود کش حملے کے بعد بھارت کی طرف سے مبینہ طور پر اُس کی فضائی حدود کی خلاف ورزی کے بعد 27 فروری سے اپنی فضائی حدود تمام پروازوں کے لئے بند کر دی تھی۔ پاکستان نے اگرچہ فضائی حدود جزوی طور پر بحال کی ہیں، تاہم بیشتر علاقوں میں فضائی حدود کی بندش اب بھی جاری ہے اور بھارت اور مشرقی ممالک کی طرف جانے والی  تمام بین الاقوامی پروازوں کو پاکستان کی فضائی حدود سے دور رہتے ہوئے متبادل راستے اختیار کرنا پڑ رہے ہیں۔ بھارتی حکام کا کہنا ہے کہ اس صورت حال کے نتیجے میں طے شدہ اور غیر طے شدہ دونوں طرح کی بین الاقوامی پروازوں  کے باعث بھارتی فضائی حدود معمول سے کہیں زیادہ مصروف ہو گئی ہیں اور غیر معمولی طور پر زیادہ فضائی ٹریفک کے باعث جمعہ کے روز دو بین الاقوامی فضائی کمپنیوں کے جہاز ایک دوسرے سے ٹکرانے سے بال بال بچے۔ ان میں سے ایک ایئر فرانس کی فلائیٹ AF-253 تھی جو ویتنام کے شہر ہوچی من سے پیرس جا رہی تھی جبکہ دوسری پرواز اتحاد ایئر لائین EY-290 ابوظہبی سے کھٹمنڈو کی طرف رواں تھی۔ بھارتی محکمہ ہوابازی کے اہلکاروں کا کہنا ہے کہ ایئر فرانس کا جہاز 32,000 فٹ کی بلندی پر جبکہ اتحاد ایئر لائن کا جہاز 31,000 فٹ پر پرواز کر رہا تھا۔ اس موقع پر ایئر ٹریفک کنٹرولرز نے حادثے سے بچاؤ کے نظام TCAS کو فوراً فعال کرتے ہوئے اتحاد ایئر لائن کے پائلٹ کو حادثے سے بچنے کی خاطر 33,000 فٹ تک اوپر جانے کی ہدایت جاری کی۔ بھارتی ہوابازی کی انتظامیہ نے اس واقعے  کی تحقیقات کا حکم دے دیا ہے۔